Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  16

خیبرپختونخوامیں بلدیاتی انتخابات31مارچ کوہی ہونگے،الیکشن کمیشن کافیصلہ

SAMAA | - Posted: Feb 15, 2022 | Last Updated: 3 months ago
Posted: Feb 15, 2022 | Last Updated: 3 months ago

الیکشن کمیشن نے فیصلہ سناتے ہوئے بتایا ہے کہ خیبرپختونخوا میں دوسرے مرحلے کے بلدیاتی انتخابات 31 مارچ 2022 کو ہی ہونگے۔

منگل کو الیکشن کمیشن نے فیصلے سنایا ہے کہ خیبرپختونخوا میں مقامی حکومتوں کے انتخابات کا دوسرا مرحلہ 31 مارچ کو ہوگا۔

الیکشن کمیشن نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔چیف الیکشن کمشنر نے خیبرپختونخوا حکومت کے موسم کی خرابی کا استدلال رد کردیا تھا۔فدا خان سمیت 5 درخواست گزاروں نے خیبرپختونخوا کے بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے کو مؤخر کرنے کی درخواست دائر کی تھی۔

درخواست گزار کے وکیل نے موقف اپنایا تھا کہ مارچ کےآخر میں بارشوں اور برفباری کی پیشگوئی ہے، پہاڑی علاقوں میں لینڈسلائڈنگ کا بھی خطرہ ہے۔

چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا تھا کہ محکمہ موسمیات یہ رائے کیسے دے سکتا ہے کہ الیکشن ممکن ہیں یا نہیں؟۔ ایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا شمائل بٹ نے کہا کہ مری میں لوگ گاڑیوں میں ٹھٹھر کر مر گئےتھے۔ اس پرچیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے تھے کہ سانحہ مری حکومت اور انتظامیہ کی ناکامی تھی ، یہ کوئی دلیل نہیں ہے کہ الیکشن موخر کر دیئے جائیں۔

ایڈووکیٹ جنرل نے نکتہ اٹھایا تھا کہ 15 مارچ تک بلدیاتی الیکشن کےدوسرے مرحلے والے 18 میں سے 15 اضلاع میں درجہ حرارت منفی ہوگا۔ اس پر چیف الیکشن کمشنر نےکہا تھا کہ گلگلت بلتستان میں برف سے ڈھکے میدانوں میں جلسے ہوتےرہے ہیں،جمہوریت کی مضبوطی کیلئے بلدیاتی الیکشن بہت ضروری ہیں۔

پشاورہائیکورٹ کا فیصلہ

پشاورہائیکورٹ کے فیصلے کے مطابق صوبے میں دوسرے مرحلے کے بلدیاتی انتخابات برف باری سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے، جس سے صاف اور شفاف انتخابات ممکن نہیں ہوسکتے۔ عدالت نے الیکشن کمیشن کو رمضان کے بعد برفانی علاقوں میں الیکشن منعقد کرانے کی ہدایت کی تھی۔

پشاور ہائی کورٹ ایبٹ آباد بینچ میں رٹ پٹیشن دائر کی گئی تھی کہ برف باری اور دیگر مسائل کے باعث ہزارہ ڈویژن میں انتخابات ممکن نہیں۔

جن 5 اضلاع کے علاقوں میں انتخابات ملتوی کرنے کی درخواست کی گئی ان میں ضلع ایبٹ آباد، مانسہرہ، بٹگرام، تورغر، اپر اور لوئر کوہستان، کولائی پلاس کوہستان، سوات، مالاکنڈ، شانگلہ، لوئر دیر، اپر دیر، چترال، اپر اور لوئر کرم، اورکزئی، شمالی وزیرستان اور جنوبی وزیرستان شامل ہیں۔

ضلع کوہستان سے تعلق رکھنے والے دو شہریوں ملک اورنگزیب اور محمد اقبال نے خیبرپختونخوا بلدیاتی انتخابات سے متعلق درخواست دائر کی تھی۔

واضح رہے کہ 19 دسمبر کو پہلے مرحلے میں خیبرپختونخوا کے17 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کا انعقاد کیا گیا تھا جس میں حکمران جماعت تحریک انصاف کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube