Wednesday, May 18, 2022  | 1443  شوّال  16

بھارت حجاب کرنے والی طالبات کا کلاس روم میں داخلہ بند

SAMAA | - Posted: Jan 21, 2022 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 21, 2022 | Last Updated: 4 months ago

بھارت کی جنوبی ریاست کرناٹک کے ضلع اڈوپی میں ایک سرکاری کالج کی بہت سی مسلم طالبات گزشتہ تقریبا 20 روز سے کالج کے احاطے میں باہر بیٹھ کر تعلیم جاری رکھے ہوئے ہیں۔

جرمن نشریاتی ادارے کے رپورٹ کے مطابق مذکورہ طالبات کو اسکول کی انتظامیہ حجاب کرنے کی وجہ سے اکلاس روم میں جانے  کی اجازت نہیں دے رہی۔

 کالج انتظامیہ کا کہنا ہے کہ اسکارف یا پھر برقع پہننا کالج ڈریس کوڈ کی خلاف ورزی ہے اس لیے ان طالبات کو کلاس میں داخلے کی اجازت نہیں دی جا رہی تاہم طالبات کا کہنا ہے کہ اسکول کے اصول و ضوابط میں ایسا کچھ بھی نہیں لکھا ہے۔

طالبات کا کہنا ہے کہ حجاب کرنا ان کا مذہبی حق ہے، جس سے انہیں زبردستی باز رکھنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق اس سلسلے میں کالج کی طالبات نے پہلی بار 31 دسمبر کو احتجاج  کیا تھا اور یہ سلسلہ تب سے اب تک جاری ہے۔ تمام لڑکیاں درسگاہ میں آتی ہیں تاہم انہیں کلاس روم میں داخل ہونے نہیں دیا جاتا، جس کی وجہ سے وہ باہر ہی بیٹھ کر پڑھتی ہیں، ان بیشتر طالبات کا تعلق گیارہویں اور بارہویں جماعت سے ہے۔

ریاست کے وزیر تعلیم بی سی ناگیش کا کہنا ہے کہ طالبات کو اصول و ضوابط پر عمل کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اسکول کی بیشتر مسلم طالبات کو کوئی مسئلہ نہیں ہے اور صرف کچھ طالبات ہی اس پر بضد ہیں۔

بی سی ناگیش کا کہنا تھا کہ ہم تسلیم کرتے ہیں کہ اس حوالے سے کوئی یونیفارم کوڈ نہیں ہے تاہم ماضی میں ایک یونیفارم ڈریس پر اتفاق ہوا تھا، جس پر عمل ہوتا رہا ہے اور ان طالبات کو بھی اس پر عمل کرنا چاہیے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
Facebook Twitter Youtube