Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

وزیراعلیٰ سندھ سیوریج،واٹرلائنز،کچرا اٹھانےکےانچارج بن گئے،مصطفیٰ کمال

SAMAA | - Posted: Jan 6, 2022 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 6, 2022 | Last Updated: 4 months ago

سابق میئر کراچی اور پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے سندھ کے شہری علاقوں کو گروی رکھ دیا ہے، پی پی نے صوبے کو اپنی جاگیر بنا رکھا ہے، وزیراعلیٰ سندھ سیوریج اور واٹرلائنز،کچرا اٹھانے کے انچارج بن چکے ہیں۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں کراچی کے سابق میئر اور پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے پیپلزپارٹی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان پيپلز پارٹي سندھ کو اپنی جاگير بنا رہی ہے اور اسے کوئی روکنے والا نہیں، شہری علاقے گروی رکھ دیئے گئے ہیں، آج کسانوں کے رہنے کی آفیشل سب سے بدترین جگہ سندھ ہے۔

ترقیاتی منصوبوں سے متعلق سابق میئر کا کہنا تھا کہ 13 سال سے سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکمرانی ہے، وفاق سے سندھ کو این ایف سی کی مد میں 10 ہزار 2 سو بیالیس ارب روپے سے زائد رقم ملی، گزشتہ 13 سال میں 10 ہزار 242 ارب کراچی پر خرچ ہوئے، سندھ حکومت کا ریکارڈ کہتا ہے کہ تعلیم پر 2300 ارب خرچ کیے، یہ سارے پیسے اور ان سے کیے گئے کام نظر کیوں نہیں آتے؟۔

اپنے دور کی مثال دیتے ہوئے پی ایس پی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ میں نے 300 ارب روپوں سے اس شہر کراچی کو صرف ساڑھے 4 سالوں میں دنیا کے 12 تیزی سے ترقی کرنے والے شہروں کی فہرست میں شامل کیا، آج کی یہ حکومت کہاں کھڑی ہے اور کیا کر رہی ہے؟، 13 سال سے سندھ میں پیپلزپارٹی حکمران ہے، زرداری صاحب صوبے میں کیا کر رہے ہیں، کوئی پوچھنے والا نہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی حکومت آصف زرداری کی مرہون منت ہے، پیپلز پارٹی اسی لیے وفاقی حکومت کو بلیک میل کر رہی ہے، ملک میں ڈکٹیٹر شپ خالص ہے نہ جمہوریت خالص ہے، پیپلز پارٹی 1971 میں ادھر تم اور ادھر ہم کا نعرہ لگانے والی جماعت تھی، جتنی دیر میں عمران خان کی حکومت ہوش میں آئے گی بہت زیادہ نقصان ہوچکا ہوگا۔

وزیراعلیٰ سندھ پر تنقید کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سیوریج، واٹر لائنز اور کچرا اٹھانے کے انچارج بن گئے ہیں، بلدیاتی قانون میں ترمیم سے تمام اسپتال بلدیاتی حکومت سے چھین لیے، کراچی میں سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کا چیئرمین میئر کو بنا دیا ہے جس کا شور مچا ہوا ہے، کے ڈی اے کو میئر کراچی سے زیادہ اختیارات حاصل ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی سے اسلام آباد آنے کی میری خاص وجہ ہے، میرے پاس ایک دستاویز ہے جس کی تفصیلات بتانے جا رہا ہوں، یہ دستاویز سندھ کے بلدیاتی حکومت کے قوانین سے متعلق ہے، یہ سندھ کا لوکل ایشو نہیں بلکہ پاکستان کی قومی سلامتی اور معیشت کا مسئلہ ہے۔

مصطفیٰ کمال نے مزید کہا کہ سندھ حکومت کو 13 سال میں 10 ہزار 242 ارب روپے وفاق سے ملے، آج سندھ انسانوں کے رہنے کیلئے بدترین جگہ بن چکا ہے، اپنے دور میں کراچی پر 300 ارب روپے خرچ کئے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube