Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

چیئرمین نیب سے متعلق آرڈیننس کل آئے گا، فواد چوہدری

SAMAA | - Posted: Oct 5, 2021 | Last Updated: 7 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 5, 2021 | Last Updated: 7 months ago

وفاقی وزیراطلاعات فوادچوہدری کا کہنا ہے کہ چیئرمین نیب سے متعلق آرڈیننس بدھ کو آئے گا جس کا مقصد قانون میں موجود خلاء کو پر کرنا ہے۔

اسلام آباد میں وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ اگلے چیئرمین نیب کے لیے شہازشریف سے بات نہیں کریں گے اپوزیشن کو اپنا لیڈر بدلنا چاہیے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اچھا ہوتا جو ہم چیئرمین نیب کی تقرری کے لیے ایسے آدمی سے مشاورت کرتے جس پر منی لانڈرنگ کا الزام نہ ہو مگر اپوزیشن کے پاس ایسا کوئی بندہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ قوانین شخصیت کے لیے نہیں اداروں کیلئے بننے چاہئیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ موجودہ چیئرمین نیب کی تقرری موجودہ حکومت نے نہیں کی۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کا رویہ سمجھ سے بالاتر ہے اگر ان کو ہماری اصلاحات سمجھ نہیں آرہیں تو اپنی تجاویز دیں لیکن وہ بھی نہیں کیا جارہا، اپوزیشن کو سنجیدگی سے پارلیمنٹ میں اپنا رول ادا کرنا چاہیے۔

وفاقی وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ پنڈورا پیپرزکے معاملے پر کابینہ کو بریفنگ دی گئی اور وزيراعظم انسکيشن کميشن کے تحت سيل بنايا گيا ہے جو پنڈورا پیپر میں آئے 700 پاکستانیوں کے ناموں کی تحقیقات کریں گا۔

انہوں نے کہا کہ پنڈورا پیپر سے متعلق کمیشن پہلے مرحلے میں یہ جائزہ لے گا کہ کس کی آف شور کمپنی قانونی ہے اور کس کے نہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ملک میں پہلی بار مردم شماری میں جدید ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی جبکہ عیدمیلادالنبیﷺ پرمختلف کیٹیگری کے قیدیوں کی سزاؤں میں کمی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ايم ڈی کيٹ کا فارمولا پوری دنيا ميں چل رہا ہے يہ احتجاج کرنا کہ فٹنس چيک نہ ہو اور ڈاکٹربن جائيں عجيب مطالبہ ہے ہم صحت کے معاملے میں کوئی خطرہ مول نہیں لیں گے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ کچھ ممالک نے ہمارے ڈاکٹرز کی ڈگرياں ماننے سے انکار کرديا تھا اس لیے عالمی معیار کو یقینی بنانے کے لیے میڈیکل ٹیسٹ کا نیا نظام متعارف کرایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت گیس کاعالمی بحران چل رہا ہے پاکستان ميں بجلی وافر مقدار ميں ہے اس لیے جو صارفین گيس ہيٹرز کے بجائے بجلی پرشفٹ ہوں گے انہيں فی يونٹ 7 روپے تک ريليف ملے گا۔

 دوسری جانب وفاقی کابینہ نے آئندہ انتخابات نئی مردم شماری کے تحت کرانے کا فیصلہ کرلیا، مردم شماری کے طریقۂ کار میں شامل بعض تجاویز کی متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے مخالفت کردی۔ ارکان نے مطالبہ کیا کہ مردم شماری کیلئے ڈی فیکٹو طریقۂ کار اپنایا جائے۔

سوشل میڈیا پر جاری اپنے بیان میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے جدید ڈیجیٹل ٹیکنالوجی اور عالمی سطح پر بہترین طریقوں کے مطابق مردم شماری کی منظوری دیدی، اب یہ تجویز مشترکہ مفادات کونسل کو بھیجی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ  میں پہلی مرتبہ ہوگا کہ مردم شماری 5 سال کے وقفے سے کرائے جائے گی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube