Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

پاکستانی سفارتخانے میں ہتک آمیز رویے کا سامنا کرنا پڑا، عمران طاہر

SAMAA | - Posted: Sep 5, 2017 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: Sep 5, 2017 | Last Updated: 5 years ago

کراچی : پاکستانی نژاد جنوبی افریقی کرکٹر عمران طاہر کو برطانیہ میں پاکستانی سفارتخانے کے عملے کی جانب سے ہتک آمیز رویے کا سامنا کرنا پڑا۔

ورلڈ الیون ٹیم کا حصہ جنوبی افریقی کرکٹر عمران طاہر نے اپنے ٹویٹر پیغام میں بتایا کہ وہ اپنے اہل خانہ کے ساتھ ویزا حاصل کرنے کیلئے برمنگھم میں پاکستانی سفارتخانے گئے جہاں انہیں عملے کی جانب سے ہتک آمیز رویے کا سامنا کرنا پڑا۔

طاہر کا کہنا ہے کہ وہ اور ان کے اہل خانہ ویزا کے حصول کیلئے تقریباً 5 گھنٹے تک انتظار کرتے رہے، جسے انہوں نے تکلیف دہ صدمے سے تعبیر کیا ہے۔

عمران طاہر کہتے ہیں کہ طویل انتظار کے بعد پاکستانی سفارتخانے کے عملے نے انہیں دفتر کا ٹائم ختم ہونے کا کہہ کر باہر نکال دیا تاہم پاکستانی ہائی کمشنر ابن عباس نے انہیں ویزا جاری کروادیا۔

عمران طاہر ورلڈ الیون کا حصہ ہیں جو پاکستان کیخلاف قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے جانے والے آزادی کپ ٹی 20 ٹورنامنٹ میں حصہ لیں گے، ان کے جنوبی افریقی ساتھی فاف ڈوپلیسی ورلڈ الیون کے کپتان ہیں جبکہ دیگر کھلاڑیوں میں ہاشم آملا، مورن مورکل، ڈیوڈ ملر، پال کولنگ ووڈ، ڈیرن سامی، تمیم اقبال، جورج بیلی شامل ہیں۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube