Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

فرانس میں برڈفلو پھیلنے کے بعد 6لاکھ پرندے تلف

SAMAA | - Posted: Dec 31, 2021 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 31, 2021 | Last Updated: 5 months ago

فرانسیسی حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں برڈ فلو وائرس پر قابو پانے کی کوششوں کے دوران گزشتہ ماہ 6 لاکھ سے زائد مرغیوں، بطخوں اور دیگر پرندوں کو تلف کیا گیا۔ یورپ کے کئی ممالک بھی برڈ فلو کی وباء کا سامنا کررہے ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ فرانس پریس (اے ایف پی) کے مطابق حکام کا کہنا ہے کہ 2015ء کے بعد سے ملک میں برڈ فلو کی چوتھی بڑی وباء کا خطرہ ہے، وزارت زراعت نے 26 فیکٹری فارموں میں وائرس کی موجودگی کی اطلاع دی اور جنگلی پرندوں میں بھی برڈ فلو کے 15 کیسز سامنے آئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق وائرس سے پرندوں کی ہلاکت کے صرف ایک سال بعد بھی کئی یورپی ممالک ایک انتہائی متعدی فلو ایچ 5 این 1 کا مقابلہ کررہے ہیں۔ اے ایف پی کے مطابق بیلجیئم اور برطانیہ نے وباء پھیلنے کا اعلان کیا ہے جبکہ چیک ری پبلک سے تعلق رکھنے والے جانوروں کے ڈاکٹروں نے بدھ کو کہا کہ 80 ہزار پرندوں کو ایک ہی فارم میں تلف کیا جائے گا جہاں گزشتہ ہفتے ایک لاکھ سے زائد جانور وائرس سے مرچکے ہیں۔

فرانس میں حکومت نے نومبر میں کاشتکاروں کو حکم دیا تھا کہ وہ ہجرت کرنے والے پرندوں کے ذریعے وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے اپنے پرندوں کو گھر کے اندر رکھیں، حالانکہ پہلا کیس دسمبر کے آخر میں شمال میں پایا گیا تھا۔

مقامی حکام نے بتایا کہ جنوب مغرب میں پہلا کیس، جہاں اب سب سے زیادہ وبا پھیلی ہوئی ہے، 16 دسمبر کو سامنے آیا۔

رپورٹ کے مطابق فرانس میں گزشتہ موسم سرما میں 500 سے زیادہ فارموں میں انفیکشن دیکھنے میں آیا تھا، جس کے باعث تقریباً 35 لاکھ پرندے ہلاک ہوئے، اس وجہ سے حکومت کو بطور معاوضہ لاکھوں یورو ادا کرنے پڑے۔

اس سے قبل 16-2015ء اور 17-2016ء میں بھی پولٹری فارمرز بڑے پیمانے پر برڈ فلو کی وباء کا شکار ہوچکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
Facebook Twitter Youtube