Sunday, September 26, 2021  | 18 Safar, 1443

عیدقرباں: بیوپاری شہری علاقوں میں بھی قربانی کے جانورلے آئے

SAMAA | - Posted: Jun 28, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 28, 2021 | Last Updated: 3 months ago

شہر کی فضاء بدلنے لگی

عید قرباں جوں جوں قریب آتی جارہی ہے شہر کا ماحول بھی تبدیل ہوتا جارہا ہے۔ شہر کے مختلف مصروف چوراہوں اور شاہراہوں کے اطراف فٹ پاتھوں پر قربانی کے بکرے فروخت کیلئے گھمائے جانے لگے ہیں جبکہ شہر کے مضافاتی علاقوں اور کچی آبادیوں میں بھی چھوٹی منڈیاں بن گئی ہیں جس میں گائے، بیل اور بکرے لائے جارہے ہیں۔

عید الاضحیٰ کی آمد سے قبل مزاد قائد کے اطراف، بلاول چورنگی، کلفٹن، ڈالمیا روڈ اور ڈیفنس سمیت کئی علاقوں میں بیوپاری فٹ پاتھوں پر خوبصورت اور فینسی بکرے فروخت کیلئے لے آئے ہیں جو مہنگے ہیں لیکن خوبصورتی کی وجہ سے ایسے خریدار ان بکروں کی جانب راغب ہورہے ہیں جن کے پاس عید تک بکرے رکھنے کا انتظام ہے اور وہ فوری طور پر خریداری کرسکتے ہیں۔

سپرہائے وے، بھینس کالونی، مواچھ گوٹھ اور ملیر کی مویشی منڈیاں دور ہونے کی وجہ سے خریدار ان فٹ پاتھوں سے ہی بکرے خرید رہے ہیں، جبکہ زیادہ تر والدین بچوں کی پسند کے مطابق ہی بکرے خریدتے ہیں۔

بکرے فروخت کرنے والے بیوپاریوں کا کہنا ہے کہ عید کے قریب کم آمدن طبقے کی ضرورت کے مطابق نسبتاً سستے بکرے بھی لے آئیں گے۔ سڑک کنارے بکرے فروخت کرنیوالے اکثرایسے کسان اور چھوٹے بیوپاری ہیں جو منڈی کا کرایہ اور ٹرانسپورٹ انٹری فیس ادا نہیں کرسکتے، جبکہ بعض بیوپاری ایسے بھی ہیں جو فارمز سے کمیشن کے عوض بکرے فروخت کررہے ہیں۔

دوسری جانب شہر کے مختلف علاقوں کیماڑی، شیریں جناح کالونی، منگھو پیر، قصبہ کالونی، گڈاپ، کورنگی، اورنگی ٹاؤن، عیسیٰ نگری، لیاقت آباد 10 نمبر، نیو کراچی 6 نمبر، برنس روڈ، قیوم آباد، حقانی روڈ سمیت کئی علاقوں میں چھوٹی چھوٹی منڈیاں بھی قائم ہورہی ہیں، جس میں گائے، بیل اور بکرے بیچنے کیلئے کھڑے کردیئے گئے ہیں۔

ان منڈیوں سے منسلک بیوپاریوں کا کہنا ہے کہ شہری علاقوں میں انہیں کرایہ اور منڈی فیس جیسے اخراجات ادا نہیں کرنے پڑتے، پانی اور چارے کے اخراجات بھی منڈی سے کم ہوتے ہیں اور وہ منڈی سے نرخ کم رکھتے ہیں جس سے انہیں بھی فائدہ ہوتا ہے اور گاہک کو کم قیمت کے ساتھ ساتھ ٹرانسپورٹ کرائے کی مد میں بھی بچت ہوتی ہے۔

عید قرباں جوں جوں قریب آئے گی توقع ظاہر کی جارہی ہے کہ فٹ پاتھوں پر بکرے بیچنے والے بیوپاری آبادیوں میں بھی چکر لگانے لگیں گے جبکہ چھوٹی منڈیوں کا دائرہ بھی پھیلتا چلا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube