Thursday, May 19, 2022  | 1443  شوّال  17

اسپاٹ فکسنگ : شرجیل کی حمایت میں ایک گواہی آگئی

SAMAA | - Posted: May 29, 2017 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: May 29, 2017 | Last Updated: 5 years ago

لاہور : اسپاٹ فکسنگ کيس ميں نيا موڑ، سابق کرکٹرز صادق محمد اور ڈين جونز کے بعد محمد يوسف نے بھی شرجيل خان کے حق ميںیگواہي دے دی، کہتے ہیں شرجيل نے ميرٹ پر ڈاٹ بالز کھيليں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے (ر) جسٹس اصغر حیدر کی سربراہی میں اسپاٹ فکسنگ میں ملوث 3 کرکٹرز شرجیل خان، شاہ زیب حسن اور خالد لطیف کے کیسوں کی علیحدہ علیحدہ سماعت کی، ٹریبونل کے سامنے تینوں کرکٹرز نے اپنے وکلاء اور ای میل کے ذریعے اپنا مؤقف بیان کیا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی سی بی کے قانونی مشیر تفضل رضوی نے ٹریبونل کی کارروائی کے بارے میں تفصیلات بتائیں، انہوں نے کہا کہ پی سی بی اینٹی کرپشن ٹریبونل کو خالد لطیف کی ای میل ملی، جس میں ان کا کہنا ہے کہ ان کے وکیل ملک سے باہر ہیں اور وہ 14 جون کو واپس آکر کیس کی سماعت میں حصہ لینا چاہتے ہیں، جس پر ٹریبونل خالد لطیف کی درخواست پر آج منگل کو فیصلہ کرے گا، خالد لطیف کیخلاف پی سی بی کے گواہوں کا سلسلہ مکمل ہوگیا۔

شرجیل خان کی طرف سے ٹریبونل کے سامنے سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد یوسف پیش ہوئے، انہوں نے 2 ڈاٹ بالز کے بارے میں اپنی ماہرانہ رائے دی، تاہم اسپاٹ فسکنگ کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اس بارے میں انہیں نہیں پتہ۔

تفضل رضوی نے کہاکہ شرجیل خان کے بارے میں صرف 2 ڈاٹ بالز کا معاملہ ہی نہیں بلکہ اور معاملات بھی ہیں جو ٹریبونل کو بتادیئے گئے ہیں، شرجیل خان کے کیس کی سماعت اب 2 جون کو ہوگی۔

انہوں نے بتایا کہ شاہ زیب حسن نے ٹریبونل کو ای میل بھیجی کہ وہ انگلینڈ جانا چاہتے ہیں، ان کا نام ای سی ایل میں ہے جس پر ٹریبونل نے کہا کہ ای سی ایل میں نام شامل کرنے میں ٹریبونل کا کوئی کردار نہیں، وہ متعلقہ حکام سے رابطہ کریں۔ سماء / اے پی پی

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube