میک اپ مہنگا ہونے پرقائمہ کمیٹی برائےخزانہ برہم

November 10, 2017

اسلام آباد:خواتین کے بناؤ سنگھا کا سامان مہنگا کرنے پر سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائےخزانہ کے ارکان برہم ہو گئے۔ ایف بی آر حکام کے مطابق غیرملکی کھیروں کی مانگ بھی بہت بڑھ چکی جن پر تین ماہ میں اڑتالیس کروڑ روپے خرچ ہوچکے۔

خواتین کے میک اپ کا سامان مہنگا کیے جانے پرسینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائےخزانہ ، فیڈرل بورڈ آف ریونیو حکام پربرہم ہو گئے۔ رکن کمیٹی کامل علی آغا نے کہا عورتوں کو سجنے سنورنے سے تومذہب نہیں روکتا۔سارے ٹیکس کسی کو ذاتی فائدہ پہنچانے کیلئے لگائے گئے ہیں۔ غریب خواتین چین سے درآمد شدہ میک اپ کا سامان استعمال کر رہی تھیں۔ یہ ساری ریگولیٹری ڈیوٹی واپس ہونی چاہئے۔ بجٹ کے علاوہ کوئی بھی ٹیکس غیر قانونی، غیر آئینی اور غیر اخلاقی ہے۔

ایف بی آر حکام نے کہاعوام میں غیر ملکی سامان کا شوق لت بن چکا۔ رواں مالی سال کی پہلی سہہ ماہی میں 48 کروڑ کے تو کھیرے ہی درآمد کر لیے گئے۔ بکھیڑا تو صرف امپورٹڈ مال کا ہے۔

ایف بی آر ممبر کسٹمزمحمد زاہد کھوکھرنے کہا لہ کاسمیٹکس، سن گلاسز، مہنگی درآمدی گاڑیوں سمیت ایسے غیر ضروری آئٹمز ہیں جن پر ڈیوٹی بڑھائی گئی تاکہ ان کو تھوڑا مہنگا کیا جا سکے تاکہ لوگ مقامی سطح پر تیار کردہ اشیاء استعمال کریں۔

ایف بی آر حکام کے مطابق میڈ ان پاکستان کلچر کو فروغ دینے کیلئے ہر سطح پر اقدامات اور پزیرائی کی ضرورت ہے۔ سماء

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.