چائے والے سن ! میرا پاکستان تنہا نہیں ہے

By: Syed Amjad Hussain Bukhari
May 17, 2017

518254-443436-india-pak

چین میں ہونے والی بین الاقوامی فورم میں 29ممالک کے سربراہان ،100 سے زائد ممالک کے نمائندے شریک ہیں۔ ایک تاریخی گہما گہمی کا منظر ہے، اس خطے کا نام نہاد چوہدری ہندوستان بھی اس عظیم فورم میں مدعو تھا ، لیکن مودی سرکار کی روایتی ہٹ دھرمی اور پاکستان سے نفرت نے اسے اس فورم کے بائیکاٹ کا مشورہ دیا، وزیر اعظم پاکستان اور چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ قومی یکجہتی کی عملی تصویر پیش کرتے ہوئے اس فورم میں شریک ہیں، ہندوستان کے پاکستان کو صوبائیت اور لسانیت کی جھگڑوں میں ڈالنے کے خوابوں کو چکنا چور کرتے ہوئے قومی قائدین پیار ومحبت کی لڑی میں پروئے ہوئے پوری دنیا کے قائدین سے ملاقاتیں کر رہے ہیں ، معاہدے ہو رہے ہیں، مفاہمت کی یاداشتوں پر دستخط جاری ہیں ، سیاسی مخالفین پاکستان کی وسیع تر مفاد میں سیاسی بالادستیوں سے بڑھ کر قومی یک جہتی کا عظیم نمونہ پیش کر رہے ہیں، ہندوستان جو پاکستان کو تنہا کرنے کا خواب دل میں لئے ہوئے تھا، خود ہی سفارتی محاذ پر تنہا ہوکر اپنی ڈیڑھ اینٹ کی مسجد میں مقید ہو کر رہ گیا ہے ۔

ہندو بنیا! پاکستان کی دشمنی میں اس قدر گر گیا ہے کہ وہ اپنی قوم کے مفاد کو بھی دائو پر لگا چکا ہے، نریندرمودی پاکستان سے نفرت میں اسے سفارتی محاذ پر تنہا کرنے کے لئے بین الاقوامی سطح پر تنہا کرنا چا رہے تھے لیکن سیاسی قیادت کی دور اندیشی اور بصیرت کی وجہ سے مودی کا یہ خواب شرمندہ تعبیر نہ ہوسکا، پاکستان سے نفرت کو وہ اپنی خود مختاری سے تعبیر کر رہے ہیں، ارے لالا جی! یہ کیسی خود مختاری ہے جب پوری دنیا ایک نئے دور میں داخل ہورہی ہے، قومیں ترقی کی نئی منزلیں تلاش کر رہی ہیں، سربراہان حکومت سیاسی اور سفارتی سطح پر نئے راستے تلاش کر رہے ہیں ایسے دور میں آپ کی روایتی ہٹ دھرمی آپ کو تاریک راہوں کی جانب دھکیل رہی ہے، سفارتی سطح پر آپ ایسی تنہائی کی جانب جا رہے ہیں جس کا خمیازہ آپ کے دیس کی آئندہ آنے والی نسلیں بھگتیں گی اور یقین جانیں یہ نسلیں اور تاریخ آپ کو کبھی معاف نہیں کرے گا، یاد رکھیں پاکستان کی ترقی ، پاکستان کی خوشحالی ، پاکستان کی قومی یکجہتی کا فائدہ پاکستانیوں کو ہی نہیں ہوگا بلکہ اس کے ثمرات اس خطے کے عوام تک منتقل ہوں گے۔

modi

مودی جی ! آپ توسیاست سے پہلے چائے کا کاروبار کرتے تھے ، آپ چائے والے کی خیالات اور سوچ سے ابھی بھی خود کو نہیں نکال سکے ہیں۔آپ کے اور ایک چائے والے کے خیالات میں بھی مماثلت نہیں ہے،وہ بھی گوالے سے دشمنی نہیں رکھتا وہ بھی ایسے ذرائع کا متلاشی رہتا ہے جس سے اس کا چائے کا ڈھیلا ترقی کرے لیکن آپ تو محض پاکستان کی نفرت میں ، پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کرنے کے درپے تھے، آپ کے پڑوسی تمام ممالک، عالمی طاقتیں ، ترقی یافتہ اور ترقی پذیر ممالک سبھی اس منصوبے میں شامل ہیں سب قومیں ایک سڑک کے ذریعے ایک دوسرے سے مل کر ترقی کے اوج کمال پر پہنچیں گی ، مگر کیا آپ اپنی قوم کو پتھر کے دو رمیں دھکیلنے سے باز نہیں آئیں گے؟ کیا آپ کے شہریوں کا حق نہیں کہ وہ صاف پانی اور بیت الخلاء کی سہولتیں حاصل کر سکی؟ کیا انہیں دنیا میں شان سے جینے کا حق نہیں ہے؟ پاکستان سے نفرت اگر آپ کی گھٹی میں سما چکی ہے تو اس نفرت کی آگ میں اپنے عوام کو تو نہ جھونکیں۔

چائے والے! کان کھول کر سن لے میرا پاکستان تنہا نہیں ہے، میرے پاکستان کا وزیر اعظم اور وزرائے اعلیٰ اپنی قوم کی خاطر عالمی رہنمائوں سے ملاقاتیں بھی کر رہے ہیں اور اس قوم کی ترقی کے لئے دنیا بھر کے سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے لئے راضی بھی کر رہے ہیں ، میرا پاکستان ترقی کے ایک نئے دور میں داخل ہو گیا ہے جہاں اس کے شہریوں کے لئے روشنیاں ہی روشنیاں ہیں ، خطے کے چوہدری بننے کا تمھارا خواب چکنا چور ہو گیا ہے لیکن یاد رکھو! سارے چوہدری مر بھی جائیں ناں تو چائے والے تم کبھی چوہدری نہیں بن سکتے۔

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
 

ضرور دیکھئے


 بجلی سے چلنے والی بسیں
بجلی سے چلنے والی بسیں

September 19, 2017 1:50 pm

 میرے دل میرے مسافر
میرے دل میرے مسافر

September 19, 2017 10:06 am

 این اے 120 کا معرکہ
این اے 120 کا معرکہ

September 19, 2017 9:51 am

 قومی فارمولا مٹی پاؤ
قومی فارمولا مٹی پاؤ

September 17, 2017 12:03 am