امن کے دشمن بھارت پر مزید جنگی جنون سوار

Samaa Web Desk
February 7, 2017

نئی دہلی : اپنی ہی سرزمین پر حملوں کا ڈھونگ رچانے والے بھارت نے خطے میں طاقت کا توازن بگاڑنے کیلئے ’ہنگامی بنیادوں پر دفاعی معاہدوں کی بھرمار کردی۔

ایک طرف جنوبی فوج نہتے بے گناہ اور کمزور کشمیریوں پر پلاسٹک گولیوں کا استعمال کر رہی ہے تو دوسری جانب دفاعی بجٹ میں اضافے کی بھوک بھی ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی۔

 

EX VIJAYEE BHAVA IN PROGRESS (6)-791683

 

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق بھارت کی جانب سے گزشتہ دو سے تین ماہ کے دوران تقریباً 200 ارب روپے کے ہتھیاروں کے "ہنگامی معاہدے" طے کیے جانے کا انکشاف ہوا ہے،ان معاہدوں کا مقصد بھگوڑے فوجیوں کو بھاگنے سے روکنے اور زیر تربیت افواج کو مختصر وقت میں جنگ کیلئے تیار کرنا ہے۔

Agni-II_missile_in Indian_Army_Parade

وزارت دفاع کے حوالے سے جاری بیان کے مطابق اس بات کا انکشاف کیا گیا ہے کہ ان معاہدوں کا مقصد اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ بھارتی افواج 10 روز تک مسلسل "شدید لڑائی" کے قابل رہے سکے۔ اسے اسلحہ و گولا بارود اور دیگر جنگی آلات کے ختم ہوجانے کا خدشہ نہ ہو۔

four-defence-equipment-india-will-buy-from-us

رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال ستمبر میں مقبوضہ وادی کشمیر میں اڑی کے مقام پر  ہونے والے اڑی واقعہ کے بعد بھارت نے روس، فرانس، اسرائیل سمیت کئی دیگر ممالک کے ساتھ کئی دفاعی معاہدوں پر تیزی دکھائی۔

Indian_Su-30MKI_Fighter_Aircraft

اب تک اڑی واقعہ سے اب تک بھارتی فضائیہ نے 92 ارب بھارتی روپے کے 43 معاہدوں کو حتمی شکل دی جن میں سوکوئی 30 ایم کے آئی، میراج 2000 ایس اور ایم آئی جی 29 جنگی طیاروں کے لیے گولہ بارود اور پرزے شامل ہیں۔

indian-army-t-90-tanks-parade-republic-day-february-2008-reuters

بھارت کی جانب سے کیے جانے والے معاہدوں میں مال بردار طیاروں آئی ایل 76 ایس اور فضاء میں ایندھن بھرنے کے لیے استعمال ہونے والے آئی ایل 78 ایس اور فیلکن اے ڈبلیو اے سی ایس طیاروں کے سامان کی خریداری بھی شامل ہے، جب کہ فوج کیلئے ٹی 90 اور ٹی 72 ٹینکس کے انجن اور گولا بارود، کونکرز ٹینک شکن گائیڈڈ میزائلز اور اسمرچ راکٹس کی خریداری کے لیے روسی کمپنیوں کے ساتھ 58 ارب روپے کے 10 معاہدوں پر بھی دستخط کیے۔

57f51a8dc46188ec558b458c

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ رواں مالی سال کیلئے بھارت نے دفاع کے لیے 27 کھرب 40 ارب روپے رکھے ہیں، جب کہ گزشتہ برس یہ رقم 24 کھرب 90 ارب بھارتی روپے تھا۔ سماء