ٹویوٹا نے ووکس ویگن کو پیچھے چھوڑدیا

SAMAA | - Posted: Jan 28, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 28, 2021 | Last Updated: 3 months ago

جاپانی کارساز کمپنی ٹویوٹا موٹرز کارپوریشن نے سال 2020 میں گاڑیوں کی فروخت میں جرمن کمپنی ووکس ویگن کو پیچھے چھوڑ دیا۔ ووکس ویگن 5 سال بعد اعزاز سے محروم ہوگئی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق گزشتہ 5 برسوں میں یہ پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ دنیا بھر میں سب سے زیادہ گاڑیاں فروخت کرنیوالی جرمن کمپنی ووکس ویگن اپنی اس پوزیشن سے محروم ہوگئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق ٹویوٹا کمپنی نے جمعرات 28 جنوری 2021ء کو بتایا ہے کہ گزشتہ سال 2020ء میں عالمی سطح پر مجموعی طور پر اس کی گاڑیوں کی فروخت 11.3 فیصد سے کم ہوکر 9.528 ملین گاڑیاں رہی جبکہ اس کے مقابلے میں ووکس ویگن کمپنی میں گاڑیاں تیار کرنے کی شرح 15.2 فیصد تک نیچے گئی ہے جس کے باعث اس کمپنی کی فروخت ہونیوالی گاڑیوں کی تعداد 9.305 ملین رہی۔

مزید جانیے: فوکس ویگن کا پلانٹ 2022 میں فعال ہوگا 

ٹویوٹا کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ ہماری توجہ کبھی بھی اس بات پر نہیں رہی کہ گاڑیوں کی پیداوار میں ہماری درجہ بندی کیا ہوسکتی ہے بلکہ ہمارا پہلا ہدف اپنے صارفین کی خدمت کرنا ہے۔

گزشتہ کچھ عرصے سے کاروں کی مارکیٹ میں چین کی آمد کے بعد ٹویوٹا، ووکس ویگن اور دیگر کاریں بنانے والی کمپنیاں بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کی تیاری کی جانب زیادہ توجہ دے رہی ہیں۔

ٹویوٹا کے ترجمان نے بتایا ہے کہ گزشتہ سال بیٹری یا بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کا تناسب بڑھ کر 23 فیصد ہوگیا ہے جبکہ 2019ء میں ان گاڑیوں کی فروخت 20 فیصد تک رہی تھی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube