Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے خاتون ڈاکٹر جاں بحق، چیف جسٹس کا تحقیقات کا حکم

SAMAA | - Posted: Sep 8, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Sep 8, 2018 | Last Updated: 4 years ago

ڈاکٹروں کی مبينہ غفلت سے خاتون ڈاکٹر کی جان چلی گئی، لاہور کے نجی اسپتال کی شکايت کرتے ہوئے لڑکی کا والد چيف جسٹس کے سامنے زارو قطار رو پڑا، چيف جسٹس نے ريمارکس دئيے کہ نجی اسپتالوں کو کھلی چھوٹ نہيں دی جاسکتی، معاملے کی تحقيقات کرائی جائيں۔

لاہور میں بچے کی پيدائش کیلئے ڈاکٹر ثناء کو نجی اسپتال لايا گيا، مگر ڈاکٹروں کی مبينہ غفلت سے وہ موت کے منہ ميں چلی گئی، واقعہ 14 اگست کو پیش آیا تھا، بدقسمت باپ اپنی فرياد ليکر 25 اگست کو سپريم کورٹ پہنچا مگر چيف جسٹس پاکستان سے ملاقات نہ ہوسکی۔

میاں مجاہد کا کہنا ہے کہ میری بیٹی ڈاکٹر ثناء کو نارمل ڈیلیوری کیلئے 20 گھنٹے تک لیبر روم میں رکھا گیا، پھر اس  ے بعد میت ہمارے حوالے کردی گئی۔

معاملہ چيف جسٹس کے نوٹس ميں آيا تو انہوں نے فوری طور پر پنجاب کی وزير صحت کو طلب کرليا اور تحقيقاتی ٹيم تشکيل دينے کا حکم دے ديا۔ سپريم کورٹ سے تحقيقات کا حکم جاری ہونے پر لڑکی کے باپ نے اطمينان کا اظہار کيا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube