Saturday, January 22, 2022  | 18 Jamadilakhir, 1443

شیخ رشید اور نااہلی کی تلوار

SAMAA | - Posted: Mar 27, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Mar 27, 2018 | Last Updated: 4 years ago

پانامہ لیکس کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی نااہلی اور پھر الیکشن کمیشن سے اثاثوں کی تفصیلات چھپانے پر سیکریٹری جنرل پاکستان تحریک انصاف جہانگیر خان ترین کے بعد نااہلی کی تلوار اب سربراہ عوامی مسلم لیگ شیخ رشید کی گردن پر لٹک رہی ہے۔لیکن سوال یہ ہے کہ کیا سپریم کورٹ شیخ رشید کو بھی نااہل قرار دیدے گی؟۔جہانگیر ترین کو نااہل اور عمران خان کو صادق اور امین قرار دینے کی وجہ سابق وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دینے کے فیصلے کو برابر کرنا تھا۔ لیکن شیخ رشید کو نااہل کرنے کی وجہ کیا ہوگی؟۔

عمران خان اور جہانگیر ترین کو نااہل قرار دینے کی درخواست رہنما نواز لیگ حنیف عباسی نے دی تھی۔ جنہیں عمران خان نے 2013 کے انتخابات میں راولپنڈی کے حلقہ این اے 56 سے ہرایا تھا۔شیخ رشید کو نااہل قرار دینے کی درخواست نواز لیگ کے ہی رہنما شکیل اعوان کی طرف سے سپریم کورٹ میں دائر کی گئی۔ جنھیں شیخ رشید نے 2013 میں راولپنڈی کے حلقہ این اے 55 سے شکست دی تھی۔

نواز لیگ کے دونوں رہنماؤں کی طرف سے سپریم کورٹ میں دائر کردہ درخواستوں کو دیکھ کر لگتا ہے کہ نواز لیگ کے شکست خوردہ دونوں رہنما 2013 کے انتخابات میں شکست کا بدلہ لینے کے لئے اپن اپنے حریفوں کی نااہلی چاہتے ہیں۔ جس میں حنیف عباسی کو کسی حد تک تو کامیابی نصیب ہوئی لیکن عمران خان نااہلی سے بچتے ہوئے صادق اور امین قرار پائے۔

نواز لیگ کے شکیل اعوان کی طرف سے شیخ رشید کے خلاف ایسے وقت میں درخواست دائر کی گئی ہے۔ جب موجودہ اسمبلیاں اپنی مدت مکمل کرنے والی ہیں اور ایسے وقت میں اس درخواست کا مقصد یقینی طور پر شیخ رشید کو اس سال ہونے والے عام انتخابات کے لئے نااہل کروانا ہے۔ جس کے لئے سابق وزیراعظم پہلے ہی نااہل ہوچکے ہیں۔

نواز لیگ کے شکیل اعوان کی درخواست پر شیخ رشید کی نااہلی یقینی طور پر شیخ رشید کے علاوہ تحریک انصاف کے خلاف بھی نواز لیگ کی فتح ہوگی۔ کیونکہ شیخ رشید تحریک انصاف کی سپورٹ کے بغیر اپنے آبائی حلقے این اے 55 سے جیت نہیں سکتے اوراس کا ثبوت 2008 کے انتخابات میں نواز لیگ کی ٹکٹ پر مخدوم جاوید ہاشمی کے ہاتھوں شیخ رشید کی شکست اور پھر جاوید ہاشمی کی تحریک انصاف میں شمولیت کی وجہ سے خالی ہونے والی نشست پر ہونے والے ضمنی انتخابات میں نواز لیگ کے امیدوار شکیل اعوان کے ہاتھوں شیخ رشید کی دوبارہ شکست ہے۔

اس کے علاوہ اگر سربراہ عوامی مسلم لیگ کو 2013 کے انتخابات میں تحریک انصاف کی سپورٹ حاصل نا ہوتی تو شیخ رشید تقریباً 13 ہزار ووٹوں کے فرق سے نواز لیگ کے شکیل اعوان کو شکست نہ دے پاتے۔سپریم کورٹ کی طرف سے شکیل اعوان کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا گیا ہے۔ جبکہ نیب میں زیر سماعت شریف خاندان کے خلاف ریفرنسزکی مدّت میں بھی سپریم کورٹ کی طرف سے دو ماہ کا اضافہ کردیا گیا ہے۔اس طرح سے دیکھا جائے تو مئی میں نواز حکومت کے مکمل ہونے تک سابق وزیراعظم نواز شریف اور جہانگیر ترین کے علاوہ شیخ رشید سمیت مریم نواز بھی نااہل ہوسکتی ہیں۔

سپریم کورٹ کے معزز ججز اور شیخ رشید کے غلط اثاثوں سے متعلق اعترافی بیان ظاہر کرتے ہیں کہ عمران خان کی خاطر پارلیمنٹ پر لعنت بھیج کر مستعفی ہونے والے شیخ رشید اگلے انتخابات میں جہانگیر ترین کے ساتھ تحریک انصاف کی جیت پر یا تو لڈیاں ڈالیں گے یا پھر تعزیتی جلسوں، احتجاجی ریلیوں اور دھاندلی کے خلاف دھرنوں میں پی ٹی آئی کے ورکرز کا ڈانس دیکھیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube