Saturday, January 22, 2022  | 18 Jamadilakhir, 1443

زندگی امانت ہے

SAMAA | - Posted: May 11, 2017 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: May 11, 2017 | Last Updated: 5 years ago

suicide1

بارہ سالہ دانیال اپنی ماں کے انتقال کے بعد سے بہت پریشان تھا اور خود کو بہت تنہا محسوس کرتا تھا۔ اسکے والد معمول کی جاب کےعلاوہ پارٹ ٹائم کام بھی کرتے تھے اور بیوی کے انتقال کے بعد سے وہ بھی کافی حد تک چڑچڑے ہو گئے تھے اور بچوں کو صحیح ٹائم نہیں دے پا رے تھے۔اس سال اسکول میں بھی دانیال کا خاطر خواہ نتیجہ نہیں آیا تھا جس کی وجہ سے وہ مزید مایوسی کا شکار ہو گیا اور ان سارے حالات سے جان چھڑانے کا ایک ہی طریقہ ہاتھ آیا کہ اپنے آپ کو ختم کر لیا جائے۔یہ سوچتے ہوئے اس نے اپنے والد کی بندوق نکال کر خود کو فائر کیا۔خوش قسمتی سے وقت پر اسپتال پہنچا دیا گیا اور جان بچ گئی۔

خودکشی کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ محبت میں ناکامی، غربت ،بدنامی کا ڈر یااحساسِ کمتری یا کسی بھی وجہ سے نفسیاتی طورپرخوف طاری ہو جانا۔ بد ترین ذاتی نتائج سے چھٹکارہ حاصل کرنےکے لئے اور ان کا سامنا نہ کرنے کی وجہ سے کمزور دل لوگ یہ انتہائی بھیانک قدم اٹھاتے ہیں۔ خودکشی کرنے والا سوچتا ہے کہ ایسا کرنے سے شاید وہ مزید تکلیف سے بچ جائے گا یا پھر اس میں حالات کا سامنا کرنے کی ہمت نہیں رہتی۔

rafi khawar

عام افراد کے علاوہ مشہورسیلیبریٹیز بھی اس بھیانک عمل کو اپنا کر اپنی جان کا خاتمہ کرچکے ہیں۔ ماضی قریب میں مشہور پاکستانی کامیڈین رفیع خاورعرف ننھا نے اپنے آپ کو بندوق سے گولی مارکر ہلاک کرلیا۔ بھارتی اداکاروں کی بات کریں تو دیویا بھارتی جنہوں نے بالکونی سے کود کر اس وقت اپنی زندگی کا خاتمہ کیا جب کہ وہ اپنے کیرئیر کے عروج پہ تھیں اور صرف انیس سال کی تھیں۔ اسی طرح جیا خان جن کو اپنے کیرئر کے آغاز میں ہی شہرت مل گئی اور وہ امیتابھ اور عامر خان جیسے سپر اسٹارز کے ساتھ جلوہ گر ہوئیں، انھوں نے بوائے فرینڈ کی بیوفائی سے دلبرداشتہ ہو کرچھت سے لٹک کر اپنی زندگی کا خاتمہ کیا۔ پروین بوبی جنہوں نے فلم انڈسٹری میں خوب نام کمایا ، جوانی ختم ہونے کے ساتھ ہی خود کو بھی ختم کر لیا۔ جبکہ انڈین ایکسپریس کے مطابق مشہور بالی وڈ اداکارہ پریانکا چوپڑہ دو سے زائد مرتبہ خودکشی کی کوشش کر چکی ہیں۔

suicide

اس کے علاوہ پاکستانی سیاستدان عمر اصغر خان نے اپنے سپوٹرز کی جانب سے دلبرداشتہ ہوکر2002 میں چھت سے لٹک کر خودکشی کی۔ حال ہی میں مشہور بزنس مین اور منی چینجر خانانی اینڈ کالیا کے مالک جاوید خانانی نے زیرِ تعمیر عمارت سے چھلانگ لگا کر خودکشی کی۔ ان پہ منی اسکینڈلز کے الزامات ثابت ہوئے تھے۔

omer asghar

اپنی زندگی ختم کر لینا یا اپنی جان سے جانا ،مسائل کا حل نہیں۔ صبر اور حوصلے سے کام لینا چاہیے، در پیش مسائل کا حل تلاش کرنا چاہیے اور اگر وقتی طور پہ مسئلہ حل نہ بھی ہو تو صبرکرکے دیکھیں،یہتو اللہ پاک بھی قرآن میں فرماتا ہے کہ بےشک ہر مشکل کے ساتھ آسانی ہے۔ خودکشی کرنے سے الٹا بعد میں بھی بدنامی ہی ملتی ہے اور لوگ اچھے الفاظ میں یاد نہیں کرتے کیونکہ اس خطرناک عمل کو اچھا نہیں سمجھا جاتا اور اس کا اثر پورے خاندان پہ پڑتا ہے۔ اگر کوئی مسئلہ یا پریشانی درپیش ہے تو اپنے گھر والوں سے یا دوست احباب سے ڈسکس کریں اور اگر کسی پہ بھروسہ نہیں کر سکتے تو کسی اچھے ماہرِ نفسیات سے رجوع کریں، ماہرِ نفسیات کے پاس جانے  کا یہ مطلب نہیں کہ آپ کوئی نفسیاتی مریض ہیں بلکہ ماہرِ نفسیات ایک بہترین مشورہ دینے والا بھی ہوتا ہے یا کسی دین دار بزرگ کو بتایئے اپنی پریشانی، اس سے نا صرف دل اور دماغ کا بوجھ ہلکا ہوتا ہے بلکہ کوئی نا کوئی حل بھی ضرور ملتا ہے۔

زندگی اللہ پاک کی دی ہوئی امانت ہے اسی لئے خودکشی کو حرام قرار دیا گیا ہے۔ زندگی سے پیار کریں، اپنی جان کی حفاظت کریں اور ثابت قدم رہ کے ڈٹے رہیں، وقت گزر ہی جاتا ہے اور حالات بدل ہی جاتے ہیں۔ پریشان یا مایوس ہونے سے مزید بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ کینسر اور ذیابطس جیسی مہلک بیماریوں کی بڑی وجہ مایوسی اور ٹیشن ہی ہے۔ آپ کی ذات سے بہت سے لوگ جڑے ہوتے ہیں ان کا خیال رکھیں، ہمت اور حوصلہ کبھی نہ چھوڑیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube