ہوم   > معیشت

آئی ایم ایف سےمذاکرات:کوئی منی بجٹ نہیں آئےگا،وزارت خزانہ

SAMAA | - Posted: Feb 14, 2020 | Last Updated: 7 days ago
SAMAA |
Posted: Feb 14, 2020 | Last Updated: 7 days ago

دوسرے اقتصادی جائزہ مذاکرات کامیابی سے مکمل

عالمی مالیاتی ادارے سے اگلی قسط کیلئے پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان دوسرے اقتصادی جائزہ مذاکرات کامیابی سے مکمل ہوگئے ہیں۔ وزارت خزانہ کے حکام کا کہنا ہے کہ کوئی منی بجٹ نہیں آئے گا، آئی ایم ایف نے معاشی اصلاحات میں پیش رفت کے اعتراف کے ساتھ ہی ڈو مور کا مطالبہ بھی کیا۔ بجلی و گیس کی قیمتیں اور ٹیکس ریونیو بڑھانے پر زور دیا ہے۔

آئی ایم ایف نے پاکستانی معاشی اصلاحات میں پیشرفت کا اعتراف کیا ہے۔ منی لانڈرنگ اورٹیرر فنانسنگ کیخلاف پاکستان کے اقدامات پر بھی اظہار اطمينان کیا ہے۔ آئی ایم ایف نے بجلی گیس کی قیمتوں میں اضافے، ٹیکس ریونیو بڑھانے اور سرکاری اداروں کے نقصانات میں کمی لانےکا مطالبہ کرديا ہے۔

تین سے تیرہ فروری تک جاری رہنے والے مذاکرات میں پاکستان نے سرکاری اداروں کی نجکاری اور نان ٹیکس ریونیو بڑھانے کے ساتھ غیرضروری اخراجات اور خسارے میں کمی لانے کی یقین دہانی کرادی ہے۔ وزارت خزانہ کے مطابق مذاکرات کے نتیجے میں کوئی منی بجٹ نہیں آئے گا،آئی ايم ايف مشن کو ٹیکس ریونیو اور ترسیلات زر میں اضافے سے متعلق آگاہ کرديا گيا ہے۔ مذاکرات میں بجلی گیس کی قیمتوں اور گردشی قرضے کے معاملے پر سخت بحث ہوئی ہے۔عالمی ادارے نے ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان کے اہداف کی جلد تکمیل پر زوردیا ہے۔

کامياب مذاکرات کے بعد آئی ایم ایف کا وفد واپس روانہ ہوگیا ہے۔ اب آئی ایم ایف کا ایگزیکٹو بورڈ 45 کروڑ ڈالرکی اگلی قسط جاری کرنے کی منظوری دےگا، 6 ارب ڈالر میں سے پاکستان کو 1 ارب 44 کروڑ ڈالر پہلے ہی مل چکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube