Tauqeer Chughtai

The author of six books. Poet, writer, journalist, playwright and columnist.

اداس پرندوں کاراستہ کون دکھائےگا

کون ہے جو علامہ اقبال کی نظم ’’ ہمدردی‘‘ سے واقف نہ ہو۔آج سے تیس چالیس سال پہلے تک یہ نظم بچوں کے نصاب میں شامل تھی، مگر اب صرف ان کی کتاب تک ہی محدود ہے۔انگریزی کے ایک شاعر کی نظم سے متاثر ہو کر علامہ اقبال نے اس نظم کے خیال کو جب…

Read More
 

آٹھ چوک کے آس پاس

کراچی میں چوک کو چورنگی کہا جاتا ہے۔ یہاں اتنی چور نگیاں ہیں کہ ان کا رقبہ جمع کرنے کے بعد ایک بہت بڑاپارک بنایا جا سکتا ہے، مگر ان میں کچھ چورنگیاں ایسی بھی ہیں جو اب کراچی کی تاریخ بنتی جا رہی ہیں،ان میں پرفیوم چوک کا نام بھی شامل ہے۔ کوئی مانے…

Read More
 

کیادنیاایک بڑی جنگ کی طرف بڑھ رہی ہے؟

تحریر: توقیر چغتائی انیس سو پینتالیس  میں امریکہ نے جاپان پر ایٹم بم سے حملہ کیا تھاجس کے بعد اس خوف ناک جنگ کا اختتام ہوگیا۔بظاہر یہ جاپان کی شکست تھی ، مگر اسے انسانیت کی شکست سے تعبیر کیا جائے تو غلط نہ ہو گا۔اس سے قبل چین اور جاپان کی درمیان سرحدی جھڑپیں…

Read More
 

کراچی کی پولیس فعال ہوگئی، مگر کس کیخلاف؟

۔۔۔۔۔**  تحریر : توقیر چغتائی  **۔۔۔۔۔ دوہزار سولہ کے دوران اور اس سے قبل دہشت گردوں نے کراچی پولیس کے ملازمین کو انتہائی بے دردی سے قتل کیا، ڈیوٹی کے دوران پولیس کی گاڑیوں پر کریکر سے حملے ہوئے، موٹر سائیکل سواروں نے کئی پولیس افسران کا پیچھا کرنے کے بعد انہیں ہلاک کیا اور…

Read More
 

شہر کی دیواریں اور سماجی رابطے

****تحریر توقیر چغتائی**** بجلی اور انٹر نیٹ کے دور سے پہلے بھی دیواروں کی شکل میں سوشل میڈیا موجود تھا اور اس کے ذریعے لوگوں تک اپنی بات انتہائی آسانی سے پہنچائی جاتی تھی ، مگر اس کو اب اتنی اہمیت نہیں دی جاتی اس لیے کہ موجودہ دور میں خبروں کی ترسیل کے جدید…

Read More
 

پھلوں کی ہڑتال کے بعد۔۔۔۔

پچھلے دنوں پھلوں کی ہڑتال کا بہت چرچا تھا۔سوشل میڈیا کے ذریعے لوگوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کرنے کا یہ پہلا تجربہ تھا جو انتہائی کامیاب بھی رہا اور اس سے لوگوں کویہ اندازہ بھی ہوا کہ موجودہ دور میں اگر سوشل میڈیا کو صحیح طریقے سے استعمال کیا جائے تو یہ کتنی…

Read More
 

خدا کیلئے مجھے اینکر بنادیں۔!۔

تحریر : توقیر چغتائی کسی زمانے میں ٹی وی کے اینکر کو میزبان کہتے تھے جس کیلئے پڑھا لکھا ہونا پہلی شرط تھی، آواز اور تلفظ کے ساتھ الفاظ کو ادا کرنے کے ڈھنگ سے بھی آشنائی ضروری تھی اور خوب صورتی کا معیار اُس رکھ رکھاؤ سے جھلکتا تھا جو ہر گھر کی خشت…

Read More
 

بچّے قدرتی پھلوں اورنعمتوں سے دورکیوں؟

تحریر: توقیر چغتائی شہرو ں میں رہنے والے بّچے اس بات پر خوش ہوتے ہیں کہ وہ دیہی علاقوں میں رہنے والے بچّوں سے زیادہ سمجھ دار اوربا خبر ہیں، لیکن یہی بچّے جب دیہاتی علاقوں میں جاتے ہیں تو مختلف جانور ، پرندے ، درخت، پہاڑ ، دریا اور پھل دیکھ کر حیران رہ…

Read More
 

فٹ پاتھ ہئیرکٹنگ سیلون

گاؤں سے شہر آیا تو یہ دیکھ کر حیران رہ گیا کہ یہاں کے حجام کتنے امیر ہیں۔ دل چاہا کہ ایک دکان لے کر سجاؤں اور دوسروں کی طرح لاکھوں کماؤں، مگر کیسے ۔ ریل میں سفر کے دوران بنے میرے موچی دوست گل خان نے پریشانی کو بھانپ لیا ، کوئٹہ وال کے…

Read More
 

سری لنکا سےثقافتی رابطے،مگر کیسے ؟

جنوبی ایشیا کے تقریباً سارے ممالک ایک ثقافتی ڈور سے بندھے ہوئے ہیں مگر اس ڈورمیں کچھ ایسی گانٹھیں بھی موجود ہیں جو ثقافتی رنگا رنگی کو دھندلا رہی ہیں۔ سب سے بڑی گانٹھ پاک بھارت تعلقات میں اتار چڑھاؤ کا وہ سلسلہ ہے جو موسم سے بھی زیادہ تیزی کے ساتھ تبدیل ہوتا رہتا…

Read More
 

راول پنڈی سے ساہی وال تک

توقیر چغتائی: ہر گاؤں دیہات اور شہر کی ایک تاریخ ہوتی ہے، اُسے آباد کرنے والا ایک گروہ ہوتا ہے اور یہی گروہ اُس کی پہچان بنتا ہے۔ سنسکرت میں راول کا لفظ ، بہادر، شہزادے، سورما اور سردار کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ راول پنڈی کے علاقے میں بھی ’’راول‘‘ نام کی ایک…

Read More
 

کراچی میں ٹریفک کے مسائل

تحریر : توقیر چغتائی قطار میں چلنا، اپنی باری کا انتظار کرنا اور دوسروں کے لیے راستہ چھوڑنا مہذب دنیا کا وطیرہ ہے ، مگر کراچی کہ شاہراہوں پر مہنگی گاڑیوں میں بیٹھے مہذب افراد ہوں یا کسی رکشہ ٹیکسی کے ڈرائیور اس سے بالکل ناواقف دکھائی دیتے ہیں۔یہاں کی سڑکوں پر پیش آنے والے…

Read More
 

ایدھی کے قبرستان میں اپنی لاش کی تلاش

۔۔۔۔۔**  تحریر و تبصرہ : توقیر چغتائی  **۔۔۔۔۔ پچھلے چالیس سال سے میں اپنے آپ کو تلاش کر رہا ہوں، کبھی لیاری کی تنگ و تاریک گلیوں میں جا کر اپنا پتا پوچھتا ہوں، کبھی فشری کی سڑکوں سے اٹھنے والی مچھلیوں کی بدبو سے اپنی ناک کو بچاتے ہوئے دور تک پھیلے ہوئے سمندر…

Read More
 
 
 
 

مصنفین