Tauqeer Chughtai

The author of six books. Poet, writer, journalist, playwright and columnist.

اسکمنگ

۔۔۔۔۔**  تحریر : توقیر چغتائی **۔۔۔۔۔ انگریزی میں ذرا سے فرق کے ساتھ ”میڈ“ بنانے کو بھی کہتے ہیں اور پاگل شخص کو بھی، لیکن ہم نے اس لفظ کو جب بھی دیکھا چین کے ساتھ لکھا ہوا دیکھا، جس کی وجہ سے اس کا ترجمہ ”چین میں پاگل“ کرتے رہے، ہم تو کبھی چین…

Read More
 

بھارتی سیاست میں ایک لفظ سے بھونچال آگیا

تحریر:توقیر چغتائی دنیا کی مختلف زبانوں میں استعمال ہونے والے الفاظ کا ترجمہ کیا جائے تو ایک سے زیادہ مطالب سامنے آئیں گے۔ اس کی سب سے بڑی مثال اردو ہے جو بہت ساری زبانوں سے مل کر وجود میں آئی ۔ اس میں ملتے جلتے الفاظ بھی پائے جاتے ہیں اور ایسے کئی الفاظ…

Read More
 

ٹسوے

یوں تو کئی طرح کے ٹسوے مشہور ہوئے مگر ہمارے زمانے میں دو طرح کے ٹسووں نے جو شہرت پائی اسے دیکھ کر آنسو، آہیں، فریاد،تلماہٹ اور گریہ جیسے الفاظ بھی ہوش وحواس کھو بیٹھے ۔ ہندی میں ٹسوے کا لفظ صدیوں سے مستعمل ہے، جب یہ ٹسوے بہاتا ہوا اردو کے پاس آیا تو…

Read More
 

دھندلی زمین پرگٹھی گھٹی سانسیں

                        ۔۔۔۔ تحریر توقیر چغتائی انگریزی میں fog، ہندی میں’’ کہرا‘‘ اور پنجابی میں’’ کہیڑ‘‘ کہلانے والے دھواں نما بادلوں نے آج کل آسمان کے بجائے زمین کو اپنے حصار میں لیا ہوا ہے۔صدیوں سے زمین، آسمان اور انسانی زندگی کے ساتھ چلنے والی…

Read More
 

اگرتاج محل کی زبان ہوتی

تحریر:توقیر چغتائی ممتاز محل کی یاد میں تعمیر کی جانے والی دنیا کی عظیم عمارت تاج محل آج کل ’’شوسینا ‘‘ کے نشانے پرہے جس کی بازگشت بھارتی میڈیا پرپوری شدت سے سنی جا سکتی ہے۔ عالمی ثقافتی ورثہ قرار دی جانے والی اس عمارت کے بارے میں بنیاد پرست ہندوؤں کا دعویٰ ہے کہ…

Read More
 

یہ دھواں سا کہاں سے اٹھتا ہے

تحریر :توقیر چغتائی الرجی کی بہت ساری اقسام ہیں جن سے بچنے کے لیے ہمیں طرح طرح کی جتن کرنا پڑتے ہیں۔ کچھ دواؤں اور احتیاط کے بعد الرجی سے چھٹکارا بھی مل جاتا ہے، لیکن ایسی الرجی سے نہ تو آپ دواؤں کے سہارے چھٹکارا حاصل کر سکتے ہیں اور نہ ہی احتیاطی تدابیر…

Read More
 

اداکارکمال کو یادکرتےہوئے

تحریر: توقیرچغتائی یکم اکتوبر 2009کو پاکستانی فلم انڈسٹری کے معروف اداکار سید کمال انتقال کر گئے تھے۔اس وقت ان کی عمر 75سال تھی۔ اس سے پانچ سال قبل ایک دوپہر کو ہم نے انہیں فون پر ملک کے ایک مشہور روزنامے کے لیے انٹرویو کی درخواست کی جس کے جواب میں ان کا کہنا تھا…

Read More
 

غیرت صرف مردوں میں نہیں ہوتی

ملک کے دیہی علاقوں میں خواتین کو غیر ت کے نام پر قتل کرنے کے لاتعداد اور شرم ناک واقعات کی وجہ سے حکومت پر کافی برسوں سے تنقید جاری تھی ۔ دو ہزار پندرہ میں غیرت کے نام پر قتل کو ناقابل راضی نامہ جرم بنانے کے لیے کوڈ آف کرمنل پروسیجر (سی آر…

Read More
 

ہارن کی آواز اوردھوئیں کے بادل

تحریر:توقیر چغتائی بسوں اور ٹرکوں پر لکھے ہوئے جملے ہماری ثقافتی تاریخ کا حصّہ بنتے جا رہے ہیں، مگران میں ایک جملہ ایسا بھی ہے جو تاریخ اور ماضی بننے کا نام ہی نہیں لے رہا اور وہ ہے’’ ہارن دے کر پاس کریں‘‘۔ یہ جملہ ماضی میں کسی بس یا ٹرک کے مالک نے…

Read More
 

روہنگیا پناہ گزین اور آنگ سان سوچی

۔۔۔۔۔**  تحریر : توقیر چغتائی  **۔۔۔۔۔ میانمار میں 25 سال کے بعد 2015ء کے دوران عام انتخابات منعقد ہوئے تو انسانی حقوق کیلئے کام کرنیوالے افراد اور اداروں نے سکھ کا سانس لیا کہ اب اس ملک کی باگ ڈور اس خاتون کے ہاتھوں میں آگئی ہے جو انتہائی پڑھی لکھی ہونے کے ساتھ اس…

Read More
 

پاک افغان رشتوں میں کڑواہٹ کی وجوہات

افغانستان کی سرحدیں نہ تو بھارت سے ملتی ہیں اور نہ ہی اس کے آس پاس امریکہ موجود ہے۔ اس کے باوجود یہ دونوں ممالک افغانستان پر اپنا سیاسی ، سماجی، ثقافتی اور تجارتی قبضہ جمانے کی بھر کوشش میں مصروف ہیں۔ یہ وہی افغانستان ہے جہاں روسی فوجوں کے انخلا کے بعد امریکہ کسی…

Read More
 

لکھےجوخط تجھے

خط لکھنے اور پڑھنے کا جو لطف ہے اسے وہی جانتے ہیں جو خطوط کے ذریعے ایک دوسرے سے رابطہ کرتے تھے۔ ہم نے بچپن میں ایسے بہت سارے لوگ دیکھے جو روزانہ اس امید کے ساتھ ڈاکیے کا انتظار کرتے تھے کہ آنے والی ڈاک میں ان کے نام کا بھی کوئی نہ کوئی…

Read More
 

جلسے جلوس اور ہمارا قیمتی وقت

تحریر :توقیر چغتائی دنیا میں کچھ لوگ ایسے ہیں جن کے پاس وقت تو موجود ہے ، مگر روزگار مو جود نہیں اور کچھ ایسے ہیں جن کے پاس سب کچھ موجود ہے مگر وقت جیسی قیمتی شے کی کمی رہتی ہے۔ ہمارے ملک میں جن کے پاس سب کچھ موجود ہے ان کے پاس…

Read More
 

فیس بک کے رشتے ناتے

سماجی رابطوں کے ذرائع اتنے وسیع ہو چکے ہیں کہ دنیا میں بیٹھا کوئی بھی شخص کسی دوسرے علاقے میں بسنے والے انسانوں اور ان کی روز مرہ کی زندگی سے نا واقف نہیں رہا، مگر دوسرے تمام ذرائع میں فیس بک کو اس لیے اہمیت حاصل ہے کہ اس کے ذریعے آپ دنیا میں…

Read More
 

نا اہل سے “لائیک” اور “نالائق” تک

تحریر: توقیر چغتائی اہل اور نااہل کی طرح لائق اور نالائق بھی ہمارے زندگی کا حصّہ بن چکے ہیں۔ لفظ نالائق تو ہم اپنے والدین اور اساتذہ سے اتنی دفعہ سن چکے ہیں کہ ہمیں اپنی نالائقی پر پورا یقین ہو چکا ہے، مگر پچھلے پانچ سال کے دوران اخبارات اور ٹی وی کے توسط…

Read More
 

اداس پرندوں کاراستہ کون دکھائےگا

کون ہے جو علامہ اقبال کی نظم ’’ ہمدردی‘‘ سے واقف نہ ہو۔آج سے تیس چالیس سال پہلے تک یہ نظم بچوں کے نصاب میں شامل تھی، مگر اب صرف ان کی کتاب تک ہی محدود ہے۔انگریزی کے ایک شاعر کی نظم سے متاثر ہو کر علامہ اقبال نے اس نظم کے خیال کو جب…

Read More
 

آٹھ چوک کے آس پاس

کراچی میں چوک کو چورنگی کہا جاتا ہے۔ یہاں اتنی چور نگیاں ہیں کہ ان کا رقبہ جمع کرنے کے بعد ایک بہت بڑاپارک بنایا جا سکتا ہے، مگر ان میں کچھ چورنگیاں ایسی بھی ہیں جو اب کراچی کی تاریخ بنتی جا رہی ہیں،ان میں پرفیوم چوک کا نام بھی شامل ہے۔ کوئی مانے…

Read More
 

کیادنیاایک بڑی جنگ کی طرف بڑھ رہی ہے؟

تحریر: توقیر چغتائی انیس سو پینتالیس  میں امریکہ نے جاپان پر ایٹم بم سے حملہ کیا تھاجس کے بعد اس خوف ناک جنگ کا اختتام ہوگیا۔بظاہر یہ جاپان کی شکست تھی ، مگر اسے انسانیت کی شکست سے تعبیر کیا جائے تو غلط نہ ہو گا۔اس سے قبل چین اور جاپان کی درمیان سرحدی جھڑپیں…

Read More
 

کراچی کی پولیس فعال ہوگئی، مگر کس کیخلاف؟

۔۔۔۔۔**  تحریر : توقیر چغتائی  **۔۔۔۔۔ دوہزار سولہ کے دوران اور اس سے قبل دہشت گردوں نے کراچی پولیس کے ملازمین کو انتہائی بے دردی سے قتل کیا، ڈیوٹی کے دوران پولیس کی گاڑیوں پر کریکر سے حملے ہوئے، موٹر سائیکل سواروں نے کئی پولیس افسران کا پیچھا کرنے کے بعد انہیں ہلاک کیا اور…

Read More
 

شہر کی دیواریں اور سماجی رابطے

****تحریر توقیر چغتائی**** بجلی اور انٹر نیٹ کے دور سے پہلے بھی دیواروں کی شکل میں سوشل میڈیا موجود تھا اور اس کے ذریعے لوگوں تک اپنی بات انتہائی آسانی سے پہنچائی جاتی تھی ، مگر اس کو اب اتنی اہمیت نہیں دی جاتی اس لیے کہ موجودہ دور میں خبروں کی ترسیل کے جدید…

Read More
 

پھلوں کی ہڑتال کے بعد۔۔۔۔

پچھلے دنوں پھلوں کی ہڑتال کا بہت چرچا تھا۔سوشل میڈیا کے ذریعے لوگوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کرنے کا یہ پہلا تجربہ تھا جو انتہائی کامیاب بھی رہا اور اس سے لوگوں کویہ اندازہ بھی ہوا کہ موجودہ دور میں اگر سوشل میڈیا کو صحیح طریقے سے استعمال کیا جائے تو یہ کتنی…

Read More
 
 
 
 

مصنفین