یاماہا موٹرسائیکلز کی قیمتوں میں 6ہزار روپے اضافہ

SAMAA | - Posted: Jan 2, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 2, 2021 | Last Updated: 4 months ago

یاماہا نے اپنی تمام موٹرسائیکلوں کی قیمتوں میں 6000 روپے کا اضافہ کردیا ہے جس کے باعث وائی بی آر 125 جی کی قیمت ایک لاکھ 90 ہزار روپے ہوگی۔

نئی قیمتوں کے اطلاق کے بعد یاماہا YB125Z کی قیمت ایک لاکھ 63 ہزار روپے، YB125Z DX  کی قیمت ایک لاکھ 75 ہزار 500 جبکہ وائی ​​بی آر 125 کی قیمت 181000 روپے ہوگی۔

نئی قیمتیں 7 جنوری سے نافذ ہوں گی۔ یاماہا نے پچھلی مرتبہ اکتوبر 2020 میں اپنی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا۔

سوزوکی کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوگا

موٹرسائیکل ڈیلر اور آل پاکستان موٹرسائیکل اسمبلرز کے چیئرمین صابر شیخ کا کہنا ہے کہ سوزوکی سمیت دیگر برانڈز بھی اپنی موٹرسائیکل کی قیمتوں میں اضافہ کریں گے۔

جب سے لاک ڈاؤن کے بعد معیشت کھل گئی ہے پاکسان میں موٹرسائیکلوں کی مانگ بڑھ گئی ہے۔ انڈسٹری ذرائع کے مطابق آٹوموبائل سیکٹر کے موٹرسائیکل شعبے کو 20 سالوں میں پہلی مرتبہ سپلائی میں پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ہے کیونکہ سپلائی چین نے زیادہ ڈیمانڈ کے ساتھ برقرار نہیں رہ سکی۔

بیشتر ڈیلر وقت پر موٹر سائیکل ڈیلیور کرنے قاصر تھے اور موٹرسائیکلیں کراچی میں مشہور اکبر روڈ جیسی کھلی منڈی میں ’اون منی‘ پر فروخت ہو رہی ہیں۔

اون منی کیا ہے

اون منی آٹو سیکٹر کی اصطلاح ہے مگر بنیادی طور پر یہ گاڑی جلد حاصل کرنے کیلئے اصل قیمت سے زیادہ رقم ادا کرنے کو کہتے ہیں۔ مثال کے طور پر اگر آپ عام طور پر کار خریدنا چاہتے ہیں تو آپ کچھ قیمت کا کچھ حصہ دے کر بکنگ کرتے ہیں، پھر کار کی ڈیلیوری تک 3 ماہ تک کا وقت لگتا ہے۔ اس دوران آپ باقی رقم بھی ادا کرتے ہیں اور گاڑی ملتے ہی آپ پوری قیمت ادا کرچکے ہوتے ہیں مگر ’اون منی‘ میں آپ اصل قیمت سے زیادہ پیسے دے کر فوری طور پر گاڑی حاصل کرلیتے ہیں۔

صابر شیخ نے کہا کہ صنعت کو سپلائی کا مسئلہ درپیش ہے۔ کرونا وائرس کے آغاز سے ہی اسپیئر پارٹس اور خام مال کی سپلائی متاثر ہوچکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پہلے نومبر 2019 میں چین میں موٹر سائیکل کی پیداوار بند ہوگئی اور پھر مارچ، اپریل اور مئی کے دوران پاکستان میں صعنت بند ہوگئی۔ جون کے بعد سے موٹرسائیکل کی فروخت میں غیر معمولی اور غیر متوقع اضافہ ہوا۔

چین پاکستان میں خام مال اور موٹرسائیکلوں کے بنیادی پارٹس سپلائی کرتا ہے۔ صابر شیخ کے مطابق یہاں تک کہ وہ لوگ جن کے پاس تین ماہ کا اضافی اسٹاک ہوتا تھا، اب وہ بھی خالی ہاتھ بیٹھے ہیں۔ اب چینی موٹرسائیکلیں جیسے کہ یونیک اور سپر بھی ’اون منی‘ پر فروخت ہو رہی ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube