Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

کوڑا بیچ کر اسکول چلانے والی خاتون۔۔

SAMAA | - Posted: Nov 25, 2015 | Last Updated: 6 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 25, 2015 | Last Updated: 6 years ago

 

لاہور کي مسز روبينہ شکيل گزشتہ تيرہ سال سے کوڑا بيچ کر بے گھر اور غريب بچوں کا اسکول چلا رہي ہيں، ان کا کہنا ہے کہ گھر سے نکلنے والا ايک ماہ کا کچرا کسي غريب بچے کي ماہانہ تعليم کا خرچہ پورا کر سکتا ہے۔ اس کام ميں وہ تنہا نہيں بلکہ ان کے شوہر شکيل احمد قريشي بھي ان کے ساتھ ہيں۔

دونوں مياں بيوي لاہور اور شہر کے گردو نواح کے سات ہزار گھروں سے خشک کوڑا اور فالتو اشياٗ اکھٹي کرتے ہيں اور ہر مہينے وہ کوڑا کرکٹ بيچ کر اسکول چلانے کيلئے ساڑھے نو سے دس لاکھ روپے جمع کر ليتے ہيں۔

lhr2

مسز روبينہ شکيل کا کہنا ہے کہ کچرا بيچ تعليمي ادارہ چلانے کا مشورہ ان کو برازيل سے آنے والي ايک مہمان نے ديا، برازیلی خاتون نے پاکستان میں جگہ جگہ لگے کچرے کر ڈھیر دیکھے تو مسز شکیل کو مشورہ دیا کہ اس کچرے کو بیچ کر کوئی بھی فلاحی منصوبہ بآسانی چلایا جا سکتا ہے۔ اسی مشورے پر عمل کرتے ہوئے پہلے دن دونوں مياں بيوي نے چند گھروں سے کوڑا اکھٹا کر کے بيچا اور سينتيس روپے کمائے، يہ وہ پہلي کمائي تھي جس نے ان کي اگلي منزل کي راہيں ہموار کيں، اب کچرا اکھٹا کرنے اور بيچننے کيلئے باقاعدہ عملہ موجود ہے۔

اسٹريٹ چلڈرن کيلئے بنائے گئے اس اسکول ميں بچوں کو نرسري سے ميٹرک تک تعليم تو مفت دي ہي جاتي ہے، ساتھ ميں ہر سال کتابيں، چار يونيفارم کے جوڑے، اسٹيشنري اور دوپہر کا کھانا اور خالص دودھ بھي بالکل مفت ملتا ہے۔ لاہور کے پسماندہ علاقے کير کلاں گرين ٹاؤن ميں بنائے گئے اس فلاحي اسکول کيساتھ بچوں اور علاقہ مکينوں کے مفت علاج کيلئے ڈسپنسري اور ايمبولينس کا بھي انتظام کيا گيا ہے۔

lhr4

مسز روبينہ کا کہنا ہے کہ وہ اس فلاحي کام کو چلانے کيلئے اپنے پاکستاني بہن بھائيوں سے تو خيرات ليتي ہيں ليکن آج تک کبھي کسي غير ملکي سے مدد نہيں مانگي، ان کا ماننا ہے کہ اگر پاکستاني قوم ہمت کرے تو بہت غريب افراد تعليمي اور طبي سہوليات سے مستفيد ہو سکتے ہيں۔

مسز روبينہ شکيل کے مطابق روزانہ کي بنيادوں پر شہر بھر ميں لاکھوں کا کچرا گندے نالوں يا خالي ميدانوں ميں پھينک ديا جاتا ہے، اگر صرف کچرے کو ہي مناسب طريقے سے ٹھکانے لگايا جائے تو کئي ناخواندہ افراد کے گھروں ميں علم کي روشني پھيلائي جا سکتي ہے۔

lhr3

اسکول کے ميں کيمپس ميں ساڑھے تيرہ سو طالبعلم زير تعليم ہيں، حال ہي ميں پنجاب گورنمنٹ نے اسکول کے تين سو بچوں کي تعليم کا خرچ دينا شروع کيا ہے۔ اس وقت مين کيمپس کے علاوہ دونوں مياں بيوي دوسرے علاقوں اور شہروں ميں کاميابي سے آٹھ فلاحي اسکول چلا رہے ہيں، اسکولوں ميں تعليم کيساتھ ساتھ سلائي اور ديگر ہنر بھي سکھائے جا رہے ہيں۔ سماء
WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube