Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

پاکستانیوں عمران خان کا ساتھ دو

SAMAA | - Posted: Aug 21, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 21, 2018 | Last Updated: 3 years ago


وزیراعظم عمران خان کا قوم سے پہلا خطاب سنا تو عمران خان پر بھروسہ اور بھی بڑھ گیا۔ بطور وزیراعظم عمران خان نے قوم سے اپنے پہلے خطاب میں جو باتیں کی وہ ایک عوامی رہنما ہی کرسکتا ہے۔ جب عمران خان نے خطاب شروع کیا تو مجھے لگا کہ عمران خان روایتی خطاب کریں گے اور سابق وزرائے اعظم کی طرح لکھی ہوئی تحریر قوم کو سنا کر خدا حافظ کہہ دیں گے مگر وزیراعظم عمران خان نے عوامی مسائل پر گفتگو کرکے مجھے ہی نہیں پوری قوم کو بے حد متاثر کیا۔ یہ بات درست ہے کہ عمران خان نے جو کچھ کہا اس پر عمل کرنا آسان نہیں ہوگا مگر عمران خان نے جو خواب دکھایا یے اس خواب کو مکمل کرنے میں پوری قوم کو عمران خان کا ساتھ دینا ہوگا۔
وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب میں ان مسائل پر گفتگو کی جس پر سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کے بعد کسی وزیراعظم نے بات کرنا بھی گوارا نہیں کیا۔ عوامی وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کے بعد آج تک جتنے بھی وزرائے اعظم آئے ان میں سے کوئی بھی وزیراعظم عوامی وزیراعظم ہونے کا اعزاز حاصل نا کرسکا مگر میں یہ کہنے میں کوئی عار نہیں سمجھتا کہ عمران خان پاکستان کی سیاسی و جمہوری تاریخ کے مقبول ترین وزیراعظم ثابت ہوں گے کیونکہ ان کا انداز بھی ذوالفقار علی بھٹو کی طرح عوامی انداز ہے۔ عمران خان کی ایک خوبی یہ بھی ہے کہ وہ ایک سادگی پسند انسان ہیں اور وہ بطور وزیراعظم بھی سادہ زندگی گزارنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔ عمران خان نے ملک کے معاشی حالات میں بہتری اور سرکاری اخراجات میں کمی کے علاوہ ٹیکس اور تعلیم کے نظام کو ٹھیک کرنے کا عندیہ دیا ہے جو خوش آئند ہے۔
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ وہ تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات بہتر کریں گے کیونکہ پاکستان کو امن کی ضرورت ہے۔ میں عمران خان سے متفق ہوں اور اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ جب ہمارے ہمسایہ ممالک میں امن ہوگا تو ہمارے ملک میں بھی امن ہوگا۔ خطے میں امن و امان برقرار رکھنے کے لئے وزیراعظم عمران خان کو انڈیا سے تعلقات بہتر کرنے کے لئے کوششیں کرنی چاہیے اور دوسری انڈیا کی حکومت کو بھی برابری کی بنیاد پر پاکستان سے بات چیت کے لئے سنجیدہ کوششیں کرنی ہوں گی۔ اگر دونوں ممالک کے درمیان تعلقات بہتر ہوگئے تو کشمیر سمیت دیگر مسائل کے حل کے لیے بات چیت کے دروازے کھل سکتے ہیں۔ چائنہ کے ساتھ پاکستان کے تعلقات تاریخی ہیں مگر ایران کے ساتھ مضبوط تعلقات بھی وقت کی ضرورت ہے، اگر پاک ایران تعلقات مزید مظبوط ہوئے تو ہم ایران سے سستا ترین تیل خرید سکتے ہیں جس کا براہ راست فائدہ پاکستانی عوام کو ہوگا اور جب تیل سستا ہوگا تو مہنگائی بھی کم ہوگی۔
پی آئی اے، ریلویز، سٹیل ملز سمیت تمام اہم قومی اداروں کو کھڑا کرنے کی ضرورت ہے۔ قومی اداروں کی نجکاری سے ملک کا نقصان ہوتا ہے اس لئے اداروں کی نجکاری کے بجائے ان کے لیے فنڈ مہیا کیے جائیں اور خود مختار مینجمنٹ دی جائے تاکہ اداروں کی کارکردگی بہتر ہوسکے۔ امید ہے عمران خان قوم کی توقعات پر پورا اتریں گے۔ قوم سے پہلے خطاب کے بعد وزیراعظم عمران خان سے عوام کی توقعات میں اضافہ ہوا ہے۔ بحیثیت قوم ہماری بھی کچھ ذمہ داریاں ہیں۔ پاکستان کے ہر شہری کو اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرنا ہوگا اور اپنی سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر کرپشن اور دہشتگردی جیسے ناسور کے خاتمے اور ملک کو درپیش تمام چیلنجز سے نمٹنے کے لئے پاکستان کے نئے وزیراعظم عمران خان کا بھرپور ساتھ دینا ہوگا کیونکہ اب وقت آگیا ہے کہ پوری قوم سیاسی اختلافات کو بھلا کر یکجہتی کا ثبوت پیش کرے تاکہ پاکستان ایک فلاحی ریاست بن سکے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube