Tuesday, January 18, 2022  | 14 Jamadilakhir, 1443

جسٹس وقارسیٹھ، پرویز مشرف کو سزا سنانے والے جج

SAMAA | - Posted: Nov 13, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Posted: Nov 13, 2020 | Last Updated: 1 year ago

پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس وقاراحمد سیٹھ 59 برس کی عمر میں جمعرات 12 نومبر کو کرونا وائرس میں مبتلا ہونے کے باعث انتقال کرگئے۔ انہوں نے سابق صدر اور جنرل (ر) پرویز مشرف کو سزا سنائی تھی۔

سماء کے پروگرام ایجنڈا 360 کے میزبان اور وکیل عبدالمعیز جعفری نے بتایا کہ جسٹس وقار احمد سیٹھ کے عدالتی کیریئر کے چند فیصلے ہمیشہ تاریخ کا حصہ رہیں گے۔ جسٹس سیٹھ آزاد کردار اور ذہن کے جج سمجھے جاتے ہیں، کچھ لوگوں کو جسٹس وقار سیٹھ مشکل لگتے تھے اور وہی ان کے انتقال پر افسوس کا اظہار کررہے ہیں اور حکومتی عہدوں پر ہیں۔

عبدالمعیز جعفری نے بتایا کہ جسٹس وقار نے حالیہ دنوں میں آرمی کورٹس سے مبینہ 74 دہشت گردوں کو ہونے والی سزاؤں میں سے 50 کی سزائے موت کو کالعدم قرار دیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ مقدمہ چلائے جانے کے بنیادی حقوق ملزمان کو نہیں دئیے گئے۔

سماء ٹی وی کے اینکر کا مزید کہنا تھا کہ جسٹس وقار احمد سیٹھ نے 2019ء میں جبری گمشدگی کے سینٹرز کے حوالے سے معاملے کو قانونی جامع پہناتے ہوئے حکم دیا تھا کہ تمام افراد جو پولیس کی حراست میں نہیں ہیں انہیں فوری طور پر غیرقانونی حراستی مراکز سے نکال کر پولیس کے حوالے کیا جائے۔

انہوں نے سابق صدر اور جنرل (ر) پرویز مشرف کیس میں بھی سزائے موت کا فیصلہ سنایا، پہلی بار پاکستان میں کسی آمر کو موت کی سزا سنائی گئی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube