Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

کراچی:چيف جسٹس کاگزری روڈسےغيرقانونی عمارتیں فوری گرانےکاحکم

SAMAA | - Posted: Feb 7, 2020 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 7, 2020 | Last Updated: 2 years ago

سپريم کورٹ کراچی رجسٹری ميں تجاوزات کے خلاف کيس کی سماعت جاری ہے۔ چيف جسٹس نے گزری روڈ اور اطراف سے غير قانونی عمارتیں فوری گرانے کا حکم دے ديا۔ عدالت نےغیر قانونی ملٹی اسٹوریز بلڈنگز گرا کر کالونی کو اصل شکل میں بحال کرنے کا بھی حکم دے ديا ہے۔

جمعہ کو کراچی سپريم کورٹ ميں تجاوزات کيخلاف کيس کی سماعت کے دوسرے روز سرکاری کوارٹرز میں قائم تمام غیرقانونی تعمیرات فوری گرانے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے ریمارکس دئیے کہ کوارٹرز کی جگہ خالی کرا کر وفاقی حکومت کے ملازمین کو دی جائے، سارے کھلے میدان تک ختم کردیئے،علاقے ميں پورشنز کی بھرمار ہے۔

عدالت نے گزری روڈ اور اطراف سے غير قانونی عمارتیں فوری گرانے کا حکم دیا۔ عدالت نےغیرقانونی ملٹی اسٹوریز بلڈنگز گر ا کر کالونی کو اصل شکل میں بحال کرنے کاحکم بھی دیا۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ پنجاب کالونی، نیلم اوردہلی کالونی میں تجاوزات کے خاتمے کیلئے کیا کیا؟ کنٹونمنٹ بورڈ کے وکیل نے بتایا کہ ہم تجاوزات کے خاتمے کیلئے اقدامات کررہے ہيں۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اٹارنی جنرل صاحب، آپ بتائیں یہ وفاق کے زیرانتظام علاقہ ہے،

کون پی اینڈ ٹی کالونی اور نیلم کالونی میں غیرقانونی تعمیرات کررہا ہے؟ یہ سرکاری زمین ہے کون قبضہ کررہا ہے؟ کھلے میدان تک ختم کردیئے، ہر جگہ قبضہ ہے،ہم کچھ نہیں جانتے غیرقانونی تعمیرات فوری گرائیں، زمین وفاق کے زیر انتظام ہے اس لئے وفاقی حکومت کارروائی کرے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز چیف جسٹس پاکستان نے سندھ حکومت کو سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے ڈی جی کو فوری طور پر ہٹانے اور شہر میں تمام غیر قانونی عمارتوں کو گرانے کا حکم دیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube