Saturday, August 15, 2020  | 24 Zilhaj, 1441
ہوم   > بلاگز

اسٹیورٹ براڈ کیوں آگے؟ عامر اور وہاب کيوں پيچھے؟

SAMAA | - Posted: Jul 29, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago
SAMAA |
Posted: Jul 29, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago
Stuard Broad

فوٹو: اے ایف پی

محمد عامر اور وہاب رياض کا ٹيسٹ کیرئير انگلش فاسٹ بالر اسٹيورٹ براڈ کے بعد شروع ہوا۔ دونوں کی رفتار براڈ سے زيادہ تھی جبکہ وہاب رياض کے پاس ريورس سوئنگ کی اضافی صلاحيت بھی تھی۔ اسٹيورٹ براڈ نے 2007، محمد عامر نے 2009 اور وہاب ریاض نے 2010 ميں ڈيبيو کيا مگر آج 2020 ميں انگلش فاسٹ بالر کی وکٹوں کی تعداد 501 ہے۔ وہ يہ کارنامہ انجام دينے والے دنيا کے ساتويں بالر ہيں۔

دوسری جانب 28 سالہ محمد عامر کا ٹيسٹ کیرئير صرف 36 ميچوں اور 119 وکٹوں پر ہی ختم ہوگيا۔ وہاب رياض بھی تھکاوٹ کا شکار ہوئے تو ٹيسٹ کرکٹ سے بريک لينے کا اعلان کيا۔ وہاب رياض نے صرف 81 وکٹوں پر ہی اکتفا کيا۔

وہاب رياض اور محمد عامر کيوں پيچھے رہ گئے؟ اسٹيورٹ براڈ کيسے آگے نکل گئے؟ ذرا اور پيچھے جائيں تو ہر طرف محمد آصف کا طوطی بولتا تھا مگر آصف کا کیرئير صرف 23 ميچز اور 106 وکٹوں پر ختم ہوگيا۔ کيوں؟ جنيد خان اور حسن علی اب ٹيسٹ کرکٹ سے کيوں باہر ہيں؟ راحت علی، احسان عادل اور سہيل خان کا کيا بنا؟

پاکستان 2009 سے 2020 تک 21 فاسٹ بالرز کو ٹيسٹ کيپ دے چکا ہے مگر کوئی ايک بالر بھی 150وکٹيں نہ لے سکا جب کہ 2007 میں ڈیبیو کرنے والے اکيلے اسٹيورٹ براڈ کی وکٹوں کی تعداد 140 ٹيسٹ ميچز ميں 501 ہے۔ صلاحيت اور مہارت کی بات کی جائے تو آصف، عامر، وہاب، جنيد خان اور حسن علی سب ہی نے دنيا کو متاثر کيا مگر پھر اچانک ان ستاروں کی روشنی ماند پڑگئی۔

اگر جائزہ ليا جائے تو اسٹيورٹ براڈ کی کاميابی کی وجوہات درج ذیل تھيں۔ کرئير تنازعات سے پاک رہا، فٹنس بے مثال رہی، اسکلز ميں مسلسل اضافہ کرتے رہے۔

پاکستانی بالرز غير معمولی صلاحيتوں کے باوجود لیجنڈ کیوں نہ بن سکے؟ ہر بالر کی اپنی الگ کہانی ہے مگر درج ذيل وجوہات زيادہ نماياں رہيں۔ کسی کا کيرئير تنازعات ميں گھرا رہا، کسی کی فٹنس معياری نہ تھی، اسکلز ميں اضافہ نہ کيا، ٹی ٹوئنٹی کو ٹيسٹ کرکٹ پر ترجيح دی اور ڈسپلن کا فقدان ہے۔

خوش قسمتی سے آج پاکستان کو نسيم شاہ، شاہين آفريدی، موسیٰ خان اور حسنين کی شکل ميں نوجوان فاسٹ بالر ميسر ہيں۔ اگر يہ بالرز اپنے کیرئير کو طول دينا چاہتے ہيں، ليجنڈز بننا چاہتے ہيں، ريکارڈ بکس ميں اپنا نام ديکھنا چاہتے ہيں تو اسٹيورٹ براڈ اور جيمز اينڈرسن کو اپنا آئيڈيل بنائيں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube