Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

کاہنہ:4 افراد کے قتل کا ڈراپ سین،بیٹا ہی قاتل نکلا

SAMAA | - Posted: Jan 27, 2022 | Last Updated: 4 months ago
Posted: Jan 27, 2022 | Last Updated: 4 months ago
[caption id="attachment_2509912" align="alignleft" width="800"] فائل فوٹو[/caption]

پولیس نے لاہور کے علاقے کاہنہ میں 4 افراد کو قتل کرنے والے ملزم کا پتا لگا لیا۔ ماں اور بھائی بہنوں کو قتل کرنے والا خاندان کا ہی فرد تھا۔

پولیس کے مطابق کاہنہ میں ماں اور تین بچوں کے قتل کا ڈراپ سین اس وقت ہوا، جب قاتل نے اقبال جرم کیا۔ واقعے میں بچ جانے والا 14 سال کا لڑکا اور مقدمہ کا مدعی ہی قاتل نکلا ہے۔ ملزم نے فائرنگ کر کے ماں اور بھائی بہنوں کو قتل کيا اور جھوٹی کہانی سنائی۔

پولیس حکام کے مطابق ملزم ويڈيو گيم پب جی کھيلتا تھا اور نفسياتی مسائل کا شکار ہے۔ زین نے گھر کی نچلی منزل پر ہونے کی وجہ سے بچ جانے کا ڈرامہ رچایا تھا۔ ملزم کو گھر والے پب جی گیم کھیلنے سے منع کرتے تھے، جس پر ملزم نے گھر والوں کو فائرنگ کرکے قتل کیا۔

واضح رہے کہ رواں ماہ 19 جنوری کو لاہور کے قریب کاہنہ میں گھر سے چار افراد کی لاشیں برآمد کی گئی تھیں، چاروں افراد کو انتہائی قریب سے سر میں گولیاں مار کر قتل کیا گیا تھا۔ قتل کیے گئے افراد میں ماں، دو بیٹیاں اور ایک بیٹا شامل تھا۔ مقتولین کی شناخت ڈاکٹر ناہید سبطین، تیمور سلطان، ماہ نور اور فاطمہ جنت کے ناموں سے کی گئی تھی۔

مقتولہ کا اپنا گھر تھا، جس میں انہوں نے اپنا ایک کلینک بنایا ہوا ہے۔ اہل محلہ کے مطابق وہ پچیس سال سے یہاں رہائش پذیر تھے۔ ڈاکٹر ناہید کی لاش گھر کی بالائی منزل سے ملی، جن کی عمر 45 برس، جب کہ بیٹے کی عمر 22 اور بیٹیوں کی عمریں بالترتیب 15 اور 17 برس تھیں۔

ابتدائی بیان کے مطابق قتل کی واردات رات ایک سے دو بجے کے درمیان ہوئی تھی، اس دوران بڑا بیٹا زین دوسرے گھر سویا ہوا تھا۔ تمام افراد کو تیس بور پستول سے فائرنگ کرکے قتل کیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
Facebook Twitter Youtube