Friday, January 22, 2021  | 7 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > بلاگز

سگریٹ نوشی، صرف نقصانات

SAMAA | - Posted: Jan 22, 2018 | Last Updated: 3 years ago
Posted: Jan 22, 2018 | Last Updated: 3 years ago

  

۔۔۔۔۔**  تحریر : احمد کاشف سعید  **۔۔۔۔۔

آپ جانتے بوجھتے گہری کھائی میں گرنا چاہیں گے، ہر گز نہیں، لیکن جناب ایسا ہو رہا ہے، چند لمحوں کا سکون اور بدلے میں کئی بیماریاں، سگریٹ نوش ایسا ہی کر رہے ہیں۔

گریباں چاک، دھواں، جام، ہاتھ میں سگریٹ

شب فراق، عجب حال میں پڑا ہوا ہوں

سگریٹ ہے چھوٹی سی چیز مگر اس میں آپ کیلئے نقصانات ہی نقصانات ہیں، کوئی ایک ہو تو بتائیں، ہارٹ اٹیک اور اسٹروک ہیمرج کے خطرات بڑھ جاتے ہیں،  پھیپھڑے بھی سلامت نہیں رہتے، سگریٹ نوش خواتین بریسٹ کینسر کا زیادہ شکار ہوتی ہیں، یہی نہیں سگریٹ اور تمباکو نوشی منہ، گلا، خوراک کی نالی کے کینسر، معدہ، جگر، مثانہ، لبلبہ اور گردے کے کینسر کا باعث بنتی ہے۔

سگریٹ نوش اپنا تو نقصان کرتے ہی ہیں، ان کی وجہ سے دوسروں کی صحت کو بھی نقصان پہنچتا ہے، سالانہ ایک ارب سے زائد افراد سگریٹ نوشی کرتے ہیں، ان میں سے 70 لاکھ افراد سگریٹ گردی کا شکار ہوتے ہیں، 9 لاکھ افراد وہ بھی شامل ہیں جو خود سگریٹ نوشی نہیں کرتے مگر دوسروں کے کئے کا خمیازہ بھگتتے ہیں۔

دھواں سگرٹ کا بوتل کا نشہ سب دشمن جاں ہیں

کوئی کہتا ہے اپنے ہاتھ سے یہ تلخیاں رکھ دو

حکومت نے تمباکو نوشی کے خاتمے کیلئے کئی اقدامات کئے، اس کے نقصانات بتائے، ڈبی پر ہیبت ناک تصویر سے ڈرایا، سگریٹ پر ٹیکس بھی لگائے لیکن سگریٹ نوشوں پر اثر ہونا تھا نہ ہوا۔ اتنے نقصانات تو ہوشمند انسان اس بھنور میں پھنستا کیوں ہے؟، ویسٹ لندن کی مشہور یونیورسٹی کے پروفیسر رابرٹ نے بتا دیا، کہتے ہیں تمباکو اصل میں ایک کیمیکل ہوتا ہے جس کا نام ہے نکوٹین، جب آپ سگریٹ کا دھواں اپنے اندر کھینچتے ہیں تو آپ کے پھیپھڑوں کی تہیں اس دھوئیں سے نکوٹین لینا شروع کر دیتی ہیں، چند سیکنڈ کے اندر اندر یہ نکوٹین آپ کے دماغ کے اعصاب تک پہنچ جاتی ہے، اس کے اثر سے ہمارا دماغ ڈوپامائن نام کا ہارمون خارج کرتا ہے جس سے ہمیں بہت اچھا احساس ہوتا ہے، ڈوپامین دماغ میں خارج ہونیولا ایک ایسا کیمیائی مرکب ہے جو خوشی اور انعام حاصل کرنے کی خواہش پیدا کرتا ہے۔

نکوٹین کی اسی طاقت کا فائدہ سگریٹ بنانے والی كمپنياں اٹھاتی ہیں اور اس سے ہونیوالے نقصان کی حقیقت بھی چھپاتی ہیں، 1990ء کی دہائی میں ایک نیا انکشاف کرکے بایو کیمسٹ ڈاکٹر جیفری نے امریکا اور یورپ میں ہنگامہ برپا کر دیا، سگریٹ کمپنی میں رہتے ہوئے ڈاکٹر جیفری کو یہ راز پتہ چلا کہ نکوٹین کا اثر بڑھانے کیلئے ان کی کمپنی اپنی سگریٹ میں امونیا اور كومارن جیسے انتہائی خطرناک کیمیائی اجزاء ملاتی ہے، اس معاملے پر مسلسل آواز اٹھانے پر ڈاکٹر جیفری کو نوکری سے نکال دیا گیا۔

ڈاکٹر جیفری خاموش ہی رہتے لیکن ایک دن انہوں نے دیکھا کہ امریکا کی 7 بڑی سگریٹ کمپنیوں کے حکام نے امریکی پارلیمنٹ میں پیش ہوکر کہا کہ سگریٹ سے کوئی نقصان نہیں ہوتا، اس پر ڈاکٹر جیفری نے سگریٹ کمپنیوں کی سازش کا پردہ فاش کر دیا، جس کے بعد سگریٹ کمپنیوں نے تسلیم کیا کہ تمباکو صحت کیلئے نقصاندہ ہے اور اس سے جان کو خطرہ ہوسکتا ہے۔

اس کے بعد ہی امریكا میں سگریٹ کمپنیوں کو ہدایت دے دی گئی کہ وہ پیکٹ پر قانونی انتباہ جاری کریں، یہی نہیں ان پر بھاری ٹیکس بھی عائد کیا گیا، ڈاکٹر جیفری کے سنسنی خیز انکشافات کے حوالے سے ہالی ووڈ میں فلم بھی بنی تھی، جس کا نام تھا ’’دی انسائیڈر‘‘ یہ تو ہوگئیں سنجیدہ باتیں لیکن مارکیٹ میں کئی ایس ایم ایس بھی ان ہیں۔

سگریٹ ایک لعنت ہے، جو ہمارے نوجوانوں کو تباہ کر رہی ہے، اؔٓؤ مل کر اس لعنت کو ختم کریں، ایک پیکٹ تم ختم کرو، ایک پیکٹ ہم ختم کرتے ہیں۔

ایک سگریٹ نوش کا خیال بھی سن لیجئے ’’میں ہمیشہ سگریٹ سے چھٹکارے کا سوچتا ہوں لیکن اس کیلئے بھی مجھے ایک سگریٹ چاہئے۔‘‘

اس عادت سے جان چھڑٓانے کا ایک نسخہ یہ بھی ہے کہ ہمیشہ جیب میں گیلی ماچس رکھیں۔ یوں بھی تو کہا جاتا ہے۔

اب ماحصل حیات کا بس یہ ہے اے سلامؔ

سگریٹ جلائی شعر کہے شادماں ہوئے

جاپان کی ایک کمپنی کے وہ ملازمین جو سگریٹ نوشی نہیں کرتے انہیں سالانہ 6 اضافی چھٹیاں ملتی ہیں، سگریٹ نوشی سے پرہیز کا عالمی دن 31 مئی کو منایا جاتا ہے۔

سگریٹ کے چند کش، دھواں دھواں ہوئی زندگی

تھوڑی سی تسکین کیلئے کم کردی اپنی زندگی

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube