Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

کیا عامر لیاقت بیماری کے باوجود ڈانس کررہے ہیں؟ ویڈیو دیکھیں

SAMAA | - Posted: Jan 7, 2022 | Last Updated: 4 months ago
Posted: Jan 7, 2022 | Last Updated: 4 months ago

معروف میزبان عامر لیاقت حسین 30 دسمبر کو طبیعت کی ناسازی کے باعث اسپتال میں داخل کرایا گیا اور 5 جنوری 2022 کو انہیں اسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا، تاہم اس دوران بھارتی میڈیا نے انہیں ایک شادی میں بالکل صحت مندانہ انداز میں رقص کرتے دیکھا۔

گزشتہ ہفتے ٹی وی میزبان اور رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین نے ایک ٹویٹ میں اپنے مداحوں کو بتایا تھا کہ انہیں کراچی کے ایک نجی اسپتال میں منتقل کیا جا رہا ہے لیکن انہوں نے اپنی بیماری کے حوالے سے کچھ نہیں بتایا تھا کہ انہیں کیا ہوا ہے۔

ایک دن بعد عامر نے خود ٹوئٹ کرکے اپ ڈیٹ کیا کہ وہ اب بہتر ہیں، انہوں نے اپنے مداحوں کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے ان کی صحت یابی کے لیے دعا کی تھی ۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ سرحد کے دوسری طرف بھارت میں تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین کی بالی ووڈ گانے ٹِپ ٹِپ برسا پانی پر ڈانس کی ویڈیو سے محظوظ ہورہے تھے ۔

کئی بھارتی میڈیا نے یہ خبر نشر کی کہ پاکستانی رکن قومی اسمبلی بالی ووڈ فلم سوریا ونشی کے مشہور گانے ٹپ ٹپ برسا پانی پر ڈانس کر رہے ہیں اور یہ ویڈیو انٹرنیٹ وائرل ہورہی ہے ۔

اس ویڈیو کے وائرل ہونے اور سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر شیئر ہونے کے بعد کچھ لوگوں نے نشاندہی کی کہ اس میں موجود شخص عامر لیاقت نہیں ہیں۔

بعدازاں خود بھارت کی ایک نیوز ویب سائٹ این ڈی ٹی وی نے اس حوالے سے فیکٹ چیک جاری کیا جس میں بتایا گیا کہ ویڈیو میں موجود شخص عامر لیاقت نہیں بلکہ کوئی ہے ۔ انہوں نے ویڈیو میں موجود شخص کا انسٹاگرام پروفائل بھی شیئر کیا ۔

رپورٹ کے مطابق ویڈیو میں موجود شخص کا نام شعیب شکور ہے جو ایک کوریوگرافر ہے۔

سماء ڈیجیٹل سے گفتگو میں شعیب شکور نے بتایا کہ وہ پاکستان کے شہر لاہور کے ریہائشی ہیں اور پیشہ کے لحاظ سے کوریوگرافر اور گلوکار ہیں ۔

خیال رہے کہ اکشے کمار اور کترینہ کیف کی حال ہی میں ایک فلم سوریا ونشی سینمائوں کی زینت بنی تھی جس میں ماضی کے مشہور گانے ٹپ ٹپ برسا پانی کو دوبارہ فلمایا گیا تھا۔

واضح رہے تحریک انصاف کے ٹکٹ پر کراچی سے منتخب ہونے والے ایم این اے عامر لیاقت حسین کراچی کے مسائل پر کھل کر وزیراعظم عمران خان سے تحفظات کا اظہار کرتے رہے ہیں اور انہوں نے متعدد بار اپنا استعفیٰ بھی وزیراعظم کو پیش کیا جو قبول نہیں کیا گیا۔

انہوں نے 2002 میں متحدہ قومی موؤمنٹ کے ٹکٹ پر کامیابی حاصل کی اور پہلی بار قومی اسمبلی میں پہنچے۔

بعد ازاں 2007 میں انہوں نے متنازعہ بیان پر اختلافات کے باعث قومی اسمبلی کی رکنیت اور مذہبی امور کی وزارت سے استعفی دے دیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube