Monday, October 18, 2021  | 11 Rabiulawal, 1443

پاکستان میں مہنگائی میں اضافے کا امکان، آئی ایم ایف

SAMAA | - Posted: Oct 13, 2021 | Last Updated: 5 days ago
SAMAA |
Posted: Oct 13, 2021 | Last Updated: 5 days ago

Weekly Inflation Statistics Isb Pkg 17-09

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے 2022 میں پاکستان میں مہنگائی کی شرح  9.2 فیصد تک جانے کا امکان ظاہر کیا ہے۔

آئی ایم ایف کی جاری کردہ معاشی آوٹ لک رپورٹ کے مطابق معاشی شرح نمو گزشتہ سال 3.9 تھی جو اس سال بڑھ کر 4فیصد رہنے کا امکان ہے جبکہ حکومت پاکستان اس سال معاشی ترقی 5فیصد تک رہنے کے لیے پرعزم ہے۔ اس سے پہلے عالمی بینک نے اپنی آوٹ لک رپورٹ میں شرح نمو 3.4 فیصد رہنے کا تخمینہ لگایا تھا۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے پاکستان 2026 تک 5فیصد شرح سے ترقی کرے گا اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بھی منفی 0.6 سے بڑھ کر منفی 3.1 فیصد تک جانے کا امکان ظاہر کیا ہے۔

تجزیہ کار شارون احمد نے سماء ڈیجیٹل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان جو اشیاء بیرون ممالک سے درآمد کرتا ہے ان کی قیمتوں میں عالمی مارکیٹ میں بہت اضافہ ہوا ہے جس کے زیر اثر پاکستان میں مختلف اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔ خوردنی تیل کی قیمت عالمی مارکیٹ میں 80 ڈالر فی بیرل تک پہنچ گئی جو پاکستان درآمد کرتا ہے اس کے علاوہ ڈالر کی قیمت بھی 170.70 روپے کی سطح پر پہنچ چکی ہے جس درآمدی بل میں اضافہ ہوا۔

شارون احمد کے مطابق اگر مہنگائی میں اضافہ ہوتا ہے تو حکومت کو شرح سود میں مزید اضافہ کرنا ہوگا تاکہ لوگ کم پیسے خرچ کریں جس سے مہنگائی میں بھی کمی آئے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ تجارتی خسارے میں اضافے کے باعث کرنٹ اکاونٹ خسارے میں بھی اضافہ ہوا ہے جس کی بڑی وجہ بڑھتی ہوئی درآمدات ہے۔ پچھلے تین ماہ میں درآمدات میں 65فیصد اضافہ ہوا ہے، درآمدات کو کنٹرول کرنے کے لیے اسٹیٹ بینک نے 114 اشیاء کی درآمدات پر 100 فیصد کیش مارجن کی شرط بھی عائد کی ہے لیکن درآمدات کو مزید کنٹرول کرنے کے لیے پرتعیش اشیاء پر ڈیوٹی لگانا ہونگی۔

  واضح رہے 20 ستمبر کو اسٹیٹ بینک نے شرح سود 7فیصد سے بڑھا کر 7.25 فیصد کر دیا تھا۔

اسٹیٹ بینک کا بھی کہنا تھا کہ اجناس کی بین الاقوامی قیمتوں کے ہمراہ ملکی طلب کی بھرپور بحالی درآمدات میں تیزی اور جاری کھاتے کے خسارے میں اضافے کی طرف لے جا رہی ہے۔ اگرچہ جون سے سال بہ سال مہنگائی کم ہوئی ہے تاہم بلند درآمدہ مہنگائی کے ساتھ بڑھتا ہوا طلبی دباؤ مالی سال میں آگے چل کر مہنگائی کے اعدادوشمار میں ظاہر ہونا شروع ہوسکتا ہے۔

مہنگائی کی توقعات کو قابو میں رکھنے اور جاری کھاتے کے خسارے میں اضافے کو آہستہ کرنے کے لیے مناسب پالیسیوں کو یقینی بنانے پر زیادہ زور دینے کی ضرورت ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube