Wednesday, October 20, 2021  | 13 Rabiulawal, 1443

جعلی سرمایہ کار کمپنیوں سے ہوشیار رہنے کا انتباہ جاری

SAMAA | - Posted: Jun 10, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 10, 2021 | Last Updated: 4 months ago

فائل فوٹو

سیکورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے جعلی سرمایہ کار کمپنیوں سے ہوشیار رہنے کا انتباہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ شوکت مروت گروپ کے خلاف قانونی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔

جمعرات جون 10 کو سیکورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان کی جانب سے عوام کو انتباہ جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ کسی بھی کمپنی کی ایس ای سی پی سے محض رجسٹریشن اسے شہریوں سےسرمایہ کاری کے نام پر رقوم اکٹھا کرنے کا اختیار نہیں دیتی۔

واضح رہے کہ بینکوں کے علاوہ کسی بھی دوسرے ادارے کا عوام سے نقد رقوم اکٹھی کرنا کمپنیز ایکٹ کی دفعہ 84 کے تحت غیر قانونی ہے، جب کہ صرف ایس ای سی پی سے لائسنس یافتہ نان بینکنگ فنانشل انسٹی ٹیوشنز ہی صرف منظور شدہ اسکیموں جیسے کہ میوچل فنڈز، مضارنہ، اسٹاک مارکیٹ، انشورنس ، لیزنگ، پینشن اسکیموں، رئیٹ، ہاوسنگ فنانس و دیگر منظور شدہ سرمایہ کاری کی اسکیموں کے لئے سرمایہ کاری وصول کر سکتی ہیں۔

جاری اعلامیہ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ عوام سے گزارش ہے کہ وہ غیر قانونی طور پر سرمایہ کاری کے نام پر رقوم اکٹھا کرنے والی کمپنیوں اور افراد کو اپنی قیمتی جمع پونجی جمع نہ کروائیں۔

ایس ای سی پی نے اپنے ریگولیٹری اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے یہ بھی کہا ہے کہ عوام سے غیر قانونی طور پر رقوم اکٹھا کرنے کیلئے سوشل میڈیا پر مہم چلانے اور عوام سے فنڈز اکٹھا کرنے کے خلاف شوکت مروت گروپ آف کمپنیز کی مندرجہ ذیل کمپنیوں، جو کہ ایس ای سی پی کے ساتھ رجسٹرڈ بھی ہیں، ان کے خلاف قانونی کارروائی شروع کردی گئی ہے۔ جن کمپنیوں کے خلاف کارروائی شروع کی گئی ہے ان کے نام مندرجہ ذیل ہیں۔

شوکت مروت گروپ آف کمپنیز (پرائیویٹ ) لمیٹڈ

شوکت مروت اسٹیٹ اینڈ بیلڈرز(پرائیویٹ ) لمیٹڈ

شوکت مروت ٹرانسپورٹز(پرائیویٹ ) لمیٹڈ

شوکت مروت ایمپورٹز اینڈ ایکسپورٹز(پرائیویٹ ) لمیٹڈ

شوکت مروت ریسٹورینٹس (پرائیویٹ ) لمیٹڈ

شوکت مروت ہوٹلز(پرائیویٹ ) لمیٹڈ

یہ کمپنیاں ایس ای سی پی اور ایف بی آر سے رجسٹریشن کے نام پر عوام کو گمراہ کر رہی ہیں اور سوشل میڈیا پر مہم چلا کر عوام سے سرمایہ کاری کے نام پر فنڈز اکٹھا کر رہی ہیں۔ ایس ای سی پی نے کمپنیز ایکٹ سال 2017 کے سیکشن 474 کے تحت ان کمپنیوں کو ہدایت جاری کی ہے کہ وہ عام لوگوں سے سرمایہ کاری کے نام پر رقوم اکٹھی کرنا بند کریں اور اگر ڈیپازٹ کی صورت میں کوئی رقم جمع کی ہوئی ہے تو اسے فور طور پر واپس کیا جائے۔

اس کے علاوہ ایس ای سی پی نے کمپنی ایکٹ 2017 کی دفعہ 84 (2) (بی) کے تحت عوام سے غیر قانونی طور پر ڈیپازٹ اکٹھا کرنے کے الزام میں ان کمپنیوں اور ان کے ڈائریکٹرز کے خلاف قانونی کارروائی شروع کردی ہے، جب کہ ایکٹ کے سیکشن 172 اور سیکشن 189 کے تحت کمپنیوں کے ڈائریکٹرز / سی ای او کی نااہلی کی کارروائی بھی عمل میں لائی جائے گی۔

علاوہ ازیں ایس ای سی پی عوام کو کسی بھی مزید نقصان سے محفوظ رکھنے کے پیش نظر ان کمپنیوں اور ڈائریکٹرز کے خلاف کارروائی کے لئے متعلقہ ریگولیٹری ایجنسیوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ریفرنس بھی بھجوا دیا ہے۔

ایس ای سی پی نے غیر قانونی مالیاتی سرگرمیوں اور عوام سے غیر قانونی طور پر رقوم اکٹھا کرنے والی کچھ کمپنیوں اور اداروں کی ایک فہرست ترتیب دی ہے جو کہ ایس ای سی پی کی ویب سائٹ پر موجود ہے۔ عوام سے گزارش ہے کہ غیر مجاز مالیاتی سرگرمیوں اور غیر قانونی ڈپازٹ وصولی کے خلاف شکایات یا شواہد مندرجہ ذیل ای میل ایڈریس پر بھیجیں۔
scams@secp.gov.pk

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube