Wednesday, January 19, 2022  | 15 Jamadilakhir, 1443

عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا رجحان

SAMAA | - Posted: Nov 22, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 22, 2021 | Last Updated: 2 months ago

عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا رجحان بدستور جاری ہے۔

عالمی مارکیٹ میں گزشتہ ہفتے بدھ کو ڈبلیو ٹی ایل آئل کی قیمت 80.76ڈالر فی بیرل جب کہ برینٹ آئل کی قیمت 82.43ڈالر فی بیرل تھی لیکن اس کے بعد سے تدریجاً کمی دیکھی جارہی ہے اور پیر کو ڈبیلو ٹی ایل آئل کی قیمت 76.10ڈالر فی بیرل اور برینٹ کروڈ آئل کی قیمت 78.89ڈالرکی سطح پر آگئی ہے۔3 روز میں خام تیل کی قیمت میں ڈبیلو ٹی ایل کی فی بیرل قیمت میں 4.66ڈالر اور برینٹ آئل کی قیمت میں 3.54ڈالرکی کمی آچکی ہے۔

معاشی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ خام تیل کی پیداوار بڑھ رہی ہے جس کی وجہ سے کرونا لاک ڈاؤن کھلنے کی وجہ سے اضافی طلب کے مقابلے میں سپلائی میں بھی اضافہ ہوگیا ہے جس سے قیمتوں میں کمی آنی شروع ہوگئی ہے۔اس کےعلاوہ کئی یورپی ممالک میں کرونا کیسز بڑھنے کے پیش نظر دوبارہ سے لاک ڈاؤن لگانے کا جائزہ لیا جارہا ہے جس کی وجہ سے بھی خام تیل کی قیمتوں میں کمی آرہی ہے۔ توانائی شعبے کے حوالے سے ریسرچ رپورٹس میں خیال ظاہر کیا جارہا ہے کہ خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا سلسلہ جاری رہنے کا امکان ہے اور خام تیل 70ڈالر فی بیرل کی سطح سے بھی نیچے آسکتا ہے۔

واضح رہے کہ اکتوبر میں خام تیل کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافہ شروع ہوا تھا اور خام تیل کی فی بیرل تیل 85ڈالر کی بلند سطح پر پہنچ گئی تھی جس کی وجہ سے تیل پیداوار والےممالک کو تو فائدہ ہوا لیکن پاکستان جیسے تیل کی درآمد پر انحصار کرنےوالےممالک اس کی وجہ سے ہوشربا مہنگائی سے دوچار ہوگئے ہیں۔پاکستان کو قیمتیں بڑھنے کی وجہ سے درآمدی بل بڑھنے کا بوجھ اٹھانا پڑا دوسری طرف ڈالر کی قدر میں بھی غیر معمولی اضافہ ہوا جس سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھائی گئیں۔

کیا عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت میں کمی  کے نتیجے میں پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمت میں کمی متوقع ہے؟

اس بارے میں آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کے ایک افسر نے بتایا کہ فی الوقت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی ممکن نہیں کیونکہ ڈالر ابھی بلند سطح پر ہے جب کہ خام تیل کی قیمتوں کو اثر بھی15دن بعد آتا ہے اس لئے یکم دسمبر کو بھی قیمتوں میں کمی کے بجائے قیمتیں برقرار رکھنے کا امکان ہے۔

توانائی شعبے کے ایکسپرٹ طاہر عالم کے مطابق خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ کرونا لاک ڈاون کے بعد آئل سیکڑمیں لیبر کی عدم دستیابی اور ٹرانسپورٹیشن لاگت بڑھنے کی وجہ سے ہوا تھا لیکن اب صورتحال جوں جوں نارمل ہورہی ہے قیمتیں بھی نارمل ہورہی ہیں اور توقع ہے کہ خام تیل کی فی بیرل قیمت 65سے70ڈالر فی بیرل کی سطح پر آجائے گی اگر ڈالرکی قدر میں بھی کمی آتی ہے تو صارفین کو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا ریلیف مل سکے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube