Friday, January 22, 2021  | 7 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > معیشت

نئی مانیٹری پالیسی کااعلان، شرح سود برقرار رکھنے کافیصلہ

SAMAA | - Posted: Nov 23, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 23, 2020 | Last Updated: 2 months ago

آئندہ 2 ماہ کیلئے شرح سود 7 فیصد پر برقرار رکھنے کا اعلان کردیا گیا۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق مالی سال کے اختتام پر معاشی ترقی دو فیصد سے زائد رہنے کی توقع ہے۔ مرکزی بینک نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ کروناوائرس کے کیسز میں حالیہ اضافے سے معاشی ترقی میں کمی ہوسکتی ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی مانیٹری پالیسی کمیٹی نے آئندہ 2 ماہ کیلئے شرح سود 7 فیصد پر برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

مرکزی بینک کے مطابق کرونا کے بعد لئے جانے والے اقدامات سے ستمبر کے بعد مقامی پیداوار میں بہتری آئی، مالی سال کے اختتام پر معاشی ترقی 2 فیصد سے زائد رہنے کی توقع ہے۔

دوسری جانب اسٹیٹ بینک نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ پاکستان اور بیشتر دیگر ممالک میں کرونا وائرس کے کیسز میں حالیہ اضافے سے معاشی ترقی میں کمی کا خطرہ ہوسکتا ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی مانیٹری پالیسی کمیٹی کا اجلاس گورنر اسٹیٹ بینک سید رضا باقر کی سربراہی میں ہوا۔ مرکزی بینک کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی ویکسین کی تیاری کی خبریں حوصلہ افزاء ہیں لیکن اس پر دنیا بھر میں عملدرآمد ہونے میں کچھ وقت لگ سکتا ہے۔

کمیٹی کا کہنا ہے کہ مہنگائی کی بڑی وجہ غذائی اشیاء کی بڑھتی قیمتیں ہیں، رواں مالی سال کے اختتام پر مہنگائی کی شرح 9 فیصد کے اندر ہی رہنے کی توقع ہے۔

اسٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق بڑے پیمانے کی صنعتوں کی بحالی کا عمل جاری ہے، سیمنٹ سیکٹر کی فروخت تاریخ کی بلند سطح پر ہے، مینوفیکچرنگ سیکٹر کے 15 میں سے 9 شعبوں میں بہتری آئی، کرونا کے بعد پالیسی ریٹ میں سوا 6 فیصد کمی اور بروقت اقدامات سے بحالی میں مدد مل رہی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube