Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  15

مقبوضہ کشمير ميں دھماکا، 40 بھارتی سیکیورٹی اہلکار ہلاک، درجنوں زخمی

SAMAA | - Posted: Feb 14, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 14, 2019 | Last Updated: 3 years ago
[caption id="attachment_1449702" align="alignnone" width="600"] Photo ANI[/caption]

مقبوضہ کشمیر کے علاقے پلوامہ میں کار بم دھماکے میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس کے 40 سیکیورٹی اہلکار ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ضلع پلوامہ کے علاقے آونتی پورہ میں سڑک کنارے کھڑی کار کے ذریعے دھماکا کیا گیا، جس میں بھارتی فورس (سی آر پی ایف) کے قافلے کو  نشانہ بنایا گیا، واقعے میں کئی گاڑیوں کو شدید نقصان پہنچا جبکہ 40 سیکیورٹی اہلکار ہلاک اور درجنوں  زخمی ہوگئے۔

رپورٹ کے مطابق دھماکے کے 10 سے زائد زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے اور ہلاکتوں میں مزید اضافے کا بھی خدشہ ہے، مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ 30 سال میں یہ سب سے بڑا حملہ ہے جس میں سیکیورٹی اہلکاروں کی اتنی بڑی تعداد میں ہلاکتیں ہوئیں۔

بھارتی حکام کے مطابق حملہ خودکش تھا جو بارود سے بھری کار کے ذریعے کیا گیا جبکہ سیکیورٹی فورسز کی گاڑیوں پر گولیوں کے بھی نشانات ہیں، جس سے لگتا ہے کہ علاقے میں مزید حملہ آور بھی موجود تھے۔

بھارتی نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق کار بم دھماکا اس وقت کیا گیا جب سی آر پی ایف کی 78 بسوں کا قافلہ سری نگر جموں ہائی وے گوری پورہ سے گزر رہا تھا، ان بسوں میں تقریباً 2500 جوان سوار تھے۔

اس سے قبل ستمبر 2016ء میں اڑی کے آرمی ہیڈ کوارٹر پر حملے کو کشمیر کی تاریخ کا سب سے بڑا حملہ سمجھا جاتا تھا جس میں 19 بھارتی فوجی ہلاک ہوئے تھے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ حملے کے بعد سرینگر ہائی وے کو سیل کردیا گیا، فورسز کے جوانوں کی بھاری نفری علاقے میں پہنچ گئی، پولیس نے تصدیق کی ہے کہ دھماکا بارود سے بھری گاڑی کے ذریعے کیا گیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube