Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

مشتاق احمدکےحوالےسےعلیحدہ رپورٹ آنی تھی مگرنہیں آئی،توقیرضیاء

SAMAA | - Posted: May 9, 2020 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: May 9, 2020 | Last Updated: 2 years ago

پاکستان کرکٹ بورڈکےسابق چیئرمین لیفٹنٹ جنرل ریٹائرڈ توقیرضیاءنے کہا ہے کہ طویل عرصے بعد فکسنگ کے الزامات کو دوبارہ اچھالنا افسوس ناک ہے،لوگوں کی اکثریت نےجسٹس ريٹائرڈ قیوم کمیشن کی رپورٹ کو سمجھا ہی نہیں ہے۔

جمعہ کو پاکستان کرکٹ بورڈکےسابق چیئرمین لیفٹنٹ جنرل ریٹائرڈ توقیرضیاء نے ویڈیو لنک کانفرنس کرتےہوئےکہا کہ جسٹس ريٹائرڈ قیوم رپورٹ میرےچیئرمین کاعہدہ سنبھالنےسےقبل حکومت کےپاس جاچکی تھی،مئی2000 ميں یہ رپورٹ حکومت کی جانب سےبھجوائی گئی اورہم نےاسےپبلک کرديا۔

لوگ میرے نام سے اپنی دکانیں چمکارہے ہیں، وسیم اکرم

توقیرضیاءکا کہنا تھا کہ سلیم ملک فرسٹریشن میں یہ سب کچھ کررہےہیں،انہیں نوکری نہیں چاہئےتوپاکستان کرکٹ بورڈ انہيں اکیڈمی بنانےکی اجازت دے۔

عاقب جاوید کو 'بوٹی بوٹی' کرنے دھمکی کس نے دی

توقيرضياء کا مزید کہنا تھا کہ مشتاق احمد کےحوالےسے الگ ايک رپورٹ دی جانی تھی مگر20 سال بعد بھی وہ رپورٹ نہیں آئی۔

وسیم اکرم نے میرا کیریئر تباہ کردیا، عطا الرحمان

سابق چئیرمین نے واضح کیا کہ وسیم اکرم اورمشتاق احمد کےعلاوہ کسی کو نوکری دینےسےمنع نہیں کیا،رپورٹ میں وقاریونس،انضمام الحق،سعید انوراوراکرم رضاکوصرف ایک ایک لاکھ روپےجرمانہ کیا گیا تھا،اس کےعلاوہ ان کےلیےکچھ نہيں لکھاگیاتھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube