ہوم   >  بلاگز

آپ روٹی کوچوچی کہتے ہیں؟

SAMAA | - Posted: Jan 2, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 2, 2020 | Last Updated: 2 months ago

پاکستان کے آئین میں موجود آرٹیکل 62 کی رو سے صرف وہی شخص پارلیمنٹ کا حصہ بن سکتا ہے جو اچھے کردار کا حامل ہو اور اسلامی احکامات سے انحراف نہ کرتا ہو۔ اس آرٹیکل کی شق (ہ) کے تحت اسلامی تعلیمات کا خاطرخواہ علم رکھتا ہو، اسلامی فرائض کا پابند، کبیرہ گناہوں سے اجتناب برتتا ہو اور شق (و) کے مطابق  سمجھدار، پارسا، ایمانداراورامین ہو۔

ہمارے ووٹوں سے منتخب محترم سیاستدانوں میں یہ ساری خوبیاں ناپید نہ سہی لیکن ان کی قلت ضرور ہے، ایسا ہوتا تورائی ہوتی نہ آئے روزپہاڑ بنتے۔۔۔۔ نہ 9 من تیل ہوتا نہ رادھا ناچتی ۔۔

آپ کو قندیل بلوچ تو یاد ہوگی؟ وہی جو ابتداء کے بعد انتہا کی جانب قدم بڑھاتے ہوئے آب وتاب سے جل رہی تھی کہ بجھا دی گئی۔ اب دور ہےحریم شاہ اور صندل خٹک کا جن کی نہ تو ادائیں ساحرانہ ہیں نہ ہی انداز ایسا دلبرانہ کہ سامنے والا رپٹ کے قدموں میں گرپڑے  تو پھر ایسی کون سی گیدڑ سنگھی ہے جسے سنگھا کر یہ بیبیاں اقتدار کے اونچے ایوانوں تک رسائی پا جاتی ہیں؟ نہ صرف ایوانوں تک بلکہ وہاں کے نگہبانوں کے گوڈوں تک بھی ، یہ الگ بات کہ ایسے ثبوتوں کو پھر دل گردوں کے ایموجیز سے آدھا دکھایا اور آدھا چھپایا جاتا ہے۔

اور پھر سوشل میڈیا پر جہاں کسی کی چھینک بھی نہیں چھپتی، یہ سب وائرل ہوتو بھان متی کے کنبے کے سبھی اینٹ روڑے اپنی اپنی بولی بولنے لگ جاتے ہیں۔ تان یہاں آ کر ٹوٹتی ہے کہ حریم شاہ ایسی ، صندل خٹک ویسی۔ ایک وفاقی وزیر نے اپنی ویڈیو کال سامنے آنے پر چپ سادھ رکھی ہے تو ایف 16 کی رفتار سے بھی زیادہ تیز زبان کے جوہردکھا کر ایک بار وزارت چھننے کے بعد دوبارہ  ملنے والے صاحب بھی یہاں آکر ایک چپ سو سکھ کی پالیسی اپنا لیتے ہیں۔

ٹی وی پر چلنے والے بحث مباحثوں ، سوشل میڈیا پر حمایتیوں کی ان دونوں ٹک ٹاک اسٹارز کے خلاف کھلی جنگ جس میں گالی سے بات کرنا اولین فریضہ سمجھا جا رہا ہے، اور وزراء کے محتاط بیانات سے یہ اندازہ تو ہوگیا کہ غلطی صرف صندل اور حریم کی ہے جو ان اوچھی حرکتوں سے معاشرے کے مہذب افراد کی عزتوں کو خطرے سے دو چار کر رہی ہیں۔ دونوں کو للکارنے والی غیرت بریگیٖڈ کی اولین صفوں میں تازہ اضافہ  ایک گوری کو 5 ہزار درہم دیکر ویڈیو بنانے کے بعد اپنی شوشا میں اضافہ کرنے والے سوشل میڈیا اسٹار بھولا ریکارڈ کا ہے جو وطن کی ناموس بچانے دوڑا دوڑا مہنگی فلائٹ سے واپس آیا ہے اور دعویٰ کررہا ہے کہ پاکستان کی عزت اپنی جان سے پیاری ہے، اس لیے نیچ خاندان سے تعلق رکھنے والی حریم شاہ بازآجائے ورنہ بھولا اس کے سبھی راز فاش کردے گا۔

ان بھولوں ، نوروں ، ماجوں ، گاموں سے کون پوچھے گا کہ حریم شاہ اور صندل خٹک کی اونچی اڑان ممکن کیسے ہوئی؟ دفترخارجہ جہاں عام آدمی کی رسائی ممکن ہی نہیں ، وہاں کے کمیٹی روم میں فلمی گانوں پرٹک ٹاک ویڈیوز بنانا اگر ایسا ہی خالہ جی کے گھر جانے جیسا ہو تو پھر تو ٹک ٹاک کے شوقین سارے کاکے کاکیاں اس بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے پہنچ جائیں۔ حسن اتفاق کہوں یا کیا کہ حریم شاہ کی نظر کرم خاص پی ٹی آئی والوں کیلئے ہے یا خود حکومتی جماعت والے ہی ایسا چاہتے ہیں کہ کہیں اور نہ جانا۔ اب تک سامنے آنے والی تصاویر اور ویڈیوز کا جائزہ لیں تو “آئی آئی پی ٹی آئی، چھائی چھائی پی ٹی آئی ” والا حساب لگتا ہے۔نامورصحافی کے جہاز کی یاترا الگ قصہ ہے جو ہیپی اینڈ کے بجائے نہ جانے کیوں بدنامی مہم پر موقوف ہوا۔

اس سارے فسانے میں سب سے زیادہ شہرت سمیٹنے والے وفاقی وزیر فرماتے ہیں “اللہ مالک ہے”  تو دوسرے صوبائی وزیر اپنی آڈیو کال لیک ہونے کے بعد معصومانہ فرمائش کرتے ہیں کہ پاکستان میں ٹک ٹاک پر پابندی عائد ہونی چاہیے۔۔ ممکن ہے انہیں اس سیاسی بازار میں کھلی رنگین گلی کے ممکنہ راز فاش ہونے کا ڈر ہو یا سوشل میڈیا نامی عفریت پر بدنامی کا خوف کھائے جاتا ہو لیکن سوال تو بنتا ہے کہ عام سی حریم شاہ اور صندل خٹک کو اتنا خاص بنانے کیلئے کیا مریخ سے کوئی مخلوق آئی تھی یا یہاں بھی ان عربی شیخوں کا دباؤ چلا جو ان کے ٹک ٹاک پیجز پر ویڈیوزاور تصاویرمیں بڑے طمطراق کے ساتھ دکھائی دیتے ہیں؟ خود حریم شاہ کا کہنا ہے کہ کسی کو بلیک میل کیا نہ ارادہ ہے لیکن ساتھ ہی یہ بھی واضح کر رکھا ہے کہ آج کل موبائل کا دور ہے جس میں ہرچیز ریکارڈ ہوجاتی ہے۔

اب تو بس یہی ہے کہ ۔۔ کٹا کھل چکا ہے جسے باندھنے کا شرف اسے خود کھولنے والے ہمارے سیاستدانوں کو تو شاید ہی حاصل ہو کیونکہ آرٹیکل 62 ان سے دیگر صفات کے ساتھ ساتھ سمجھداری کا تقاضا بھی تو کرتا ہے اس لیےخاموشی ہی بھلی۔ رہا عوام کی خدمت کا فرض جسے نبھانے کیلئے حلف لیا تھا تو چھوڑیں جناب ۔۔۔  کیا آپ بھی روٹی کو چوچی کہتے ہیں؟ ۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube