Friday, January 22, 2021  | 7 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > معیشت

وفاقی حکومت کے قرضوں کی تفصیلات جاری،اسٹیٹ بینک

SAMAA | - Posted: Sep 14, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Sep 14, 2019 | Last Updated: 1 year ago

مالی خسارے اور قرضوں کے سود کی ادائیگی کے مسائل کا سامنا

اسٹیٹ بینک نے وفاقی حکومت کے قرضوں کی تفصیلات جاری کردی ہیں۔ حکومت کو مالی خسارے اور قرضوں کے سود کی ادائیگی کے مسائل کا سامنا ہے۔

پی ٹی آئی حکومت نے ایک سال میں 8 ہزار337 ارب روپے کے ریکارڈ قرضے لئے لیے ہیں۔جولائی 2019 میں 1237 ارب روپے کا قرض لیا گیا۔ مجموعی قرضوں کا حجم 33 ہزار ارب روپے سے بھی تجاوز کرگیا ہے۔

مالیاتی خسارے جولائی 2018 میں 24ہزار 690 ارب روپے تک پہنچ چکا تھا جب کہ جولائی 2018 سے جولائی 2019 کے دوران ایک سال میں مزید 8333 ارب روپے کے ریکارڈ قرض لیا گیا۔مجموعی قرضوں میں مقامی قرض 22 ہزار 12 ارب روپے ہوگئےجبکہ حکومت کے بیرونی قرضے 11ہزار 11 ارب روپے تک جا پہنچے ہیں۔جولائی 2018 سے حکومتی قرض ایک تہائی بڑھا ہے۔بیرونی قرضوں کے لئے روپے میں ڈالر کی مالیت 163 ارب روپے سے نکالی گئی ہے۔

اگر سابقہ حکومتوں سے موازنہ کیا جائے تو پی پی پی کی دور حکومت نے 5 سال میں مجموعی طور پر 8136 ارب روپے قرض لئے تھے جس میں سب سے زیادہ قرض پی پی پی حکومت نے مالی سال 2012-13 میں 2112 ارب روپے لئے تھے۔

مسلم لیگ ن کے دورِحکومت نے 5 سال میں مجموعی طور پر 10 ہزار 200 ارب روپے قرضے لئے تھے۔مسلم لیگ ن حکومت نے پہلے برس مالی سال 2013 میں 3415 ارب روپے کے قرضے لئے تھے۔

معاشی ماہر مزمل اسلم کہتے ہیں کہ ایک سال میں روپے کی قدر میں 32 فیصد کمی ہوئی جس سے ڈالر 124.50 سے بڑھ کر جولائی 2019 میں 163 روپے تک جا پہنچا جس کی وجہ سے قرضوں میں 4 ہزار ارب روپے کا بوجھ بڑھ گیا جبکہ ایک سال میں موجود حکومت نے بجٹ خسارے کے لیے 4333 ارب روپے کا قرضہ لیا ہے۔

 

 

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube