Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  15

کراچی یونیورسٹی:خاتون خودکش حملہ آور کی ایک اور ویڈیو سامنے آگئی

SAMAA | - Posted: May 11, 2022 | Last Updated: 6 days ago
Posted: May 11, 2022 | Last Updated: 6 days ago

کراچی یونی ورسٹی میں اپریل 26 کو خود کش حملہ کرنے والی خاتون حملہ آور کی ایک اور ویڈیو منظر عام پر آگئی ہے۔

دھماکےسے قبل خودکش خاتون نے آخری مرتبہ شارع فیصل کے ہوٹل میں شوہر سے ملاقات کی۔ ویڈیو میں خودکش بمبار خاتون کو دو بچوں کے ہمراہ دیکھا جاسکتا ہے۔ خاتون نے اپنے کاندھے پر کالے رنگ کا بیگ بھی لٹکا رکھا تھا۔

ذرائع کے مطابق یونیورسٹی دھماکے کے دوران اسی بیگ کو استعمال کیا گیا تھا۔ خاتون بچوں کو شوہر کے حوالے کرنے آئی تھی۔

واضح رہے کہ کراچی یونیورسٹی کے ترجمان ذیشان عظمت کے مطابق انسٹی ٹیوٹ آف کنفیوشس اسٹڈیز کے باہر چینی بانشدوں کی وین پر خود کش حملے میں 3 چینی باشندے سمیت 4 افراد جاں بحق ہوئے تھے۔ حملے میں جاں بحق ہونے والا وین ڈرائیور پاکستانی تھا۔ مرنے والوں میں انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر ہوانگ گوئی پنگ، فیکلٹی کی دو خواتین ممبران چین سائی، ڈنگ موپینگ اور ڈرائیور خالد شامل ہیں۔

وین میں آگ لگنے کے باعث غیر ملکی فیکلٹی ممبران اور ان کے ڈرائیور کی لاشیں مکمل طور پر جل گئی تھیں، جنہیں پوسٹ مارٹم کیلئے عباسی شہید اسپتال منتقل کردیا گیا تاہم عباسی شہید اسپتال میں تسلی بخش سہولیات کی عدم دستیابی کے باعث لاشوں کو جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر (جے پی ایم سی) لایا گیا۔ جے پی ایم سی کی ایڈیشنل پولیس سرجن (اے پی ایس) ڈاکٹر سمیعہ طارق سید نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ چار جلی ہوئی لاشیں اور مشتبہ خودکش حملہ آور کے جسم کے کچھ اعضاء یہاں لائے گئے تھے۔

عمر خطاب

محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کے سربراہ راجا عمر خطاب نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ خود کش حملہ تھا، جس میں دو خواتین سمیت تین غیرملکی اور ایک پاکستانی شہری جاں بحق ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حملہ ایک خاتون نے کیا اور ایک علیحدگی پسند تنظیم کی اس کی ذمہ داری بھی قبول کرلی ہے، باقاعدہ ریکی کے بعد اس جگہ پر نشانہ بنایا گیا ہے۔

شہباز شریف

حملے کی شام وزیر اعظم شہباز شریف نے اسلام آباد میں چینی سفارت خانے کا دورہ کیا اور سفارت خانے کے چینی حکام سے تعزیت کا اظہار کیا۔ اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان اس واقعے کی جامع تحقیقات کرائے گی، مجرموں کو مثالی سزا دی جائے گی اور پاکستان میں چینی اہلکاروں، منصوبوں اور اداروں کی حفاظت کو مضبوط بنایا جائے گا۔ ترجمان نے وزیر اعظم شہبازشریف کے حوالے سے کہا کہ حکومت پاکستان کبھی بھی کسی طاقت کو پاک چین دوستی کو کمزور کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔

تحقیقاتی کمیٹی

خودکش دھماکے کی تحقیقات کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جس کا باقاعدہ نوٹیفیکیشن بھی جاری کیا گیا۔ نوٹیفکیشن کے مطابق ڈی آئی جی پی سی آئی اے تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ہیں، ایس ایس پی ایسٹ، ایس ایس پی ملیر اور ایس ایس پی اینٹی وائلنٹ اینڈ سیل بھی ٹیم میں شامل ہیں۔ ٹیم تحقیقات مکمل کر کے حکام بالا کو آگاہ کرے گی، کیس پر سی ٹی ڈی اور رینجرز کی ٹیمیں بھی کام کر رہی ہے۔

مقدمہ درج

کراچی یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹیٹیوٹ کے باہر ہونے والے خودکش دھماکے کا مقدمہ کاونٹر ٹیرارزم ڈپارٹمنٹ(سی ٹی ڈی) میں درج کیا گیا۔ درج کیے گئے مقدمے میں قتل، اقدام قتل، دہشت گردی اور ایکسپلوسو ایکٹ کی دفعات شامل کی گئیں ہیں۔ درج کی گئی ایف آئی آر کے مطابق دھماکے کی ذمہ داری کالعدم دہشت گرد تنظیم بی ایل اے نے قبول کی، دھماکے کی ذمہ داری قبول کرنے سے متعلق بیان سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر جاری کیا گیا۔

خود کش حملہ آور کی کراچی میں رہائش گاہ

حملے کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کراچی کے علاقے اسکیم 33 میں خود کش بمبار کے والد کے گھر پر چھاپہ مار کر لیپ ٹاپ اور دیگر دستاویزات قبضے میں لے کر مکان سیل کردیا تھا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ گھر سے سرکاری نمبر پلیٹ کی گاڑی میں آمدورفت ہوتی رہی، حملہ آور خاتون کے گلستان جوہر بلاک 13 میں واقع فلیٹ کی بھی تلاشی لی گئی اور فلیٹ کو سیل کیا گیا۔

خاتون تین سال سے کرائے کے فلیٹ میں رہ رہی تھی، فلیٹ مالک سے بھی تفتیش کی گئی، جب کہ دھماکے کے سہولت کار مشتبہ شخص کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

کراچی کے دورے پر آئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے خاتون خودکش بمبار کے شوہر کی گرفتاری کی تصدیق یا تردید سے گریز کیا تاہم خاتون کو لانے والا رکشا ڈرائیور کی گرفتاری کی تصدیق کی تھی۔ خاتون کا شوہر جناح اسپتال کے قریب ہوٹل میں مقیم تھا، جو دھماکے سے پہلے ہی بچوں سمیت غائب ہوگیا تھا۔

خود کش بمبار کے چھ بہن بھائی ہیں، خود کش بمبار خاتون اعلیٰ تعلیم یافتہ ہے جب کہ خودکش بمبار کی بہن بھی پی ایچ ڈی ڈاکٹر ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube