Friday, September 25, 2020  | 6 Safar, 1442
ہوم   > معیشت

آئی ایم ایف مالیاتی اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر مطمئن

SAMAA | - Posted: Feb 12, 2020 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 12, 2020 | Last Updated: 8 months ago

متعدد امور پر اتفاق

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات میں طے پایا ہے کہ نہ ٹیکس ہدف میں کمی ہوگی اور ہی نہ جون تک نئے ٹیکس لگائے جائیں گے جبکہ منی بجٹ نہ لانے پر بھی اتفاق ہوگیا۔ سیلز ٹیکس کی شرح اٹھارہ فی صد تک بڑھانے کی تجویز بھی مسترد کردی گئی۔ موجودہ سترہ فیصد شرح ہی برقرار رہے گی۔

وزارت خزانہ حکام کے مطابق وفد کو غیر ضروری اخراجات میں کمی اور اسٹیٹ بینک کی خود مختاری میں اضافے کی یقین دہانی کرائی گئی۔ سماجی تحفظ اور ترقیاتی بجٹ میں کٹوتی نہیں کی جائے گی۔

آئی ایم ایف کے وفد نے مالیاتی اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر اطمینان ظاہر کیا۔ مذاکرات میں اتفاق کیا گیا کہ نجکاری سمیت نان ٹیکس ریونیو میں اضافہ کیا جائے گا۔ نان ٹیکس آمدن میں 400 ارب روپے اضافہ متوقع ہے۔ سرکاری اداروں کی نجکاری کے روڈ میپ پر عمل درآمد یقینی بنایا جائے گا۔

آئی ایم ایف کو ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان پر عمل درآمد میں پیش رفت پر بھی بریفنگ دی گئی۔ حکام کا کہنا ہے کہ نظرثانی شدہ ٹیکس اہداف پورے کرنے کی بھرپور کوشش کی جائے گی۔ بیش تر اہداف حاصل کر لیے ہیں۔ جون تک مزید پیش رفت ہوگی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube