Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

بائیکیا کا پسنجر انشورڈہوتا ہے تو رائڈر کیوں نہیں؟

SAMAA | - Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 4 months ago

شہریوں کو موٹر سائیکل کے ذریعے ٹرانسپورٹیشن کی سہولیات فراہم کرنے والی کمپنی بائیکیا اور اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن کے مابین سروس استعمال کرنے والے کسٹمرز کی انشورنس کے حوالے سے گزشتہ ماہ معاہدہ ہوا ہے۔

معاہدہ کے تحت بائیکیا کی سہولت حاصل کرنے والے شہریوں سے 5روپے انشورنس کی مد میں لئے جارہے ہیں جس کے بدلے کسی بھی حادثے کی صورت میں قیمتی جان کی ضیاع پر 4لاکھ روپے لواحقین کو دیے جائیں گے اور حادثے میں زخمی ہونے کی صورت میں 25ہزار روپے تک ہیلتھ کوریج دی جاتی ہے۔

دستاویزات کے مطابق کسی حادثے کی صورت میں مالی نقصان کا بھی ازالہ کیا جاتا ہے تاہم یہ سہولت بائیکیا کے رائڈرز کو حاصل نہیں ہے۔

اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن کے چیئرمین شعیب جاوید حسین کا کہنا ہے کہ بائیکیا کے ساتھ اسٹیٹ لائف کا یہ پہلا ڈیجیٹل منصوبہ ہے جس کے تحت شہریوں کو حادثات کی صورت میں لائف اور ہیلتھ کوریج دی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کے پہلے فیز میں صرف پسنجرز کو شامل کیا گیا ہے لیکن دوسرے فیز میں رائیڈرز کو بھی شامل کرنے پر بھی کام ہورہا ہے۔

میڈیا بریفنگ میں شعیب جاوید حسین کا کہنا تھا کہ بائیکیا کے ساتھ اشتراک منافع کمانے کے لئے نہیں بلکہ کم آمدن والے طبقے تک انشورنس کی سہولیات پہنچانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ لائف ہیلتھ انشورنس پالیسی متعارف کرنے جارہے ہیں جس کا پریمیئم انڈسٹری ریٹ سے کم اور سہولیات بہتر ہوں گی۔

اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن کے ایک افسر کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ پسنجر کے لئے ایک رائیڈ کے پانچ روپے دینا آسان ہوتا ہے لیکن رائیڈر کا معاملہ مختلف ہوتا ہے اسلئے اس کے لئے مختلف پالیسی پر کام ہورہا ہے۔

جبکہ بائیکیا ترجمان کا کہنا ہے کہ رائیڈرز کے حوالے سے کسی انشورنس کمپنی سے ابھی کوئی معاہدہ نہیں لیکن ہمارے پلیٹ فارم پر تمام رائڈرز کو کمپنی اپنی جانب سے کسی بھی حادثے میں جانی نقصان یا معزور ی کی صورت میں دو لاکھ روپے اور زخمی ہونے پر25ہزار روپے کی علاج ومعالجہ کی سہولت دیتی ہے۔موبائل چھننے کی بھی تلافی کی جاتی ہے۔بائیکیا رائڈرز سے اس کے لئے کوئی چارجز نہیں لیتا۔

بائیکیا ترجمان کے مطابق کمپنی ایک بڑی انشورنس کمپنی کے ساتھ ایک بڑی انشورنس کوریج بہت جلد متعارف کرے گی۔

چیئرمین اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن کے مطابق پاکستان میں انشورنس کی شرح 0.6فیصد ہے جب کہ دنیا بھر کی اوسط شرح 3.5فیصد ہے جبکہ کئی ممالک میں تو 10فیصد سے بھی زیادہ ہے۔

شعیب جاوید حسن کا کہنا مزید کہنا تھا کہ کرونا کی وجہ سے جو لوگ پریمیئم ادا نہیں کرسکے ان کے لئے لیٹ چارجز معاف کردیے گئے اور ساتھ ہی انہیں کہا گیا ہے کہ پرییمیئم جمع کرانے والے بونس کے بھی حقدار ہوں گے۔

انہوں نے کہا بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو بھی انشورنس کی سہولیات فراہم کررہے ہیں اور روشن ڈیجیٹل اکاونٹس میں اسٹیٹ لائف اسٹیٹ بینک کے ساتھ مخصوص پوائنٹس کے بدلے پریمیئم جمع کرانے کی بھی سہولت دے رہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube