Thursday, May 19, 2022  | 1443  شوّال  17

اسلام آباد: نیب نے خواجہ آصف کو گرفتار کرلیا

SAMAA | - Posted: Dec 29, 2020 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Dec 29, 2020 | Last Updated: 1 year ago

سابق وزیر دفاع خواجہ آصف کو نیب نے آمدن سے زائد اثاثوں کے کیسز میں گرفتار کرلیا گیا۔ مسلم لیگ نے سینئر رہنماء کی گرفتاری کی تصدیق کردی۔

نمائندہ سماء کے مطابق نیب اسلام آباد نے سابق وفاقی وزیر خواجہ آصف کو گرفتار کیا تاہم فی الحال اس حوالے سے کوئی باضابطہ اعلامیہ جاری نہیں کیا گیا تاہم نیب ترجمان نے گرفتاری کی تصدیق کردی۔

مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء اور سابق وزیر دفاع خواجہ آصف کو عام انتخابات سے قبل اسلام آباد ہائیکورٹ نے غیر ملکی اقامہ رکھنے پر انہیں نااہل قرار دیا تھا تاہم سپریم کورٹ نے فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے انہیں انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دیدی تھی۔

نیب حکام کے مطابق خواجہ آصف کیخلاف مجموعی اثاثوں کی چھان بین جاری تھی، ان کے اثاثے معلوم ذرائع آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے تھے، چیئرمین نیب نے اس حوالے سے تحقیقات کا حکم دے رکھا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: خواجہ آصف کی گرفتاری پر نوازشریف کا ردعمل

حکام کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن کے رہنماء خواجہ آصف کو دو بار طلب کیا گیا تھا تاہم وہ نیب کو ذرائع آمدن سے متعلق ممطئن نہیں کرسکے تھے، مزید تحقیقات کیلئے ان کے وارنٹ گرفتاری جاری ہوئے جس کے نتیجے میں انہیں گرفتار کرلیا گیا۔

مسلم لیگ ن نے بھی سابق وفاقی وزیر اور سینئر رہنماء خواجہ محمد آصف کی گرفتاری کی تصدیق کردی۔

ںیب لاہور کے مطابق خواجہ آصف کی گرفتاری کے وارنٹ چیئرمین نیب نے جاری کئے، ان کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات جاری ہیں، ملزم کو کل راہداری ریمانڈ کیلئے اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

نیب کا مزید کہنا ہے کہ ن لیگی رہنماء نے آمدن سے زائد اثاثہ جات بنائے، اثاثوں کی نوعیت، ذرائع اور منتقلی کو بھی چھپایا، خواجہ آصف نے 1991ء میں بطور سینیٹر عہدہ سنبھالا، بعد ازاں مختلف ادوار میں وفاقی وزیر اور رکن قومی اسمبلی بھی رہے، 1991ء میں خواجہ آصف کے مجموعی اثاثے 51 لاکھ روپے پر مشتمل تھے، 2018ء تک مختلف عہدوں پر رہنے کے بعد ان کے اثاثہ جات 221 ملین (22 کروڑ 10 لاکھ روپے) تک پہنچ گئے۔

مزید جانیے: خواجہ آصف کو ’کسی‘ نے بلاکر دھمکی دی تھی،مریم نواز

نیب لاہور کے مطابق خواجہ آصف کے اثاثے ان کی ظاہری آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے، ملزم نے يو اے ای کی ايک فرم ميں ملازمت سے 13 کروڑ حاصل کرنے کا دعویٰ کیا، دوران تفتیش وہ بطور تنخواہ اس رقم کا کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہ کرسکے، ملزم کی بیرون ملک ملازمت کا معاملہ عدالتوں میں بھی زیرسماعت رہا، صاف ظاہر ہوتا ہے ملزم نے جعلی ذرائع آمدن سے حاصل رقم کو ثابت کرنا چاہا۔

قومی احتساب بیورو کا کہنا ہے کہ خواجہ آصف ملازم کے نام پر بے نامی کمپنی “طارق میر اینڈ کمپنی” چلا رہے ہیں، بے نامی کمپنی کے اکاؤنٹ میں 40 کروڑ کی خطیر رقم جمع کروائی گئی، انکوائری میں ظاہر ہوا مبینہ بیرون ملک ملازمت کے دوران خواجہ آصف ملک میں تھے، بیرون ملک ملازمت کے کاغذات جعلی ذرائع آمدن بتانے کیلئے ظاہر کئے گئے، وہ بیرون ملک ملازمت سے حاصل آمدن کا ثبوت بھی فراہم نہیں کرسکے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube