Tuesday, October 19, 2021  | 12 Rabiulawal, 1443

ڈالر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

SAMAA | - Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago
SAMAA |
Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago

فاریکس ایسوسی ایشن سے جاری اعداد و شمار کے مطابق ڈالر 30 پیسے اضافے کے بعد تاریخ کی بلند تری سطح 170.40  روپے پر پہنچ گیا۔

چیئرمین فاریکس ایسوسی ایشن ملک بوستان کا کہنا ہے نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا پاکستان کا دورہ منسوخ ہونے کے باعث دنیا میں پاکستان میں امن کے حوالے خدشات پیدا ہوگئے ہیں کہ پاکستان میں امن کی صورتحال خراب ہے، جس کے بعد سرمایہ کار پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے سے ڈر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے حالات تاحال قابو میں نہیں آسکے، امریکا نے افغانستان کے بینک اکاؤنٹ اور اثاثے منجمند کئے ہوئے ہیں، جس سے افغانستان میں لوگوں کے پاس کھانے کے بھی پیسے نہیں ہیں اور ڈالر کی قدر بھی بڑھ گئی ہے تو پاکستان سے بڑی تعداد میں منافع کمانے کی غرض سے لوگ ڈالرز افغانستان لے جارہے ہیں، جس سے پاکستان میں ڈالر کی طلب میں اضافہ ہوا ہے۔

ایگزیکٹو ڈائریکٹر پراچہ ایکسچیج ظفر پراچہ کا کہنا ہے کہ ڈالر کی قدر میں اضافے کی بڑی وجہ افغانستان میں امن و امان کی خراب صورتحال ہے، ڈالر کی قدر میں اضافے کی وجہ سے برآمد کنندگان نے ترسیلات زر ہولڈ کر رکھی ہیں تاکہ ڈالر کی قدر میں مزید اضافہ ہو اور کرنسی ایکسچینچ کرنے پر زیادہ سے زیادہ منافع کما سکیں۔

انہوں نے بتایا کہ اسی طرح درآمدکنندگان بھی فارورڈ بکنگ کرکے بینک سے لیٹر آف کریڈٹ کھلوا رہے ہیں۔ فارورڈ بکنگ کی صورت میں امپورٹرز لیٹر آف کریڈٹ کھلواتے ہوئے ڈالر کا ریٹ بینک سے فکسڈ کروالیتے ہیں اور جب پیمنٹ کا ٹائم آتا ہے تو ڈالر کے مقررہ ریٹ پر درآمد کی ہوئی اشیاء کی ادائیگی کرتے ہیں۔

ظفر پراچہ کے مطابق حکومت کو چاہئے کہ یہ پالیسی عائد کردی جائے کہ لیٹر آف کریڈٹ کھلواتے ہوئے امپورٹرز سے زیادہ سے زیادہ کیش مارجن لیں تاکہ لوگ امپورٹ تھوڑی کم کریں اور درآمدات پر موجودہ دباؤ تھوڑا کم ہو، جس سے ڈالر کی قدر میں کمی آئے گی۔

ظفر پراچہ نے مزید کہا اگر حکومت کا روپے کی قدر میں کمی کرنے کا آئی ایم ایف سے کوئی معاہدہ نہیں ہوا تو اگلے ایک سے ڈیڑھ ماہ میں ڈالر 160 روپے سے 162 روپے کے درمیان آجائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube