Friday, October 30, 2020  | 12 Rabiulawal, 1442
ہوم   > معیشت

نیا ناظم آبادمیں کئی فٹ پانی نےپراپرٹی کی قیمت میں ہلچل مچادی

SAMAA | - Posted: Sep 5, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 5, 2020 | Last Updated: 2 months ago

عائشہ ارشد کراچی کےعلاقے نارتھ ناظم آباد کی رہائشی ہیں۔انھوں نے سپرہائی وے پر گھر خریدا۔اپنے شوہرکےساتھ بارشوں سےکچھ ہفتے قبل نیاناظم آباد کا رخ کیا تو وہ یہاں کی کنسٹرکشن دیکھ کر حیران رہ گئیں اوراپنے شوہر کو کہا کہ اگر انھیں پہلے معلوم ہوتا تو وہ سپرہائی وے کے بجائے یہاں گھر خریدتے تاہم اب ان کے خیالات تبدیل ہوگئے ہیں۔

نیا ناظم آباد کا تاثر ایک پوش علاقے کا آتا ہے جہاں پلاٹس اور دیگر سہولیات موجود ہیں۔ تاہم حالیہ بارشوں نے صورتحال انتہائی خراب کردی ہے۔ اگست کے آخری ہفتے میں ہونے والی بارش کے بعد یہاں جمع ہونے والا کئی کئی فٹ بارش کا پانی تباہی کی داستان سناتا ہے۔ بارش کے پانی نے جہاں یہاں کے انفرا اسٹریکچرکونقصان پہنچایا وہیں مکانات میں موجود لاکھوں روپے مالیت کا سامان بھی خراب ہوگیا۔

 ناظم آباد میں جائیداد کی خریدوفروخت کا کام کرنے والےکامران شیخ کا کہنا ہے کہ بارشوں کے بعد کی صورتحال سے پورا نیا ناظم آباد کا منصوبہ متاثر ہوگا۔ انھوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ نیا ناظم آباد کی ایک کروڑ بیس لاکھ مالیت کی پراپرٹی اب ایک کروڑ میں بھی فروخت کرنا مشکل لگ رہا ہے۔

کامران شیخ وہ واحد پراپرٹی ڈیلر نہیں جن کا ماننا ہے کہ یہاں کی قیمتیں مزید نیچے جاسکتی ہیں۔ ایک اور پراپرٹی ڈیلر شاہ محمد شاہ نے کہا ہے کہ نیا ناظم آباد میں پراپرٹی کی قیمت میں 25 سے 30 فیصد تک کمی ہوسکتی ہے۔

انھوں نےبتایا کہ خراب موسمی حالات کے باوجود لوگ یہاں پراپرٹی خریدنےمیں دلچسپی رکھیں گے۔ لوگوں کا خیال ہے کہ اس بار ریکارڈ بارشیں ہونے کی وجہ سے صورتحال خراب ہوئی، یہ علاقہ خریداروں کےریڈار پر ہمیشہ موجود رہے گا۔

نیا ناظم آباد کے ایگزیکیٹو ڈائریکٹرمحمداعجاز کا ماننا ہے کہ ایک واقعے کی وجہ سے علاقے کا تشخص متاثر ہونے کا تاثر درست نہیں۔ اس جیسے منصوبےکا پاکستان میں کوئی ثانی نہیں ہے۔ انھوں نے یہ بھی مسترد کردیا کہ بارش کے پانی کی وجہ سے یہاں کے مکانات کی بنیادیں متاثر ہوئی ہیں۔

محمداعجازنےیقین دلایا کہ اس سوسائٹی کی انتظامیہ یہاں کے مسائل کے ہرممکن حل  کے لیے اقدامات کرے گی۔ انھوں نے یہ بھی عزم ظاہر کیا کہ موسمی تبدیلیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اگلے سال اور آنے والے برسوں کےلیے بھرپور تیاریاں پہلے سے کرلی جائیں گی۔

ایک اور پراپرٹی ڈیلرمحمدعتیق نےبتایا کہ حالیہ بارشوں کے نتیجے میں جمع ہونے والے کئی کئی فٹ پانی کی صورتحال کو پورے پاکستان نے دیکھا ہے اور اس کے قیمتوں پرمتضاد نتائج آئیں گے۔

انھوں نے ایک نکتہ بتایا کہ بلاک اے دیگر بلاکس کے مقابلے میں اونچائی پر ہے۔ اس کے نزدیک موجود بلاک بی بھی قدرے متاثر ہوا ہے۔ بلاک سی پانی میں مکمل ڈوبا جبکہ بلاک ڈی بھی جزوی طور پر متاثر ہوا۔

انھوں نے یہ بھی بتایا کہ متاثر بلاک میں رہنےوالےافراد دیگر بلاکس میں مکانات خریدنے یا وہاں منتقل ہونے پر غور کررہے ہیں۔ انھوں نے اس سوسائٹی سے نکلنے یا مکمل چھوڑنے کا خیال ظاہر نہیں کیا ہے کیوں کہ یہاں کی چوڑی سڑکیں اور دیگر سہولیات شہر کے دیگر علاقے سے زیادہ اس کو ممتاز بناتی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube