Friday, January 28, 2022  | 24 Jamadilakhir, 1443

ترقی کی تین اقدار

SAMAA | - Posted: May 12, 2017 | Last Updated: 5 years ago
Posted: May 12, 2017 | Last Updated: 5 years ago

japana

ہیروشیما اور ناگا ساکی پر امریکہ کے ایٹمی حملہ کے باعث 1945 کا سال جا پان کیلئے نہایت بھیانک ثابت ہوا، جس سے  جاپان پوری طرح تباہ ہوگیا، عمارتیں زمین بوس ہوگئیں،فصلیں تباہ ہوگئیں، ایک محتاط اندازے کے مطابق 1,29,000 لوگ جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ یعنی ہر طرف تباہی کا ساماں تھا۔ آغاز سے ہی جاپان میں قدرتی وسائل کافقدان رہا ہے۔ جاپان کے پاس کوئی بڑا دریا  نہیں ہے اور نہ ہی لوہا  ،با کسائیٹ، کوئلہ،ہیرے، چاندی، سلور ۔نیچرلی طور پر جاپان کے پاس کچھ نہیں ہے لیکن جاپان کے لوگوں کی نیچر میں کچھ ایسا ہے جس کی بدولت آج  آپ کو ہر گھر میں کچھ نہ کچھ میڈ ان جاپان ضرور ملے گا۔

ja[pan

جاپان کی ترقی تعلیم، وقت کی پابندی اور اخلاقیات  جیسی تین اقدار کی مرہونِ منت ہے جس کی بدولت جاپان نے ترقی کی منازل اتنے قلیل عرصے میں طے کرلیں۔

jaannn

اگر تعلیم کی بات کی جائےتوایک محتاط اندازے کے مطابق جاپان کی شرح خواندگی تقریبا 100 فیصد ہے ۔علم دوستی کی صورتحال یہ ہے کہ ‘کامی شراتاکی’ گاؤں کی سولہ سالہ  واحد لڑکی جو گاؤں سےٹرین کے ذریعے 56 کلومیڑ دور شہر آکرتعلیم حاصل کرتی تھی 2012 میں سواریاں نہ ہونے کیوجہ سے ٹرین اور روٹ جب بند کرنے کا فیصلہ کیا  گیا تو انہیں اس لڑکی کا خیال آیا جو روزانہ ہوکائیڈو کے ہائی سکول جاتی ہے۔جب ریلوے کو یہ معلوم ہوا کہ یہ ٹرین لڑکی کی پڑھائی کا واحد سہارا ہے تو انہوں نے روٹ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا 2012 سے ایک ٹرین صبح اس لڑکی کو کالج لیجانے کیلئے ‘کامی شراتاکی’ آتی  اور دوسری شام کے وقت اسے واپس چھوڑنے آتی ۔26 مارچ 2016 کو اس لڑکی کی تعلیم مکمل ہوگئی اور جاپان ریلوے نے یہ ٹرین اور روٹ بند کر دیا یہ طالبہ ان دونوں ٹرینوں کی واحد مسافر تھی اس لڑکی کی وجہ سے جاپانی ریلوے ہزاروں ڈالر کا نقصان اٹھاتی رہی ۔لیکن انھوں نے اس کی تعلیم کا حرج نہ ہونے دیا۔

ja[annnaa

جاپان کی از سرِ نو تعمیر کیلئےجاپان حکومت نے وقت کی پابندی کو سرِفہرست رکھا۔پابندی وقت کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے ہوتا ہے کہ جاپان میں ٹرین لیٹ نہیں ہوتی اگر کبھی ہو بھی جائے تو کندکٹر خود ہر مسافر کے پاس جاکر اس سے معافی مانگتا ہے اور اگر 5 منٹ تک لیٹ ہوجائےتو ہر مسافر کو تحریر میں لیٹ ہونے کا ثبوت دیا جاتا ہےتاکہ انہیں آگے جاکر لیٹ ہونے کی وجہ سے شرمندہ نہ ہونا پڑے۔

japan_real_size_gundam

اخلاقیات کا عالم یہ ہے کہ تیسری جماعت تک بچوں کو اخلاقیات کا مضمون اسکول میں پڑھایا جاتا ہے۔ ٹوکیو دنیا میں سب سے زیادہ ایماندار لوگوں کا شہر  ہے۔3 کڑوڑ 80 لاکھ آبادی والے شہر میں چوری،ڈکیتی کا کوئی امکان نہیں کیا جاسکتا، حتی کہ نقد رقم لیکر گھومنا بھی  کوئی سیکیورٹی رسک نہیں ہے۔ رقم گم ہونے پر بھی باآسانی نشانی بتانے پر واپس مل جاتی ہے۔ نقد رقم کے ذریعے ٹرانزیکشن کی جاتی ہیں۔ مہنگائی میں دن بدن کمی آرہی ہے۔ اگر کوئی شخص گم شدہ رقم پولیس کے حوالے واپس کرتا ہے تو مالک کے ملنے پر 5 سے 20 ٪  اسی رقم  میں سے بطور انعام اس شخص کو دلوایا جاتا ہے اور اگر 3 ماہ تک کوئی والی وارث سامنے نہ آئے تو رقم اسی شخص کی ہوجاتی ہے۔

Streetlife-in-Shinjuku-Export-to-Japan

جاپان کی بہت جلد ترقی کا اباعث  یہی تین اقدار نظرآتی ہیں۔جاپان کے ساتھ حادثہ پاکستان کی آزادی سے 2 سال پہلے پیش آیا لیکن اگر آج ہم موازنہ کریں تو تقریبا ایک جتنی مدت ،جا پان سے کئی گنا بہتر وسائل کے باوجود پاکستان جاپان سے بہت پیچھے نظر اتا ہے۔جس کی بہت سی وجوہات مین سے سرِ فہرست انہی 3 اقدارکا فقدان ہے۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube