Raazia Syed

Author is journalist by profession currently working as a researcher in private channel.

باہمت خواتین، اُمیدِ سحر

بلاگر: راضیہ سید وجودِ زن سے تصویر کائنات میں رنگ تو ہے مگر یہ ایسا رنگ نہیں کہ جو صرف قوسِ قزح کی طرح آنکھوں کو خیرہ کرنے کا سبب بنے۔ بلکہ وجودِ زن سے کائنات کی تصویر میں ایسا رنگ بھرا ہے کہ عورت نے معاشرے کی ہر اکائی میں اپنا کردار روزِ ازل…

Read More
 

پانچواں موسم

  پاکستان میں کہنے کو تو چار موسم ہیں لیکن ایک پانچواں موسم انتخابات کا بھی ہے ، یہ وہ موسم ہے کہ جب پرندے بہتر حالات کی تلاش میں سرگرداں سے نظر آتے ہیں اور ایک جگہ سے دوسری جگہ نقل مکانی کر لیتے ہیں ، بالکل اسی طرح ہمارے سیاسی لیڈر بھی ان…

Read More
 

چابی والے کھلونے اور ملکی سیاست

سابق نااہل وزیر اعظم نواز شریف نے کل جنرل ورکرز اجلاس سے خطاب میں سینیٹ کے حالیہ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ کی نشاندہی کی اور کہا کہ تمام کی تمام اپوزیشن چابی کے کھلونے کی مانند ہے جو کل سب ایک ہی جگہ پر اکٹھے ہو گئے ، نواز شریف نے کل یہ بھی کہا…

Read More
 

اف یہ غصہ کیسے ختم ہو؟

کہتے ہیں کہ غصہ اور محبت دو ایسے جذبات ہیں جن کے ذریعے انسان بہت سے کام کر سکتا ہے اور کامیابی کی منازل طے کر سکتا ہے لیکن شرط یہ ہے کہ ان دونوں جذبات یا احساسات کو مثبت انداز سے کنڑول کرنے کی کوشش کی جائے ۔ غصہ ایک ایسا ردعمل ہے جو…

Read More
 

تحائف کا انتخاب مگر کیسے ؟

وہ مشہور لطیفہ تو آپ سب نے بھی میری طرح سنا ہو گا کہ ایک صاحب نے کسی دوست کے ہاں آنے کا ارادہ کیا تو وہ کہنے لگا کہ جناب جب آپ آئیے گا تو کہنی سے دروازے کی بیل بجائیے گا  اب پہلے دوست نے پوچھا کہ ہاتھ سے کیوں نہیں کہنی سے…

Read More
 

گود لئے بچے آخر کس کی اولاد ؟

’’امی آج مجھے بتا ہی دیں کہ میں آپ کا بیٹا بھی ہوں یا نہیں ؟ مجھے تو سب یہی کہتے ہیں کہ میں آپ کا اور بابا کا بیٹا نہیں ہوں بلکہ آپ نے مجھے گود لیا ہے اور آپ دونوں مجھے بالکل بھی پیار نہیں کرتے ۔ ‘‘ ہمیشہ تو نہیں لیکن کم…

Read More
 

خود اعتمادی سیکھیں

۔۔۔۔۔**  تحریر  : راضیہ سید  **۔۔۔۔۔ مغل بادشاہ ظہیر الدین بابر کا دربار سجا تھا جہاں دنیا بھر سے آئے ہوئے جرنیل اور کئی اہم سرکاری شخصیات بھی مدعو تھیں، خیر دربار میں کھانے کا وقت آیا اور تمام مہمانوں کو دعوت طعام دی گئی، کھانے میں بہت سی چیزوں کے ساتھ حلوہ بھی پیش…

Read More
 

اخلاقیات بمقابلہ قابلیت

سقراط کی مجلس میں ایک شخص آیا ، اس نے بہت قیمتی لباس زیب تن کر رکھا تھا اوراسے اسی بات کا یقین تھا کہ سقراط اس کے لباس فاخرہ کی وجہ سے اس سے متاثر ہوئے بغیر نہیں رہ سکتا ۔ لیکن حیرت کا مقام تو یہ تھا کہ سقراط نے اسکی رتی برابر…

Read More
 

زندانوں میں کیاگذری؟

منٹو نے ایک مرتبہ کہا تھا کہ’’ میں سزائے موت کا قائل نہیں ہوں ، میں جیل کے حق میں بھی نہیں ہوں کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ جیل انسان کی اصلاح نہیں کر سکتا لیکن میں ایسے اصلاح خانوں کے حق میں ہوں جو غلط رو انسانوں کو صیحح راستہ بتا سکیں ‘‘۔ اگرچہ…

Read More
 

تنہا ذمہ داری کیسے اٹھائوں ؟

موت کائنات کی سب سے بڑی حقیقت ہے کیونکہ جس نے بھی اس دنیا پر آنا ہے وہ اپنے مقررہ وقت پر اس زندگی کے قفس سے آزاد ہو جاتا ہے، اگرچہ زندگی بہت خوب صورت ہے لیکن کبھی کبھی مشکلات کے بار تلے دب کر انسان خود اس قید سے جان چھڑانے کی سوچتا…

Read More
 

ہم جنہیں رسم دعا یاد نہیں

دعاایک ایساہتھیاراور ایک ایسی طاقت ہے کہ جس کے پاس دعا کا تحفہ ہو تواسےعرش کی بلندیوں تک پہنچنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔ ہماری زندگیوں میں بہت سے مددگار ہاتھ ہوتے ہیں جو ہماری مشکلات اور پریشانیوں میں ہمارا ساتھ دیتے ہوئے نظر آتے ہیں۔یہ ہاتھ ہمارے لئےدعاکرنےوالےہوتےہیں۔اب دعاؤں کےلئےاٹھتےہوئےیہ ہاتھ ہمارے والدین کے…

Read More
 

میراگھر ۔۔۔ میراکنبہ

وہ ایک پنجابی زمیندار تھا جس کی مجبوریوں کی داستان اور قرضوں کے قصے تو آپ سب نے میری طرح اپنی درسی کتب میں پڑھ رکھے ہیں کہ کس طرح اس زمیندار نے اپنی برادری کی ناک اونچی رکھنے کے لئے سماج کے فرسودہ طریقوں کو اپنا کر خود کو اور اپنے گھر والوں کو…

Read More
 

وہ موسیقی اب کہاں ۔۔؟

۔۔۔۔۔**  تحریر ؛ راضیہ سید  **۔۔۔۔۔ ہمیں اس بات سے 100 فیصد اتفاق ہے کہ موسیقی روح کی غذا ہے تاہم موسیقی کی جو قسم اور صورت آج کل چل رہی ہے، اس کے ہم بہت مخالف ہیں ڈم ڈم، ہا ہا، ہو ہو قسم کے ساز جن کو چھونے پر وہ بھی برا مان…

Read More
 

وکیل کی بریانی

کل ہی ایک ڈھابہ ہوٹل پر مجھے کھانا کھانے کا اتفاق ہوا ، اتنی چھوٹی سی جگہ پر اتنا لذیذ اور صاف ستھرا کھانا ، کھانے سے پہلے تو بیٹھنے کی جگہ دیکھ کر ہی دل خوش ہو گیا ۔ گھر والے ہمارے باہر کھانا کھانے کی عادت سے بہت پریشان ہیں کہ ہم ایک…

Read More
 

سب معیار عورت کے لئے ہی کیوں ؟

عورت بہن ، بیوی ، بیٹی ، ماں اور کتنے ہی رشتوں کا نام ہےلیکن اس نام کے ساتھ کتنے ہی معیار جوڑ دئیے گئے ہیں اسکا تو کوئی شمار ہی نہیں۔ اس کےکردار کو ماپنے کے کتنے ہی پیمانے مقرر کر دئیے گئے ہیں ۔ کبھی لڑکی کے رشتے کے لئے جانا ہو تو…

Read More
 

کہیں تو اماں ملے

تحریر: راضیہ سید ایک تنگ و تاریک بدبو دار سیلن زدہ کمرہ اور اس میں لوہے کی چار چارپائیاں جو ایک قطار میں موجود تھیں مجھے دکھائی دیں، بطور صحافی دارلامان میں یہ میرا پہلا چکر تھا، کمرے میں گھٹن اور بدبو کے باعث میرا اور میری ٹیم کا رکنا دشوار تھا۔ لیکن میں ان…

Read More
 

باپ کو نظراندازنہ کریں

 میں نے تمھیں کہہ دیا ہے کہ تمھاری ماں ہی تمھاری سب سے بڑی خیر خواہ ہے ، اب یہ بات پلو سے باندھ لو کہ باپ کسی کے بھی نہیں بنتے ، یہ صرف ماں کی ممتا ہی ہوتی ہے جو بچوں کے لئے ہر طرح کی قربانی دیتی ہے ۔یہ الفاظ گلی میں…

Read More
 

پاکستان میں پنجابی فلموں کا زوال

تحریر؛ راضیہ سید زبان ابلاغ کا ایک اہم ذریعہ ہے یہ ایک ایسی طاقت ہے جو اشرف المخلوقات کو جانوروں سے ممتاز کرتی ہے، اگر یہ کہا جائے کہ قومی زبان علاقائی زبانوں سے سجا ہوا ایک گلدستہ ہوتا ہے تو کچھ غلط نہیں ہوگا کیونکہ قومی زبان اگر وحدت کا باعث ہے تو علاقائی…

Read More
 

پانی پلاؤ،ثواب کمائو

دن رات ٹی وی اور اخبارات میں پانی کی کمی اور آلودہ پانی کے استعمال کی کہانیاں سن کر انسان جہاں ایک خفت میں مبتلا ہو جاتا ہے وہیں کچھ خوشگوار ماضی کی یادیں بھی ذہن میں آنے لگتی ہیں جو پانی اور اسکے استعمال سے متعلق ہوتی ہیں۔ مجھے اپنے پورے محلے کے گھروں…

Read More
 

نوجوان نسل اور ان کے خواب

تحریر : راضیہ سید نجمہ آنٹی آج کل کافی پریشان ہیں کہ ان کے بیٹے شکور کو کوئی نوکری نہیں مل رہی حالانکہ اسکے پاس پروفیشنل ڈگری بھی ہے ، شکور کی تین بن بیاہی بہنیں ہیں جن کے مستقبل کی فکر بھی اس نے ہی کرنی ہے ۔ والد ریٹائرڈ افسر اور اماں گھریلوخاتون…

Read More
 

بچوں کے فیشن پرکم توجہ کیوں

بچے بےچاروں کی عید کے بغیر سنے کون اور کیوں سنے کہ بس ان کو تو عید کے عید ہی من پسند کپڑے پہننے کو ملتے ہیں۔ باقی پورا سال تو بس زیادہ تربچوں کے لبوں پر ایک ہی شکوہ ہوتا ہے کہ ’’ہم کیا کریں کچھ لے کے ، ہماری امی اور پھوپھو تو…

Read More
 
 

مصنفین