Thursday, May 19, 2022  | 1443  شوّال  17

لاہور میں ٹریفک کے ای چالان کا نظام متنازع ہوگیا ہے

SAMAA | - Posted: Mar 13, 2019 | Last Updated: 3 years ago
Posted: Mar 13, 2019 | Last Updated: 3 years ago

لاہور ميں ٹريفک قوانين کي خلاف ورزي پر اي چالان بھجوايا جاتا ہے۔ قانون ميں ترميم کے بغير ہي يہ سسٹم نافذ کيا گيا ہے اور کچھ ماہرين اي چالاننگ پراعتراض اٹھا رہے ہيں ۔یہ مسئلہ ہائي کورٹ ميں بھي چيلنج کرديا گيا ہے۔

لاہور میں کروڑوں روپے خرچ کرکے چالان کے روایتی طریقہ کار کو ای چالاننگ میں تبدیل تو کردیا گیا  لیکن قانونی ضروریات پوري نہ کيے جانے کے باعث اس سسٹم پر سوالات اٹھ رہے ہیں ۔

قانون پر پابندي کے لئے قانون کي خلاف ورزي کی جارہی ہے۔ ٹريفک قوانين کي خلاف ورزي پر موٹروہيکل آرڈيننس کے تحت چالان کيا جاتا ہے  مگر حکومت نے اس قانون ميں ترميم کئے بغير ہي کيمروں کے ذريعے چالان گھر بھجوانا شروع کردئيے ۔

درخواست گزار حمزہ بٹ ايڈووکيٹ  نے بتایا کہ قانون ميں صرف اسي کے چالان کا ذکر ہے جو ڈرائيونگ کررہا ہے ليکن اس ميں تو جس کے نام گاڑي ہوتي ہے خواہ وہ ڈرائيو نہ بھي کررہا ہے، چالان اسي کے نام آتا ہے۔

سيف سٹي اتھارٹي کے حکام کے مطابق  اي چالان کا آغاز لاہورہائي کورٹ کے حکم پرکيا گيا تھا ۔

پروجیکٹ ڈائریکٹر کے مطابق سيف سٹي کے کيمروں کي مدد سے اب تک 9 لاکھ چالان جاري ہوچکے ہيں۔ عدالت نے قانون ميں ترميم کے بغير چالان کرنے پر حکام سے جواب بھي طلب کررکھا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube