Wednesday, May 18, 2022  | 1443  شوّال  16

احتجاج کرنے والے بے روزگار ڈاکٹرز پر کوئٹہ پولیس کا تشدد

SAMAA | - Posted: May 3, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: May 3, 2019 | Last Updated: 3 years ago
[caption id="attachment_1088482" align="aligncenter" width="680"] ????????????????????????????[/caption]

بلوچستان ویٹرنری ڈاکٹرز ایسوسی ایشن  نے بے روزگاری کے خلاف بلوچستان اسمبلی کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور اپنی تعلیمی اسناد بھی جلا ڈالیں، پولیس نے سڑک بلاک کرنے کے الزام میں 50 سے زائد ڈاکٹروں کو گرفتار کرلیا۔

بلوچستان ویٹرنری ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے مطالبات کے حق میں بلوچستان اسمبلی کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔

مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ صوبے میں 16 سو سے زائد ویٹرنری ڈاکٹرز بے روزگار ہیں جبکہ اس وقت صوبے میں 500 سے زائد آسامیاں خالی ہونے کے باوجود ان پر بے روزگارویٹرنری ڈاکٹروں کوتعینات نہیں کیا جارہا۔

مظاہرین نے اپنے مطالبات کے حق میں نعرے بازی کی اور روزگار نہ ملنے پر اپنی تعلیمی اسناد نذرآتش کردیں۔

دریں اثنا مظاہرین نے زرغون روڈ بلاک کرنے کی کوشش کی تو پولیس نے 50 مظاہرین کو حراست میں لیکر تھانے منتقل کر دیا۔

ڈاکٹرروں کی گرفتاری کے خلاف بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں حزب اختلاف نے احتجاج کیا اور تمام ویٹرنری ڈاکٹروں کی رہائی کا مطالبہ کیا جس پر اسپیکر نے رولنگ دی کہ تمام ویٹرنری ڈاکٹروں کو رہا کیا جائے۔​

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube