Shahla Mahmood

Miss Shahla Mahmood is a Karachi based broadcast journalist associated with Samaa Tv. She likes to write on culture ,Human rights, women issues and social issues.

بک گئی ہے یہ گورنمنٹ والی قمر آنٹی

یہ کہانی ہے کراچی کے علاقے مارٹن کوارٹر کی رہنے والی قمر آنٹی کی۔ بجلی کی بارہا بندش نے دیگر علاقوں کی طرح مارٹن کوارٹر کے رہنے والوں کی بھی زندگی اجیرن کر رکھی تھی۔ گرمی کی ستائی قمر آنٹی جو پہلے ہی اپنے غصے اور بے باک جملوں کے باعث محلے میں کافی مشہور…

Read More
 

برائیڈل شاور

ان دنوں شادیوں کا سیزن عروج پر ہے ۔شادی چاہے مڈل کلاس طبقے کی ہو،اپر یا ایلیٹ کلاس کی ہر کوئی بس اسی دھن میں سر تا پیرغوطہ زن دکھائی دیتا ہے کہ آخر ایسا کیا کیا جائے کہ سالہا سال تک خاندان والے مثالیں دیتے رہیں کہ بھئی واہ ۔۔۔ شادی تو فلاں کی…

Read More
 

تکلیف کیلئے معذرت،تعمیراتی کام جاری ہے

دفتر سے گھر جاتے ہوئے ہماری گاڑی ذرا سی دیر ٹریفک جام میں پھنسی ۔۔تو بیٹھے بیٹھے کوفت ہونے لگی۔۔ گاڑیوں کی لمبی لائن لگی ہوئی تھی۔۔سمجھ نہیں آ رہا تھا کہ آگے ایسا کیا ہو رہا ہے جو ٹریفک جوں کا توں ہی ہے۔ ۔دس منٹ۔۔ بیس منٹ۔۔آدھا گھنٹہ گزر گیا مگر مجال ہے…

Read More
 

اور وہ چلا گیا

اس کی نظریں بھیڑ میں مجھے ڈھونٹتی ہوئی دکھائی دیں۔ میں نے اسے دیکھ لیا تھا کہ وہ مجھے ہی تلاش کر رہا ہے۔ فرئیر ہال کے احاطے میں سجے ایٹ فیسٹیول کے اندر میں  نے اپنا بیگ ۔۔شال اور مائیک سنبھالتے ہوئے اسے دور سے ہاتھ کا اشارہ کیا۔۔۔ مجھے دیکھ کر اس کے…

Read More
 

سال نو کا جان لیوا جشن۔۔

چمکتی آنکھیں دل موہ لینے والی مسکراہٹ اور شرارت سے بھرپور چہرہ پہلی جماعت کا طالب علم سبحان گھر بھر کا لاڈلہ خوب تیار ہوا تھا کہ نئے سال کے جشن کو بہن بھائیوں کے ساتھ مل کر منائے گا لیکن یہ کیا ہوا؟چکمتی آنکھیں ہمیشہ کے لیے ابدی نیند سو گئیں۔ سبحان کا گھر…

Read More
 

بھڑکتےشعلے

میرے چاروں طرف دھواں ہی دھواں ہے۔کچھ دکھائی نہیں دے رہا۔ دم گھٹ رہا ہے اور راستہ بھی نہیں مل رہا۔بھائی پیلز۔ مجھے بتاؤ باہر نکلنے کا راستہ کہاں ہے؟یہ تھی سینتالیس سالہ ڈیوٹی مینجر محمد الیاس بابر کی آخری فون کال جو انہوں نے اپنے دوست کو کی تھی۔اس کے بعدہمیشہ ہمیشہ کےلیےرابطہ منقطع…

Read More
 

اور غبارے سے ہوا نکل گئی

    کپتان کی بارات پورے دھوم دھڑکے کے ساتھ پورے ملک سے ہی نکلی تھی، کیا کراچی، کیا لاہور ، کے پی کے ہو یا پھر اسلام آباد پنڈی، کپتان کی ایک پکار پر سب نے لبیک کہتے ہوئے پوری تیاری کے ساتھ بنی گالہ پہنچنا شروع کر دیا، متوالوں نے شیلنگ کا سامنا کیا، لاٹھی…

Read More
 

کوئٹہ بڑی تباہی سے بچ گیا

۔۔۔۔۔**  تحریر : شہلا محمود  **۔۔۔۔۔ پاکستان کے تمام نیوز چینلز پر 24 اکتوبر کی رات لال ڈبوں میں بار بار بریکنگ نیوز نشر کی جا رہی تھی، کوئٹہ پولیس ٹریننگ اسکول پر دہشت گردوں کا حملہ، خبر دیکھتے ہی فوراً یہی دعا لبوں سے نکلی کہ یا اللہ کہیں سانحہ پشاور جیسا حملہ نہ…

Read More
 

بدلتا ہے رنگ آسماں کیسے کیسے

قائد کے شہر کی سیاست کے بھی کیا کہنے۔ کسی ایک کروٹ بیٹھتی ہی نہیں۔ کب، کیا ہو جائے کچھ پتا نہیں چلتا۔ کل جو خود کو ناقابل تسخیر سمجھتے تھے آج ان کا نام و نشان تک مٹانے کی بھرپور تیاریاں کی جا رہی ہیں۔ متحدہ قومی موونٹ کے قائد کی ایک کال پر…

Read More
 

پاکستان زندہ باد

  ۔۔۔۔۔**  تحریر : شہلا محمود  **۔۔۔۔۔ بائیس اگست کا دن پاکستان کی سیاسی تاریخ کا بد ترین دن تھا، ویسے تو سیاسی منظر نامے ایسے دنوں سے بھرے پڑے ہیں لیکن 22 تاریخ کو جو ہوا بحیثیت پاکستانی میری برداشت سے باہر تھا، متحدہ قومی موونٹ جو گزشتہ کافی عرصے سے سیاسی محرومیوں کا…

Read More
 

ثنا خوان تقدیس مشرق کہاں ہیں؟

سمیرا کی آنکھوں میں تھے کئی خواب، سنہرے خواب، یہ عمر ہی ایسی ہوتی ہے جب لڑکیاں خود کو شہزادی تصور کرکے، تصور کی دنیا میں کسی اجنبی شہزادے کی منتظر ہوتیں ہیں کہ ان کے خوابوں کا شہزادہ آئے گا جو انہیں رانی بنا کر لے جائے گا۔ جوانی کی دہلیز کو چھونے والی…

Read More
 
 
 
 

مصنفین