Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

پولیس اہلکار کی ویڈیو بنانے پر فکس اٹ کارکن کیخلاف ایف آئی اے میں درخواست

SAMAA | - Posted: Jul 2, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Jul 2, 2019 | Last Updated: 3 years ago

پشاور کے فکس اٹ کے کارکن کو ٹریفک پولیس کی ویڈیو بنانا مہنگا پڑ گیا۔ پولیس اہلکار نے ملزم عدنان خلاف ایف آئی اے سائبر کرائم جانے کا فیصلہ کر لیا۔

گزشتہ روز سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوگئی تھی جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ٹریفک اہلکار بخت بلند ایک دکان میں بیٹھا آئس کریم کھا رہا ہے۔ اس دوران ایک شخص آیا اور اہلکار سے کہا کہ قلفی کے پیسے ادا کرو۔

اہلکار نے اس سے کہا کہ میں ابھی دکان کے اندر بیٹھا آئس کریم کھا رہا ہوں۔ جاتے ہوئے آپ کے سامنے پیسے دے دوں گا مگر اس شخص نے تکرار شروع کردی اور کہا کہ آپ ہمارے ٹیکس سے تنخواہ لیتے ہیں اور ہم پر ہی بدمعاشی کرتے ہیں۔

ٹریفک اہلکار نے اسے کہا کہ بدمعاشی نہیں کرتے مگر ویڈیو بنانے والے مسلسل اس کو غنڈہ کہتا رہا۔ ملزم کی شناخت عدنان کے نام سے ہوئی اور اس نے اپنی شناخت فکس اٹ کے کارکن کے طور پر کرائی۔

ملزم نے بعد ازاں وہ ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کردی جس پر عوام نے فکس اٹ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اسے ’غنڈہ‘ گردی قرار دیا اور پولیس اہلکار کے ’عزت نفس مجروح‘ کرنے پر عدنان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔ عوامی ردعمل کے باعث ملزم نے ویڈیو اپنے پیج سے ڈیلیٹ کردی۔

دوسری جانب ٹریفک اہلکار کا کہنا ہے کہ وہ ملزم کے خلاف سائبر کرائم ایکٹ کے تحت ایف آئی اے میں مقدمہ درج کرائیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube