Monday, September 28, 2020  | 9 Safar, 1442
ہوم   > بلاگز

ڈھونگی بابا

SAMAA | - Posted: Sep 16, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago
SAMAA |
Posted: Sep 16, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago

ڈھونگی بابا کے بارے میں تو آپ سب نے سنا ہی ہوگا۔ اگر نہیں سنا تو یقینا دیواروں پر لکھے گئے تعویز گنڈہ کرنے والے عامل بابوں اور جعلی پیروں کے اشتہارات ضرور دیکھے ہوں گے کہ فلاں عامل بابا کے پاس ہر مسئلے کا حل ہے۔ افسوس کہ جہالت اور کم علمی نے ان ڈھونگی بابوں کا دھندہ عروع تک پہنچایا ہے۔

ان ڈھونگی بابوں نے اپنی وضع قطع بالکل پیروں، فقیروں اور صوفیوں کی بنا رکھی ہے لیکن وہ اپنے کرتبوں اور مکاریوں سے لوگوں کو گمراہ کر رہے ہیں۔

ڈھونگی بابوں کے اصلی شکار

بد قسمتی سے عورتیں ڈھونگی بابوں کا زیادہ شکار ہوتی ہیں اور ان بابوں سے امید لگا لیتی ہیں کہ ڈھونگی بابا ان کے مسائل حل کریں گے۔ کسی کی خاوند سے لڑائی ہوگئی ہو تو اسے راہ راست پر لانے کے لئے، کوئی ساس سے تنگ ہے، کوئی سوکن سے دشمنی نبھانے ان بابوں کے پاس پہنچ جاتی ہے تو کوئی محبوب کی ٹھکرائی ہوئی اس کی یاد میں تڑپتے تڑپتے ان بابوں کے آستانوں کا رخ کرتی ہے۔

یہ بابے بھاری نذرانے کے عوض محبوب کو قدموں میں لاکر گرانے کا وعدہ کرتے ہیں اور بڑی بڑی رقم اینٹھ لیتے ہیں۔ کچھ مجبور بے وقوف عورتیں ان بابوں کی فرمائشیں پوری کرنے کے لئے اپنے زیور تک بیچ دیتی ہیں لیکن ان ڈھونگیوں کے پیٹ کبھی نہیں بھرتے۔

اسی طرح اکثر مرد حضرات پر بھی ایسی کیفیات طاری ہوتی ہیں کہ وہ ذہنی اطمینان کے لیے ان جعلی پیروں اور عاملوں کا رخ کرتے ہیں۔ مثلا رزق میں بندش یا بیرون ملک ملازمت کا مسئلہ ہو، کاروبار میں ناکامی کا مسئلہ ہو یا کوئی گھریلو ناچاقی وغیرہ۔ ان عامل بابوں سےحاصل کیا ہوتا ہے۔ کچھ بھی نہیں!

ڈھونگی بابوں کی فرمائشیں

ان بابوں کی فرمائشیں کیا ہوتی ہیں۔ کٹی دم والے گونگے الو کی ہڈی، زعفران، کالے بکرے کی سری جس کی دم سفید ہو، انڈے، ماش کی دال، ناریل، شہد اور تو اور چھوٹے بڑے پائے وغیرہ۔ پھر اس کے ساتھ ساتھ بعض تو گوشت سمیت پورے گھر کا راشن بھی انہی مریدوں سے منگوا لیتے ہیں تاکہ ٹماٹر، پیاز اور مصالحوں کے لئے زیادہ تردد نہ کرنا پڑے۔ زیادہ تر عورتیں سامان کا انتظام نہیں کر پاتیں اور نقد ہی تھما دیتی ہیں تو وہ مزید فائدے میں رہتے ہیں۔

کار قدرت میں مداخلت کیسی؟ نہ جانے انسان کیوں ان جعلی پیروں اور عاملوں کے ہتھے چڑھ جاتا ہے اور جس چیز میں قدرت کی مرضی شامل ہوتی ہے اسے روکنے کے لئے ڈھونگی بابوں کے چھو چھو پر بھروسہ کر لیتا ہے۔ حیرت ہے کہ اکثر جعلی گدی نشین تو اپنی ایک چھو سے ہزاروں کے مجمعے کو ایک منٹ کے اندر تندرست کر دیتے ہیں۔

ہمیں بطور انسان اپنی سوچ اور رویوں کو بدلنے کی ضرورت ہے۔ جعلی عامل بابے ان پڑھ اور بے وقوف لوگوں کو لوٹ رہے ہیں۔ اگر ان نام نہاد عامل بابوں کی ایک چھو سے تمام مسائل کا حل ممکن ہوتا تو معاشرے میں کوئی مسئلہ جنم ہی نہ لیتا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube