Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  16

راولپنڈی: ڈاکٹرز سمیت عملے کے 188افراد کرونا میں مبتلا

SAMAA | - Posted: Dec 29, 2020 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Dec 29, 2020 | Last Updated: 1 year ago
[caption id="attachment_2141774" align="alignnone" width="800"] فوٹو؛ آن لائن[/caption]

راولپنڈی کے تین بڑے سرکاری اسپتالوں میں ڈاکٹرز سمیت عملے کے 188 افراد کرونا وائرس کا شکار ہیں۔

ڈاکٹروں اور اسپتالوں کے عملے نے حکومت سے او پی ڈی بند کرنے اور سہولیات فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ اسپتالوں میں ابھی تک کوئی سہولیات نہیں، ٹیسٹ مثبت آئے تو گھر میں قرنطینہ ہونا پڑتا ہے اور گھر میں ٹریٹمنٹ لیتے ہیں۔ ٹیسٹ دوبارہ پازیٹو آئے یا نیگٹو یہ سلسلہ چلتا رہتا ہے۔

ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ او پی ڈی کو بند کیا جائے۔ ٹیلی میڈیسن کے ذریعے بھی علاج کر سکتے ہیں۔ ایمرجنسی صورتحال ہو تو اسپتال آئیں ہم بیٹھے ہیں علاج کیلئے۔

ڈاکٹروں کے مطالبات سامنے آنے کے بعد ضلعی انتظامیہ بھی دیگر آپشنز پر غور کرنے لگی ہے۔

کمشنر محمد محمود کہتے ہیں کہ اگر او پی ڈی بند کر دی جائے تو جو کیسز آتے ہیں آن کا کیا ہوگا۔ اس کا بہتر متبادل یہی ہے کہ کرونا کے مریضوں کے علاج کیلئے الگ مکمل انتظام کیا جائے جیسے ہم نے آر آئی یو میں کیا ہے۔

ڈاکٹروں نے عوام سے بھی اپیل کہ ہے کہ اسپتال آتے وقت ماسک کا استعمال یقینی بنائیں اور ایس او پیز پر مکمل عملدرآمد کرکے اپنی اور ان کی زندگی محفوظ بنائیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube