Monday, December 6, 2021  | 30 Rabiulakhir, 1443

بجلی کی قیمت میں اضافے کی منظوری دیدی گئی، حماداظہر

SAMAA | - Posted: Oct 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago

گیس کے ذخائر مین سالانہ 9 فیصد کمی آرہی ہے

حکومت نے بجلی کی قیمت میں 1.39 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دیدی۔ وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر کا کہنا ہے کہ نئی قیمتوں کا اطلاق یکم نومبر سے ہوگا۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ اب ہم نے کافی بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت حاصل کرلی اس لئے چاہتے ہیں کہ طلب میں اضافہ ہو، ہم نے گزشتہ سال ایک انڈسٹریل پیکیج متعارف کرایا تھا جو کامیاب رہا، اور بجلی کی طلب میں 15 فیصد تک اضافہ ہوا۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ حکومت نے یکم نومبر سے بجلی کی قیمت میں 1.39 روپے فی یونٹ اضافے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر کا اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں کہنا تھا کہ پچھلی حکومت نے ضرورت سے زیادہ اور مہنگی بجلی پیدا کی، 2013ء میں گردشی قرضہ 185 ارب روپے تھا جو 2018ء میں 150 فیصد اضافے سے  470 ارب تک پہنچ گیا جو 2030ء تک 2500 سے 3000 ارب تک جانے کا خدشہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیپرا مارچ میں ساڑھے 3 روپے فی یونٹ بڑھانا چاہتا تھا، نیپرا کو بجلی کی قیمت 1 روپے 39 پیسے فی یونٹ بڑھانے کی تجویز دی ہے اس اضافے کا 200 یونٹ والے 40 فیصد صارفین پر اطلاق نہیں ہوگا جبکہ انڈسٹری کیلئے 12.96 روپے فی یونٹ برقرار رہے گی۔

حماد اظہر کے مطابق گردشی قرضہ سالانہ 450 ارب روپے سے 150 ارب روپے پر آگیا ہے، جسے حکومت زیرو پر لانے کیلئے کوشاں ہے۔

حماد اظہر نے کہا کہ پوری دنیا کی طرح پاکستان مین بھی گیس کی قلت ہے، گیس کے ذخائر میں سالانہ 9 فیصد کمی آرہی ہے، پاکستان میں 28 فیصد افراد کو قدرتی گیس میسر ہے، درآمدی گیس پائپ لائن میں ڈالنے سے سالانہ 35 سے 40 ارب کا اضافہ ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ صارفین سے درآمدی گیس کا ٹیرف وصول کیا جائے گا، پاکستان میں 70 فیصد لوگ قدرتی گیس سے محروم ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube