Thursday, January 20, 2022  | 16 Jamadilakhir, 1443

شہرآشوب میں

SAMAA | - Posted: Aug 7, 2018 | Last Updated: 3 years ago
Posted: Aug 7, 2018 | Last Updated: 3 years ago

عجیب کیفیت ہے،عجیب صورتحال بلکہ یوں کہیں کہ وبال ہے۔اکثریت مل گئی، عوام کی محبت مل گئی، اقتدار اور اختیار بھی مل جائے گا۔ مگرایک عجیب مخمصہ ہے کہ ہارنے والے پریشان ہیں تو جیتنے والے بھی حیران۔ عمرانی محبت میں گرفتار یہ تکرار کررہےہیں کہ نمبرز گیم پوری ہوگئی ہے اور دو صوبوں سمیت مرکزمیں مضبوط حکومت بنائیں گے، صورتحال سے بیزار مگرللکاررہےہیں کہ دیکھتے ہیں کہ یہ حکومت چلتی کیسے ہے؟

ایک معمہ ہے سمجھنے کا نہ سمجھانے کا۔ میلہ لگا ہےجوجو کسی کے ہاتھ لگ رہا ہے سمیٹا جارہا ہے۔ آزاد پنچھیوں کا جھکاؤ بنی گالہ کی جانب ہےتو دوسری جانب بیوپاری بھی اسی خواری میں لگے ہیں کہ بے شک دام زیادہ ہوں بس مال اچھا ہونا چاہیئے۔ اسی میں کوئی دو رائے نہیں کہ اگلے کچھ دنوں تک پی ٹی آئی کی حکومت بن جائے گی۔ جی ڈی اے اور ایم کیو ایم گوکہ وکٹ کی دونوں جانب کھیل رہی ہے۔ لیکن دونوں جماعتوں نے وزن کپتان کے پلڑے میں ڈال دیا ہے۔

ایم کیو ایم کی سیاست بڑی منفرد رہی ہے۔ جمہوری دور ہو یا آمریت متحدہ کی اہمیت ہر دور میں اہم رہی ہے۔ پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد کے ریشمی بندھن میں بندھنابھی کچھ لو اور کچھ دو کے فارمولے کے تحت ہوا ہے۔ ویسے تو سنا ہے کہ خوشی کے موقع پر عہد و پیمان نہیں کرنے چاہئیں ایسا نہ ہو کہ بعد میں پچھتانا پڑے۔ لیکن وعدے وعید ہوئے ، راز و نیاز کا سلسلہ چلا،چلیں دیکھتے ہیں متحدہ سے کئے گئے وعدے ، جن پر عمل کرنا پی ٹی آئی کے لیے اگر ناممکن نہیں تو مشکل ضرور ہے، کہاں تک نبھائے جاسکتے ہیں۔

موجودہ صورتحال اور کسی کے لیے کارگر ہو نہ ہو، ق لیگ کے لیے ضرور راس ہے۔ چوہدری برادران کو ایک بار پھر سیاسی افق پرجلوہ افروزی کا موقع ملا ہے۔ جہانگیر ترین اپنے قائد کو وزارت عظمیٰ پربٹھانے اور تخت لاہور دلانے کے لیے جادوئی کمالات دکھا رہےہیں۔ چوں چوں کا مربہ ہی سہی ، کپتان کو سرکار بنانے میں کوئی مشکل پیش نہیں آئے گی۔

اس کے باوجود ایک موہوم سی پریشانی جس نے عمران خان کو الجھن میں ڈال دیا ہے وہ ہے مرکزاورپنجاب میں تگڑی اپوزیشن کا سامنا۔ ن لیگ، پیپلزپارٹی، ایم ایم اے اور اے این پی سمیت حزب اختلاف کی تمام جماعتوں نے کپتان کو کلین بولڈ کرنے کے لیے ابھی سے وارم اپ شروع کردیا ہے۔

مولانا صاحب نے اگرچہ حلف لینے کا بائیکاٹ کررکھا تھا مگر شہباز شریف اور آصف زرداری منجھے سیاست دان ہیں جن کا ماننا ہے کہ حریف کو پچھاڑنا ہی ہے تو وار آئینی تلوار سے کرنے چاہئیں۔ آرٹی ایس سسٹم میں خرابی، الیکشن نتائج میں تاخیر، انتخابات میں شکست و ریخت، فارم 45 کا معمہ، کچھ سیاسی پہلوانوں کو دنگل سے باہر کرنے کا بکھیڑا، کرپشن کے الزامات، نیب اور ایف آئی اے کے اقدامات، یہ ہیں وہ معاملات جنہوں نے گرینڈ اپوزیشن کوایک مرکز پر اکٹھاکردیا ہے۔

نئی سرکار کو ٹف ٹائم دینے کے لیے اپوزیشن میدان میں ہے، وارکب کرنا ہے؟ چال کب چلانی ہے؟ تحریک انصاف کے گرد گھیرا کب اور کیسے تنگ کرنا ہے؟ یہ سب کچھ طے پا گیا ہے۔ کیا عمران خان اور ان کی ٹیم اس کے لیے تیار ہے؟

جب سے انتخابات کے نتائج کا اعلان ہوا ہے پی ٹی آئی متحد ہونے کے بجائے منتشرنظرآرہی ہے۔ کے پی میں واضح اکثریت ملنے کے باوجود حکومت سازی کے معاملے میں لیت و لعل نے مبصرین کو سوچنے پر مجبور کردیا ہے۔ وزارت اعلی کی بڑی کرسی کے لیے رسہ کشی جاری ہے۔ پرویز خٹک نے گزشتہ دنوں دیگر ایم پی ایز کے ساتھ خاموش پاور شوکیا جس کا مقصد وزارت اعلیِ کے لیے قیادت پر پریشر ڈالنا تھا، اسد قیصر اور عاطف خان بھی اسی لائن میں کھڑے ہیں۔ کھینچا تانی نے زور پکڑا تو بیچ کا راستہ نکالنے کے لیے محمود خان کا نام بھی لسٹ میں ڈالا گیا۔

کچھ ایسی ہی صورتحال پنجاب میں بھی نظرآرہی ہے۔ جہاں تخت لاہور کے لیے پارٹی کے دو بڑے جہانگیر ترین اور شاہ محمود قریشی آمنے سامنے ہیں۔ ایسے میں عمران خان کے لیے یہ فیصلہ کرنا کڑے امتحان سے کم نہیں۔ اس کے علاوہ مرکز میں بھی مختلف وزارتوں پر پسند اور ناپسند کا اظہار کیا جارہا ہے۔ پارٹی کے ایک نظریاتی کارکن کے مطابق قربانی انہوں نے دی لیکن پھل کسی اورکو دیا جارہا ہے۔

اپوزیشن سے دو دو ہاتھ کرنے کے دعوے اپنی جگہ لیکن کپتان کو اپنے گھر پر بھی نظررکھنا ہوگی۔ فارورڈ بلاک کی باتیں کرنے والے کہیں خود فارورڈ نہ ہوجائےکیونکہ مولا نوں مولا نہ مارے تے مولا نئیں مردا۔

معیشت کی ڈولتی کشتی کو منجدھار سے نکالنا، اندرونی و بیرونی چیلنجز سے نمٹنا، ہمسایہ ممالک سے تعلقات میں استحکام، دہشت گردی کے خلاف جنگ، بہترین قانون سازی کے دعوے، اصلاحات کی جانب قدم اور بدلتی صورتحال کے ساتھ امریکہ کے بدلتے رنگ، کیا شہر آشوب کے باسی نرگسیت کے التباس سے نکل کر حقائق کا ادراک کرسکیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube